مسلم لیگ ق نے کا تحریک انصاف کے رویے پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کو تحفظات سے آگاہ کرنے کا فیصلہ     No IMG     تحریک انصاف نے سابق صدرآصف علی زرداری کی نااہلی کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے سانحہ ساہیوال پر بغیر تحقیقات کے بیانات دینے پر وزرا اور پنجاب پولیس پر سخت اظہار برہمی     No IMG     وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری کی جسٹس ثاقب نثارپرتنقید، موجود چیف جسٹس کی تعریف     No IMG     برطانیہ میں بھی برف باری سے شدید سردی     No IMG     برطانیہ کے سابق وزیراعظم کے جان میجر نے موجودہ وزیرِاعظم تھریسا مے سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ یورپ سے علیحدگی (بریگزٹ) پر ریڈ لائن سے پیچھے ہٹ جائیں     No IMG     میکسیکو میں پیٹرول کی پائپ لائن میں دھماکے اور آگ لگنے کے حادثے میں ہلاکتوں کی تعداد 73 ہوگئی     No IMG     امریکی سینیٹر لنزے گراہم کی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات     No IMG     سی ٹی ڈی کے مطابق ذیشان کا تعلق داعش سے تھا ,صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت     No IMG     وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کو معلوم ہی نہیں پھولوں کا گلدستہ کہاں پیش کرنا ہے کہاں نہیں؟     No IMG     لاہورمیں شہریوں نے پولیس کی دھلائی کر ڈالی، بھاگ کر جان بچائی     No IMG     وزارتِ تجارت نےکاروں کی درآمد پر لگائی جانی والی پابندیوں پر نظر ثانی کرتے ہوئے انہیں مزید سخت کردیا     No IMG     خواتین کے مساوی حقوق اور تشدد کے خاتمے کے لیے امریکہ، برطانیہ سمیت مختلف ممالک میں خواتین کی جانب سے ریلیاں نکالی گئیں۔     No IMG     فرانس میں صدر میکروں کی حکومت کے خلاف پیلی جیکٹ والوں کا احتجاج اس ہفتے بھی جاری رہا، کئی مقامات پر پولیس اور مظاہرین میں جھڑپیں     No IMG     وزیراعلیٰ پنجاب نے اعلیٰ سطحی اجلاس طلب کرلیا     No IMG    

اسلام آباد,تینوں صدارتی امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور
تاریخ :   29-08-2018

اسلام آباد( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) پاکستان میں چار ستمبر کو ہونے والے صدارتی انتخاب کے لیےپاکستان پیپلز پارٹی کے اعتزاز احسن، جمعیت علمائے اسلام (ف) کے مولانا فضل الرحمان اور پاکستان تحریک انصاف کے ڈاکٹر عارف علوی کے کع کرائے گئے تھے۔چیف الیکشن کمشنر سردار محمد رضا نے تینوں

 

امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کرلئے ہیں۔کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے وقت اعتزاز احسن اور عارف علوی الیکشن کمیشن میں موجود تھے۔ تاہم، مولانا فضل الرحمان خود نہ آئے اور جے یو آئی (ف) اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما اس موقع پر موجود تھے۔عارف علوی کے کاغذات نامزدگی پر مولانا فضل الرحمان کے وکیل کامران مرتضیٰ نے اعتراض کیا کہ سندھ ہائی کورٹ میں عارف علوی کے خلاف پٹیشن دائر ہوئی ہے؛ جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ ہمیں کوئی نوٹس نہیں ملا، جب نوٹس نہیں ملا تو کیسے ہم کارروائی کریں؟ کامران مرتضیٰ نے کہا کہ میں آپ کے نوٹس میں یہ معاملہ لارہا ہوں۔چیف الیکشن کمشنر نے اعتراضات مسترد کرتے ہوئے عارف علوی کے کاغذات منظور کر لیے۔دوسری جانب، پاکستان پیپلز پارٹی کے امیدوار اعتزار احسن کا کہنا ہے الیکشن بھرپور طریقے سے لڑیں گے۔ بقول اُن کے، ’’صدارتی الیکشن میں پارٹی کا نہیں، ضمیر کا ووٹ ہوتا ہے، پی ٹی آئی کے کئی لوگ ہمیں ووٹ کاسٹ کریں گے، جے یو آئی کے کئی ساتھی بھی پی پی کو ووٹ دیں گے‘‘۔اعتزاز احسن نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ’’میری نامزدگی میری جماعت کا فیصلہ ہے، کونسا صدارتی امیدوار موزوں ہے اور کون نہیں اسکا فیصلہ ووٹر کریگا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’میرا رویہ بہت لچکدار ہے، ن لیگ نے ایاز صادق یا راجا ظفرالحق جیسا امیدوار نامزد کیا ہوتا تو ہم سوچنے پر مجبور ہو جاتے۔ تمام سیاسی جماعتوں سے ہمیں ووٹ کی توقع ہے‘‘۔الیکشن کمیشن نے 4 ستمبر کو ہونے والے صدارتی انتخابات کیلئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دیدی۔الیکشن کمیشن کے ترجمان الطاف احمد خان کے مطابق پولنگ پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد، پنجاب اسمبلی لاہور، سندھ اسمبلی کراچی، خیبرپختونخوا اسمبلی پشاور اور بلوچستان اسمبلی کوئٹہ سمیت 5 مقامات پر ہوگی۔الیکشن کمیشن کے جاری کردہ شیڈول کے مطابق امیدوار کاغذات نامزدگی 30 اگست کو دن 12 بجے تک واپس لے سکیں گے، جس کے بعد امیدواروں کی حتمی فہرست اسی روز دوپہر ایک بجے جاری کی جائے گی۔پاکستان میں صدر کے انتخاب کے لیے عام افراد بھی کاغذات جمع کروا سکتے ہیں اور اس الیکشن میں بھی سیاسی جماعتوں کے امیدواروں کے علاوہ 10 دیگر افراد نے بھی کاغذات جمع کروائے۔ لیکن ان کو تجویز کنندہ اور تائید کنندہ نہ ملنے کے باعث ان کے کاغذات مسترد کر دیے گئے۔صدر مملکت ممنون حسین کی مدت 8 ستمبر کو ختم ہو رہی ہے جس کے بعد نئے صدر آئندہ پانچ سالوں کے لیے اس عہدہ کا حلف اٹھائیں گے۔
اغذات نامزدگی منظور کرلیے ہیں۔صدارتی انتخاب کے لیے پیپلز پارٹی نے اعتزاز احسن، تحریک انصاف نے عارف علوی اور مسلم لیگ(ن) سمیت دیگر اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے مولانا فضل الرحمان نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے گئے تھے۔چیف الیکشن کمشنر سردار محمد رضا نے تینوں امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کرلئے ہیں۔کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے وقت اعتزاز احسن اور عارف علوی الیکشن کمیشن میں موجود تھے۔ تاہم، مولانا فضل الرحمان خود نہ آئے اور جے یو آئی (ف) اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما اس موقع پر موجود تھے۔عارف علوی کے کاغذات نامزدگی پر مولانا فضل الرحمان کے وکیل کامران مرتضیٰ نے اعتراض کیا کہ سندھ ہائی کورٹ میں عارف علوی کے خلاف پٹیشن دائر ہوئی ہے؛ جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ ہمیں کوئی نوٹس نہیں ملا، جب نوٹس نہیں ملا تو کیسے ہم کارروائی کریں؟ کامران مرتضیٰ نے کہا کہ میں آپ کے نوٹس میں یہ معاملہ لارہا ہوں۔چیف الیکشن کمشنر نے اعتراضات مسترد کرتے ہوئے عارف علوی کے کاغذات منظور کر لیے۔دوسری جانب، پاکستان پیپلز پارٹی کے امیدوار اعتزار احسن کا کہنا ہے الیکشن بھرپور طریقے سے لڑیں گے۔ بقول اُن کے، ’’صدارتی الیکشن میں پارٹی کا نہیں، ضمیر کا ووٹ ہوتا ہے، پی ٹی آئی کے کئی لوگ ہمیں ووٹ کاسٹ کریں گے، جے یو آئی کے کئی ساتھی بھی پی پی کو ووٹ دیں گے‘‘۔اعتزاز احسن نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ’’میری نامزدگی میری جماعت کا فیصلہ ہے، کونسا صدارتی امیدوار موزوں ہے اور کون نہیں اسکا فیصلہ ووٹر کریگا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’میرا رویہ بہت لچکدار ہے، ن لیگ نے ایاز صادق یا راجا ظفرالحق جیسا امیدوار نامزد کیا ہوتا تو ہم سوچنے پر مجبور ہو جاتے۔ تمام سیاسی جماعتوں سے ہمیں ووٹ کی توقع ہے‘‘۔الیکشن کمیشن نے 4 ستمبر کو ہونے والے صدارتی انتخابات کیلئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دیدی۔الیکشن کمیشن کے ترجمان الطاف احمد خان کے مطابق پولنگ پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد، پنجاب اسمبلی لاہور، سندھ اسمبلی کراچی، خیبرپختونخوا اسمبلی پشاور اور بلوچستان اسمبلی کوئٹہ سمیت 5 مقامات پر ہوگی۔الیکشن کمیشن کے جاری کردہ شیڈول کے مطابق امیدوار کاغذات نامزدگی 30 اگست کو دن 12 بجے تک واپس لے سکیں گے، جس کے بعد امیدواروں کی حتمی فہرست اسی روز دوپہر ایک بجے جاری کی جائے گی۔پاکستان میں صدر کے انتخاب کے لیے عام افراد بھی کاغذات جمع کروا سکتے ہیں اور اس الیکشن میں بھی سیاسی جماعتوں کے امیدواروں کے علاوہ 10 دیگر افراد نے بھی کاغذات جمع کروائے۔ لیکن ان کو تجویز کنندہ اور تائید کنندہ نہ ملنے کے باعث ان کے کاغذات مسترد کر دیے گئے۔صدر مملکت ممنون حسین کی مدت 8 ستمبر کو ختم ہو رہی ہے جس کے بعد نئے صدر آئندہ پانچ سالوں کے لیے اس عہدہ کا حلف اٹھائیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
سپین پولیس نے انناس میں چھپائی گئي 67 کلو کوکین کو برآمد کرلیا ۔
دریائے چناب میں نہاتے ہوئے 3 نوجوان ڈوب گئے
Translate News »