چیف جسٹس کے اعزاز میں فُل کورٹ ریفرنس کاایک جج نے بائیکاٹ کردیا، جانتے ہیں وہ معزز جج کون ہیں ؟     No IMG     الیکشن کمیشن آف پاکستان نے گوشوارے جمع نہ کروانے پر 322 ارکان کی رکنیت معطل     No IMG     حکومت کا غیر قانونی موبائل فونز ضبط کرنے کا فیصلہ     No IMG     امریکہ نے پریس ٹی وی کی اینکر پرسن کو بغیر کسی جرم کے گرفتار کرلیا     No IMG     سندھ میں آئینی تبدیلی لائیں گے، فواد چودھری     No IMG     کسی کی خواہش پرسابق آصف زرداری کو گرفتار نہیں کرسکتے، نیب     No IMG     نئے پاکستان میں تبدیلی آگئی تبدیلی آگئی، اب لاہور ایئرپورٹ پر شراب دستیاب ہوگی     No IMG     برطانوی وزیراعظم ٹریزامےکیخلاف تحریکِ عدم اعتماد ناکام ہوگئی     No IMG     وزیراعظم کی رہائش گاہ پر وفاقی کابینہ کا ہنگامی اجلاس طلب     No IMG     گاڑیوں کی درآمد پر ٹیکس اب غیر ملکی کرنسی میں ادا کرنا ہوگا, وزیر خزانہ     No IMG     تائيوان, کے معاملے ميں مداخلت برداشت نہيں کی جائے گی, چين     No IMG     امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترکی کی معیشت کو تباہ کرنے کے بیان سے یوٹرن لیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان معاشی ترقی کے وسیع مواقع ہی     No IMG     وزیراعظم سے سابق امریکی سفیر کیمرون منٹر کی ملاقات     No IMG     آپ لوگ کام نہیں کر سکتے چیف جسٹس نے اسد عمرکو دو ٹوک الفاظ میں کیا کہہ ڈالا     No IMG     شادی والے گھر میں آگ لگنے سے دلہن سمیت 4 خواتین جاں بحق     No IMG    


تاریخ :   05-08-2018

پیرس ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو ) فرانسیسی دارالحکومت پیرس میں گَے گیمز کا آغاز ہو گیا ہے۔ ان کھیلوں میں مسلمان ممالک سمیت کئی ملکوں سے ہم جنس پسند خواتین اور مرد شریک ہیں۔
پیرس میں یہ نو روزہ گیمز چ‍ار اگست تا بارہ اگست جاری رہیں گی۔ ان میں شریک ایتھلیٹوں کی تعداد بارہ ہزار سات سو ہے۔ یہ ہزاروں ایتھلیٹس چھتیس مختلف ڈسپلنز میں حصہ لیں گے۔

سعودی عرب، مصر اور روس سے ہم جنس پسند ایتھلیٹس ان کھیلوں میں حصہ لے رہے ہیں۔ یہ اپنی طرز کی دسویں گیمز ہیں۔ ان کھیلوں کا نگران ادارہ فیڈریشن آف گَے گیمز (FGG) ہے۔ اس ادارے کو پیرس گیمز سے سڑسٹھ ملین ڈالر تک کی آمدن کی توقع ہے۔

چار اگست کو گَے گیمز میں شریک ہم جنس پرست خواتین و حضرات نے ایک خصوصی مارچ پریڈ میں حصہ لیا۔ افتتاح کے موقع پر رنگا رنگ تقریب کا اہتمام کیا گیا۔ اس تقریب کی مہمان خصوصی پیرس شہر کی میئر این ہیڈالگو تھیں۔ افتتاحی تقریب میں ڈانس شوز کے علاوہ جسمانی پھرتی یعنی ایکروبیٹس کے مظاہرے بھی شامل تھے۔
ہم جنس پرستوں کی اولمپکی سمجھی جانے والی گیمز ہر چار سال بعد ہوتی ہیں

دسویں گے گیمز میں ساڑھے بارہ ہزار سے زائد ایتھلیٹوں کا تعلق 91 ممالک سے ہے۔ شریک ایتھلیٹوں میں ٹین ایجروں سے لے کر قدرے بڑی عمر کے ہم جنس پرست بھی شریک ہیں۔ روس میں غیر روایتی جنسی روابط کی حوصلہ شکنی کی جاتی ہے تاہم اس پابندی کے باوجود اٹھاون روسی ہم جنس پرست پیرس گیمز میں شریک ہیں۔

سخت اسلامی قوانین کے حامل ملک سعودی عرب سے بھی ایک ہم جنس پرست ایتھلیٹ پیرس پہنچا ہوا ہے۔ اُس نے اپنا سعودی پاسپورٹ بھی شرکاء کے سامنے پیش کیا۔ یہ امر اہم ہے کہ سعودی عرب میں ہم جنس پرستی کی سزا موت ہے۔ مصر سے بھی ایک ایتھلیٹ شریک ہے۔ مصر بھی ایک مسلمان ملک ہے اور وہاں ایسے جنسی میلان رکھنے والوں کو جیل سزا بھی دی جا سکتی ہے۔

فیڈریشن گَے گیمز کا صدر دفتر امریکی شہر سان فرانسسکو میں ہے۔ یہ گمیز ہر چار برس بعد منعقد ہوتی ہیں۔ ان کا آغاز سن 1982 میں ہوا تھا۔ سب سے پہلی گیمز کی میزبانی بھی امریکی شہر سان فرانسسکو نے ہی کی تھی۔ جرمن شہر کولون میں سن 2010 میں ہم جنس پرستوں کی آٹھویں گیمز منعقد کی گئی تھیں جبکہ گیارہویں ایسی گیمز چار برس بعد سن 2022 میں ہانگ کانگ میں ہوں گی۔

Print Friendly, PDF & Email
سعودی عرب نے کینیڈا کے سفیر کو 24 گھنٹے میں ملک چھوڑنے کا حکم
مون سون میں ہونے والی بارشوں سے آبی ذخائر میں اضافہ،پاکستان میں بجلی کی کمی دور ہوگئی
Translate News »