شمالی کوریا کا ایٹمی طاقت کے مظاہرے کا عزم     No IMG     عراق کے دارالحکومت بغداد میں خودکش حملے کے نتیجے میں 19 افراد جاں بحق     No IMG     جرمنی کے وزير خارجہ نے اعلان کیا ہے کہ یورپی یونین کے رکن ممالک مشترکہ ایٹمی معاہدے کی حمایت پر متحد اور متفق ہیں۔     No IMG     ایران کو شام میں فوجی بیس بنانے کی اجازت نہیں دیں گے,اسرائیل کے وزير اعظم     No IMG     مقبوضہ کشمیر، یاسین ملک کی مسلسل غیر قانونی نظر بندی کی سخت مذمت کرتے ہوئے عالمی ریڈ کراس کمیٹی سے اپیل     No IMG     سابق وزیراعظم نواز شریف نے چئیرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کو توہین آمیز پریس ریلیز جاری کرنے پر قانونی نوٹس بھجوا دیا۔     No IMG     قونصل جنرل عائشہ فاروقی نے جیل میں ڈاکٹرعافیہ صدیقی سےملاقات     No IMG     پی ٹی آئی چئیرمین نے بڑا فیصلہ کر لیا ، اب پی ٹی آئی میں شمولت اختیار کرنا آسان نہ ہو گا     No IMG     پاکستان میں تھری اور فور جی صارفین کی تعداد 5 کروڑ46 لاکھ ہو گئی،     No IMG     سابق وزیراعظم نواز شریف نے احتساب عدالت میں اپنے نکالنے کی 4 بڑی وجوہات بتادیں     No IMG     حافظ آباد میں کپڑے کی فیکٹری میں آگ لگ گئی     No IMG     پی ٹی آئی کے اعلیٰ عہدے داروں کی پریم کہانی شروع ہو گئی     No IMG     امريکا نے 5 ايرانی اہلکاروں پر پابندی عائد کر دی     No IMG     موجودہ حکومت نے دہشت گردی ، عسکریت پسندی اور توانائی بحران کو حل کیا ، ملکی معیشت کو مستحکم کردیا, لیفٹیننٹ جنرل (ر) عبدالقیوم     No IMG     پی ٹی آئی گزشتہ 5 سالوں میں خیبرپختونخوا میں ڈلیور کرنے میں بری طرح ناکام ہوئی، مائزہ حمید     No IMG    

افریقہ

  • مصری صدر کے حکم پر غزہ کی مصر کے ساتھ جڑی سرحدی گزرگاہ رفح کو کھول دیا گیا

    مصر ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو ) مصری صدرکے حکم پر غزہ کی مصر کے ساتھ جڑی سرحدی گزرگاہ رفح کو کھول دیا گیا ہے۔ سرحد کھولنے کا فیصلہ ماہِ رمضان کی وجہ سے کیا گیا ہے۔

    مصر کے صدر عبدالفتاح السیسی نے اسلامی تقویم کے مقدس سمجھے جانے والے مہینے رمضان کے دوران غزہ کے ساتھ جڑی سرحدی

    گزرگاہ کو کھولنے کا حکم صادر کر دیا ہے۔ ماہرین کے مطابق اس فیصلے کا سب سے اہم مقصد یہ ہے کہ غزہ کے فلسطینیوں کو رمضان

    کے دوران اشیائے خورد و نوش کی کمیابی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

    سرحدی گزرگاہ رفح کھولنے کے حوالے سے مصری صدر نے اپنے فیس بُک پیج پر لکھا کہ سرحد کھولنے سے یقینی طور پر غزہ کے فلسطینیوں کی پریشان کن حالت زار بہتر ہو سکے گی۔ غزہ کے فلسطینی باشندوں کا دنیا سے واحد رابطہ رفح کی سرحدی گزرگاہ ہے اور اس راستے پر اسرائیل کو کنٹرول حاصل نہیں ہے۔ بقیہ تمام سمندری اور زمینی راستوں کی ناکہ بندی اسرائیل نے سن 2008 سے کر رکھی ہے۔

    مصر نے حالیہ کچھ عرصے سے رفح چیک پوائنٹ کو مکمل طور پر بند رکھا ہوا ہے اور اس کی وجہ سکیورٹی کے خطرات بتائے جاتے ہیں۔ اس سرحدی راستے کو طویل وقت کے لیے آخری مرتبہ قریب پانچ برس قبل سن 2013 میں کھولا گیا تھا۔ رفح کے راستے کو رمضان میں آخری مرتبہ  کھولا گیا لیکن جزیرہ نما سینائی میں دہشت گردانہ واقعات میں اضافہ ہونے پر اسے فوری طور پر دوبارہ بند کر دیا گیا تھا۔

    مصری حکومت نے رفح کی گزرگاہ کو ایسے وقت پر کھولا ہے جب غزہ کے فلسطینیوں نے رواں ہفتے کے دوران پیر کو یروشلم میں امریکی سفارت خانے کے افتتاح کے موقع پر شدید احتجاج اسرائیلی سرحد پر کیا تھا۔ اس احتجاجی عمل کے دوران ساٹھ کے قریب فلسطینی اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے ہلاک ہو گئے تھے۔

    مصری وزارت خارجہ نے ہلاک ہونے والے تمام فلسطینیوں کو شہدا قرار دیتے ہوئے اسرائیلی فائرنگ کی مذمت بھی کی تھی۔ رواں برس تیس مارچ سے شروع ہونے والے فلسطینیوں کے ہفتہ وار احتجاج میں اب تک 114 فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں اور زخمیوں کی تعداد ہزاروں میں بنتی ہے۔

    یہ امر اہم ہے کہ مصر کے اسرائیل اور فلسطینیوں کے ساتھ تعلقات استوار ہیں اور اس باعث قاہرہ حکومت کئی مرتبہ افراتفری و انتشار کے حالات میں کلیدی کردار ادا کر چکی ہے۔ حماس کے سربراہ اسماعیل ہنیہ ابھی پچھلے اتوار کو ہی مصر کا دورہ بھی کر چکے ہیں، جہاں انہوں نے مصری خفیہ ادارے کے سربراہ عباس اکمل سے ملاقات کی تھی۔

     

  • مصری فوج نے 13 دہشت گردوں کو گرفتار کرلیا

    صحرائے سینا ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو ) مصری فوج نے صحرائے سینا میں 13 وہابی دہشت گردوں کو گرفتار کرلیا ہے۔ مصری فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ مصری فورسز نے وہابی دہشت گردوں کے خلاف صحرائے سینا میں فروری سے جاری کارروائی کے دوران 200 دہشت گردوں کو ہلاک اور سیکڑوں کو گرفتار کرلیا ہے۔

  • جنوبی افریقہ مسجد میں نمازیوں پر دہشت گردوں نے چاقو سے حملہ کردیا امام مسجد سمیت 3 افراد جاں بحق

    جنوبی افریقہ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو )  کے شہر ڈربن کی امام حسین مسجد میں نمازیوں پر دہشت گردوں نے چاقو سے حملہ کردیا جس کے نتیجے میں امام مسجد سمیت 3 افراد جاں بحق ہو گئے۔ اطلاعات کے مطابق 3 دہشت گردوں نے نمازیوں پر چاقو سے حملہ کیا اور پھر پیٹرول بموں سے مسجد کو نذر آتش بھی کر دیا۔حملہ آوروں نے تیز دھار آلے کی مدد سے مسجد میں موجود لوگوں کے گلے کاٹے جس کے نتیجے میں 3 افراد جاں بحق ہوئے جب کہ حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔ پولیس کے مطابق دہشت گردوں کی تلاش جاری ہے جو بظاہر مصری باشندے معلوم ہوتے تھے۔

  • افریقی ملک نائجیریا کے ایک گاؤں پر دہشت گردوں کے حملے میں 45افراد ہلاک

     افریقی ملک نائجیریا   (ورلڈ فاسٹ نیوز فاریو)کے ایک گاؤں پر وہابی دہشت گردوں کے حملے میں 45افراد ہلاک ہوگئے ہیں ہلاک ہونے والوں میں بچے اور عورتیں بھی شامل ہیں۔ نائجیریا کی شمال مغربی ریاست کادونا کے حکام  کے مطابق گاؤں گواسکا پر حملہ کر کے دہشت گردوں نے کم از کم 45افراد کو ہلاک کر دیا۔ ہلاک ہونے والوں میں بچے اور عورتیں  بھی شامل ہیں۔کادونا شہر کے حکام نے امدادی حکام اور پولیس کی نفری روانہ کر دی ہے۔حملہ آوردہشت گردوں کا تعلق کادونا کی ہمسایہ ریاست زام فارا سے بتایا گیا ہے۔کادونا ریاست کی پولیس کے ترجمان مختار علی نے اس واردات اور ہونے والی ہلاکتوں کی تصدیق کر دی ہے۔ادھر پولیس کے مطابق دہشت گردوں نے 3گھنٹے تک گاؤں میں دندناتے ہوئے عام لوگوں کے قتل کا سلسلہ جاری رکھا۔ کئی مکانات کو آگ بھی لگا دی گئی۔

  • شمالی مشرقی نائجیریا میں واقع ایک مسجد میں دو خود کش دھماکوں میں مرنے والوں کی تعداد 86 ہوگئی

     نائجیریا ( ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو ) شمالی مشرقی نائجیریا میں واقع ایک مسجد میں دو خود کش دھماکوں میں مرنے والوں کی تعداد 86 ہوگئی ہے۔۔پولیس کے مطابق گزشتہ روز جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد 27تھی جو کہ اب 86 تک پہنچ گئی ہے جبکہ دھماکے میں 58 افراد زخمی ہوئے ہیں۔۔خودکش حملہ آور نے ظہر کی نماز کے دوران موبی ٹاﺅن کی ایک مسجد میں اپنے آپ کو اڑا لیا اور دوسرے حملہ آور نے 200 کلومیٹر کی دور دھماکہ کیا۔مقامی گورکن کے مطابق قبرستان میں اب تک 86 افراد کو دفنایا جاچکا ہے جبکہ اطلاعات کے مطابق گزشتہ روز 76 افراد کو دفنایا گیا تھا۔

  • لیبیا میں ایک فوجی طیارہ گر کر تباہ ہوگیا ہے جس کے نتیجے میں عملے کے تین افراد ہلاک

    لیبیا (ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو)    میں ایک فوجی طیارہ گر کر تباہ ہوگیا ہے جس کے نتیجے میں عملے کے تین افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق  لیبیا کے فوجی طیارہ نے لیبیا کے جنوب میں اوباری شہر سے اڑان بھری تھی جو اڑان کے تھوڑی دیر بعد گر کر تباہ ہوگیا۔ اس حادثے میں طیارے میں سوار عملے کے تین افراد ہلاک جبکہ ایک زخمی ہوگیا ہے۔

  • یورپی سرحدوں پر نگرانی سخت ہونے اور غیرقانونی طور پر یورپی یونین میں داخلے میں مشکلات کی وجہ سے الجزائر کو پریشانی کا سامنا

    الجزائر ی(ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو) ورپی سرحدوں پر نگرانی سخت ہونے اور غیرقانونی طور پر یورپی یونین میں داخلے میں مشکلات کی وجہ سے الجزائر کو پریشانی کا سامنا ہے۔ یورپ پہنچنے کے خواہش مند ہزاروں غیرقانونی تارکین وطن الجزائر کا رخ کر رہے ہیں
    الجزائر کو خدشات ہیں کہ بحیرہء روم میں لیبیا سے اٹلی کے درمیانی راستے پر سخت جانچ پڑتال اور نگرانی کی وجہ سے زیریں صحارا افریقہ کے خطے سے تعلق رکھنے والے تارکین وطن الجزائرکا رخ کر سکتے ہیں۔ الجزائر کے وزیرداخلہ نے جمعرات کے روز کہا کہ یورپ کی سخت سرحدی پالیسی کی وجہ سے الجزائر کو تارکین وطن کے بوجھ کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔
    2016ء میں یورپی یونین اور ترکی کے درمیان طے پانے والی ڈیل کی وجہ سے بحیرہء ایجیئن کے راستے یونان پہنچنا مشکل بنا دیا گیا تھا، جب کہ بلقان خطے نے بھی غیرقانونی تارکین وطن کے لیے اپنی اپنی قومی سرحدیں بند کر رکھی ہیں۔ یورپ اور انقرہ کے درمیان ڈیل سے قبل اس راستے سے ایک ملین سے زائد افراد یورپی یونین پہنچے تھے۔

    اس کے بعد تارکین وطن کی ایک بڑی تعداد نے شمالی افریقہ خصوصاﹰ لیبیا سے اٹلی کا رخ کرنا شروع کر دیا تھا۔ تاہم اٹلی اور لیبیا کے درمیان بھی اب اس معاملے پر قریبی تعاون اور کوسٹ گارڈز کی امداد اور تربیت کے تناظر میں بحیرہ روم کے اس وسطی علاقے کا راستہ بھی مہاجرین کے لیے نہایت مشکل بن چکا ہے۔ اسی طرح یورپی یونین نے تیونس کے ساتھ بھی اس معاملے پر اپنے تعاون میں اضافہ کیا ہے۔
    الجزائر کے وزیرداخلہ، حسن کاچمی کے مطابق، ’’ہمارے ہاں اب ہزاروں تارکین وطن موجود ہیں اور ہمیں خدشات ہیں کہ یورپ کی جانب سے دروازے بند کر دیے جانے کے بعد مزید لاکھوں افراد الجزائر کا رخ کریں گے۔‘‘ انہوں کا مزید کہنا تھا، ’’مسئلے کا حل یہ نہیں کہ آپ اپنے اپنے ملک کے دروازے بند کر لیں اور کسی دوسری جگہ پر لوگوں کو مرنے دیں۔

    الجزائر کو اپنے ہاں مہاجرین کی بڑھتی ہوئی تعداد پر شدید تشویش ہے۔‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ مالی اور نائجر کے ساتھ ملنے والی قریب ڈھائی ہزار کلومیٹر کی سرحد پر مہاجرین کے سیلاب کو روکنے کے لیے الجزائر بیس ملین ڈالر خرچ کر چکا ہے۔

  • مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں مصر اور یونان کے وزراء دفاع کی ملاقات

    قاہرہ (ورلڈ فاسٹ نیوز فاریو) مصردارالحکومت قاہرہ میں مصر کے وزیر دفاع اور یونان کے وزير دفاع نے باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

    اطلاعات کے مطابق دونوں ممالک کے وزراء دفاع نے اس ملاقات میں باہمی تعاون کو فروغ دینے ، علاقائی امور اور عالمی مسائل پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

  • مصری پارلیمنٹ کی خارجہ کمیٹی نے ایک بیان میں شام پر تین مغربی ممالک امریکہ، برطانیہ اور فرانس کے حملے کی مذمت

     مصری (ورلڈ فاسٹ نیوز فاریو)  پارلیمنٹ کی خارجہ کمیٹی نے ایک بیان میں شام پر تین مغربی ممالک امریکہ، برطانیہ اور فرانس  کے حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ عرب ممالک کو شام پر امریکی جارحیت کی حمایت سے گریز کرنا چاہیے اور شام میں جاری  کشیدگی کو روکنے کے لئے اپنا سیاسی کردار ادا کرنا چاہیے۔ مصری پارلیمنٹ کی خارجہ کمیٹی کا کہنا ہے کہ عرب ملک پر مغربی ممالک کی حملے کی حمایت بعض عرب حکمرانوں کی حماقت ، جہالت اور نادانی کا مظہر ہے۔ مصری پارلیمنٹ کی خارجہ کمیٹی نے حقیقت یاب کمیٹی کی رپورٹ سے قبل شام پر تین مغربی ممالک کے حملے کو عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قراردیتے ہوئے اس پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ عرب ذرائع کے مطابق شام پر امریکی حملے کی سعودی عرب، ترکی، بحرین اور قطر نے حمایت کی جبکہ روس، ایران، چین، لبنان ،اردن اور مصر نے اس حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے بین الاقوامی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قراردیا ہے۔ عرب ذرائع کے مطابق سعودی عرب نے شام پر حملے کی سلسلے میں امریکہ کو 4 ارب ڈالر کی رقم ادا کی ہے جسے عربوں اور مسلمانوں کے خلاف سعودی عرب کی بہت بڑی گھناؤنی سازش اور خیانت قراردیا جارہا ہے۔ اس سے قبل سعودی عرب شامی حکومت کو گرانے کے لئے دہشت گردوں کو بھی اربوں ڈالر فراہم کرچکا ہے لیکن اس کا وہابی دہشت گردتنظیموں پر لگایا گیا تمام سرمایہ ضائع اور برباد ہوگیا ہے سعودی رعب کے ولیعہد محمد بن سلمان اس سے قبل اس بات کا اعتراف کرچکے ہیں کہ سعودی عرب نے امریکہ کے کہنے پر وہابی دہشت گردی کو فروغ دیا اور وہابی مدارس کے قیام میں بہت بڑا سرمایہ لگایا ہے۔

  • ٹی وی شو میں مہمان خاتون نے میزبان کی ٹھکائی کردی

     مصر (ورلڈ فاسٹ نیوز فاریو)کے ایک ٹی وی شو کی لائیو ٹرانسمیشن میں خاتون مہمان نے ٹی وی شو کے میزبان کی پٹائی کر دی،صورت حال کے پیش نظر پولیس کو مدد کےلئے بلانا پڑا۔ مصر کے ٹی وی پروگرام کے دوران مہمان کی میزبان کے ساتھ تلخ کلامی ہاتھا پائی تک جا پہنچی اور مہمان خاتون نے میزبان کے سوال اٹھانے پر اتنا سخت رد عمل دیا کہ اس کو مارنے کیلئے لپکی اور میزبان کی پٹائی کر دی۔

    صورت حال جب قابو سے باہر ہو گئی تو میزبان کو لائیو ٹرانسمیشن بند کرناپڑی اور مدد کیلئے پولیس کو طلب کر لیا گيا جس نے آکر صورت حال کو قابو میں کیا۔ یہ  فوٹیج سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی جسے اب تک ہزاروں افراد مشاہدہ  چکے ہیں۔