پاک فوج نے ایک آپریشن میں 4 مغوی ایرانی فوجیوں کو بازیاب کرالیا     No IMG     دنیا بھر میں آج ہندو برادری اپنا مذہبی تہوار ہولی منا رہی ہے     No IMG     افغانستان کے صوبے ہرات میں سیلاب سے 13 افراد کے جاں بحق ہونے سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 63 ہوگئی     No IMG     لیبیا میں پناہ گزینوں کو لے جانے والی کشتی ڈوب گئی جس کے نتیجے میں 9 افراد ہلاک     No IMG     اسرائیلی دہشت گردی، غرب اردن میں مزید3 فلسطینیوں کو شہید کردیا     No IMG     پیپلز پارٹی کےچیئرمین نے 3 وفاقی وزرا کو فارغ کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     وزیراعظم عمران خان کی ہولی کے تہوار پر ہندو برادی کو مبارک باد     No IMG     سابق وزیراعظم نوازشریف نے ای سی ایل سے نام نکالنے کی درخواست دائر کردی     No IMG     سمجھوتہ ایکسپریس کیس کا فیصلہ 12 سال بعد بھی تاخیر کا شکار     No IMG     وزیر اعظم آئین کے آرٹیکل 214 کی شق دو اے پر عمل کرنے میں ناکام     No IMG     روس کے وزیر دفاع سرگئی شویگو نے شام کے صدر بشار اسد سے ملاقات     No IMG     بھارت اور پاکستان متنازع معاملات مذاکرات کے مذاکرات کے ذریعے حل کریں,چین     No IMG     بریگزیٹ پرٹریزامے کی حکمت عملی انتہائی کمزورہے، ٹرمپ     No IMG     امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو کی کویت کے بادشاہ سے ملاقات     No IMG     نیوزی لینڈ میں جمعہ کو سرکاری ریڈیو اور ٹی وی سے براہ راست اذان نشر ہوگی,جیسنڈا آرڈرن     No IMG    

اسلام آباد,تینوں صدارتی امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور
تاریخ :   29-08-2018

اسلام آباد( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) پاکستان میں چار ستمبر کو ہونے والے صدارتی انتخاب کے لیےپاکستان پیپلز پارٹی کے اعتزاز احسن، جمعیت علمائے اسلام (ف) کے مولانا فضل الرحمان اور پاکستان تحریک انصاف کے ڈاکٹر عارف علوی کے کع کرائے گئے تھے۔چیف الیکشن کمشنر سردار محمد رضا نے تینوں

 

امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کرلئے ہیں۔کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے وقت اعتزاز احسن اور عارف علوی الیکشن کمیشن میں موجود تھے۔ تاہم، مولانا فضل الرحمان خود نہ آئے اور جے یو آئی (ف) اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما اس موقع پر موجود تھے۔عارف علوی کے کاغذات نامزدگی پر مولانا فضل الرحمان کے وکیل کامران مرتضیٰ نے اعتراض کیا کہ سندھ ہائی کورٹ میں عارف علوی کے خلاف پٹیشن دائر ہوئی ہے؛ جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ ہمیں کوئی نوٹس نہیں ملا، جب نوٹس نہیں ملا تو کیسے ہم کارروائی کریں؟ کامران مرتضیٰ نے کہا کہ میں آپ کے نوٹس میں یہ معاملہ لارہا ہوں۔چیف الیکشن کمشنر نے اعتراضات مسترد کرتے ہوئے عارف علوی کے کاغذات منظور کر لیے۔دوسری جانب، پاکستان پیپلز پارٹی کے امیدوار اعتزار احسن کا کہنا ہے الیکشن بھرپور طریقے سے لڑیں گے۔ بقول اُن کے، ’’صدارتی الیکشن میں پارٹی کا نہیں، ضمیر کا ووٹ ہوتا ہے، پی ٹی آئی کے کئی لوگ ہمیں ووٹ کاسٹ کریں گے، جے یو آئی کے کئی ساتھی بھی پی پی کو ووٹ دیں گے‘‘۔اعتزاز احسن نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ’’میری نامزدگی میری جماعت کا فیصلہ ہے، کونسا صدارتی امیدوار موزوں ہے اور کون نہیں اسکا فیصلہ ووٹر کریگا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’میرا رویہ بہت لچکدار ہے، ن لیگ نے ایاز صادق یا راجا ظفرالحق جیسا امیدوار نامزد کیا ہوتا تو ہم سوچنے پر مجبور ہو جاتے۔ تمام سیاسی جماعتوں سے ہمیں ووٹ کی توقع ہے‘‘۔الیکشن کمیشن نے 4 ستمبر کو ہونے والے صدارتی انتخابات کیلئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دیدی۔الیکشن کمیشن کے ترجمان الطاف احمد خان کے مطابق پولنگ پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد، پنجاب اسمبلی لاہور، سندھ اسمبلی کراچی، خیبرپختونخوا اسمبلی پشاور اور بلوچستان اسمبلی کوئٹہ سمیت 5 مقامات پر ہوگی۔الیکشن کمیشن کے جاری کردہ شیڈول کے مطابق امیدوار کاغذات نامزدگی 30 اگست کو دن 12 بجے تک واپس لے سکیں گے، جس کے بعد امیدواروں کی حتمی فہرست اسی روز دوپہر ایک بجے جاری کی جائے گی۔پاکستان میں صدر کے انتخاب کے لیے عام افراد بھی کاغذات جمع کروا سکتے ہیں اور اس الیکشن میں بھی سیاسی جماعتوں کے امیدواروں کے علاوہ 10 دیگر افراد نے بھی کاغذات جمع کروائے۔ لیکن ان کو تجویز کنندہ اور تائید کنندہ نہ ملنے کے باعث ان کے کاغذات مسترد کر دیے گئے۔صدر مملکت ممنون حسین کی مدت 8 ستمبر کو ختم ہو رہی ہے جس کے بعد نئے صدر آئندہ پانچ سالوں کے لیے اس عہدہ کا حلف اٹھائیں گے۔
اغذات نامزدگی منظور کرلیے ہیں۔صدارتی انتخاب کے لیے پیپلز پارٹی نے اعتزاز احسن، تحریک انصاف نے عارف علوی اور مسلم لیگ(ن) سمیت دیگر اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے مولانا فضل الرحمان نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے گئے تھے۔چیف الیکشن کمشنر سردار محمد رضا نے تینوں امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کرلئے ہیں۔کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے وقت اعتزاز احسن اور عارف علوی الیکشن کمیشن میں موجود تھے۔ تاہم، مولانا فضل الرحمان خود نہ آئے اور جے یو آئی (ف) اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما اس موقع پر موجود تھے۔عارف علوی کے کاغذات نامزدگی پر مولانا فضل الرحمان کے وکیل کامران مرتضیٰ نے اعتراض کیا کہ سندھ ہائی کورٹ میں عارف علوی کے خلاف پٹیشن دائر ہوئی ہے؛ جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ ہمیں کوئی نوٹس نہیں ملا، جب نوٹس نہیں ملا تو کیسے ہم کارروائی کریں؟ کامران مرتضیٰ نے کہا کہ میں آپ کے نوٹس میں یہ معاملہ لارہا ہوں۔چیف الیکشن کمشنر نے اعتراضات مسترد کرتے ہوئے عارف علوی کے کاغذات منظور کر لیے۔دوسری جانب، پاکستان پیپلز پارٹی کے امیدوار اعتزار احسن کا کہنا ہے الیکشن بھرپور طریقے سے لڑیں گے۔ بقول اُن کے، ’’صدارتی الیکشن میں پارٹی کا نہیں، ضمیر کا ووٹ ہوتا ہے، پی ٹی آئی کے کئی لوگ ہمیں ووٹ کاسٹ کریں گے، جے یو آئی کے کئی ساتھی بھی پی پی کو ووٹ دیں گے‘‘۔اعتزاز احسن نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ’’میری نامزدگی میری جماعت کا فیصلہ ہے، کونسا صدارتی امیدوار موزوں ہے اور کون نہیں اسکا فیصلہ ووٹر کریگا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’میرا رویہ بہت لچکدار ہے، ن لیگ نے ایاز صادق یا راجا ظفرالحق جیسا امیدوار نامزد کیا ہوتا تو ہم سوچنے پر مجبور ہو جاتے۔ تمام سیاسی جماعتوں سے ہمیں ووٹ کی توقع ہے‘‘۔الیکشن کمیشن نے 4 ستمبر کو ہونے والے صدارتی انتخابات کیلئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دیدی۔الیکشن کمیشن کے ترجمان الطاف احمد خان کے مطابق پولنگ پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد، پنجاب اسمبلی لاہور، سندھ اسمبلی کراچی، خیبرپختونخوا اسمبلی پشاور اور بلوچستان اسمبلی کوئٹہ سمیت 5 مقامات پر ہوگی۔الیکشن کمیشن کے جاری کردہ شیڈول کے مطابق امیدوار کاغذات نامزدگی 30 اگست کو دن 12 بجے تک واپس لے سکیں گے، جس کے بعد امیدواروں کی حتمی فہرست اسی روز دوپہر ایک بجے جاری کی جائے گی۔پاکستان میں صدر کے انتخاب کے لیے عام افراد بھی کاغذات جمع کروا سکتے ہیں اور اس الیکشن میں بھی سیاسی جماعتوں کے امیدواروں کے علاوہ 10 دیگر افراد نے بھی کاغذات جمع کروائے۔ لیکن ان کو تجویز کنندہ اور تائید کنندہ نہ ملنے کے باعث ان کے کاغذات مسترد کر دیے گئے۔صدر مملکت ممنون حسین کی مدت 8 ستمبر کو ختم ہو رہی ہے جس کے بعد نئے صدر آئندہ پانچ سالوں کے لیے اس عہدہ کا حلف اٹھائیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
سپین پولیس نے انناس میں چھپائی گئي 67 کلو کوکین کو برآمد کرلیا ۔
دریائے چناب میں نہاتے ہوئے 3 نوجوان ڈوب گئے
Translate News »