پاک فوج نے ایک آپریشن میں 4 مغوی ایرانی فوجیوں کو بازیاب کرالیا     No IMG     دنیا بھر میں آج ہندو برادری اپنا مذہبی تہوار ہولی منا رہی ہے     No IMG     افغانستان کے صوبے ہرات میں سیلاب سے 13 افراد کے جاں بحق ہونے سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 63 ہوگئی     No IMG     لیبیا میں پناہ گزینوں کو لے جانے والی کشتی ڈوب گئی جس کے نتیجے میں 9 افراد ہلاک     No IMG     اسرائیلی دہشت گردی، غرب اردن میں مزید3 فلسطینیوں کو شہید کردیا     No IMG     پیپلز پارٹی کےچیئرمین نے 3 وفاقی وزرا کو فارغ کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     وزیراعظم عمران خان کی ہولی کے تہوار پر ہندو برادی کو مبارک باد     No IMG     سابق وزیراعظم نوازشریف نے ای سی ایل سے نام نکالنے کی درخواست دائر کردی     No IMG     سمجھوتہ ایکسپریس کیس کا فیصلہ 12 سال بعد بھی تاخیر کا شکار     No IMG     وزیر اعظم آئین کے آرٹیکل 214 کی شق دو اے پر عمل کرنے میں ناکام     No IMG     روس کے وزیر دفاع سرگئی شویگو نے شام کے صدر بشار اسد سے ملاقات     No IMG     بھارت اور پاکستان متنازع معاملات مذاکرات کے مذاکرات کے ذریعے حل کریں,چین     No IMG     بریگزیٹ پرٹریزامے کی حکمت عملی انتہائی کمزورہے، ٹرمپ     No IMG     امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو کی کویت کے بادشاہ سے ملاقات     No IMG     نیوزی لینڈ میں جمعہ کو سرکاری ریڈیو اور ٹی وی سے براہ راست اذان نشر ہوگی,جیسنڈا آرڈرن     No IMG    

یورپ میں قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کے مطابق تقریباﹰ پینسٹھ ہزار مہاجرین کے اسمگلروں کو تلاش کیا جارہا,یوروپول
تاریخ :   05-04-2018

یورپ ( ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو ) میں قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کے مطابق تقریباﹰ پینسٹھ ہزار مہاجرین کے اسمگلروں کو تلاش کیا جارہا ہے۔ یورپی سرحدی نگرانی کے ادارے یوروپول نے بتایا ہے کہ مہاجرین کی غیر قانونی اسمگلنگ میں تیزی نظر آرہی ہے۔

بیلجیم کے دارالحکومت برسلز سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق  یورپی سرحدی نگرانی کے ادارے یوروپول کے مطابق مہاجرین کو غیر قانونی طور پر یورپ پہنچانے والے گروہ میں اضافہ ہورہا ہے۔

تین سال قبل خانہ جنگی کی وجہ سے لاکھوں شامی مہاجرین  نے یورپ کا رخ کیا تھا۔ سن 2015 میں یورپ کو دوسری عالمی جنگِ عظیم کے بعد مہاجرین کے سب سے بڑے بحران کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ تارکین وطن کی اتنے بڑے پیمانے پر نقل مکانی کے سبب اس تناظر میں انسانی  اسمگلروں کی تعداد بھی دگنی ہوگئی ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے ’اے ایف پی‘ کو یورپی مائیگرنٹ اسمگلنگ سنٹر کے سربراہ روبرٹ کریپنکو نے بتایا ہے کہ گزشتہ سال کے آخر تک یوروپول کے ڈیٹا بیس میں پینسٹھ ہزار سمگلروں کا ڈیٹا درج کیا گیا ہے۔ یوروپول کے اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ تین برسوں میں مہاجرین کو غیر قانونی طور پر یورپ پہنچانے والے گروہ کی تعداد میں تسلسل سے اضافہ ہورہا ہے۔ اس حوالے سے 2015ء میں تیس ہزار، 2016ء میں پچپن ہزار جب کہ سن 2017 کے آخر تک اس فہرست میں مزید دس ہزار اسمگلروں کے بارے میں معلومات درج ہوئیں۔

 یہ بات بھی اہم ہے کہ مہاجرین کے اسمگلنگ میں ملوث 63% یورپی شہری ہیں جن میں 45% کا تعلق بلقان ممالک سے بتایا جارہا ہے۔ مزید یہ کہ اس بین الاقوامی جرائم پیشہ گروہ میں 14% مشرق وسطیٰ سے،13% افریقہ سے، 9% مشرقی ایشیا سے اور 1% کا تعلق امریکا سے ہے۔

 ’یورپی مائیگرنٹ اسمگلنگ سنٹر‘  کے سربراہ روبرٹو کریپِنکو نے بتایا کہ مہاجرین کی اسمگلنگ اربوں یورو کا کاروبار ہے۔ اگرچہ یورپی یونین کی جانب سے لیبیا اور ترکی  کے ساتھ  معاہدے کے نتیجے میں مہاجرین کی یورپ آمد میں کمی تو واقع ہوئی ہے لیکن یورپی سرحدوں میں داخل ہونے والے غیر قانونی مہاجرین آج بھی ترکی اور لیبیا کے راستے کو ترجیح دیتے ہیں۔

گزشتہ سال ای یو افریقہ اجلاس میں طے ہونے والے معاہدے کے پیش نظر لیبیا سے ہزاروں مہاجرین کو اپنے آبائی وطن منتقل کیا گیا تھا۔ فرانسیسی صدر ماکروں کی جانب سے اعلان کیا گیا تھا ایسے گروہوں کے مالی اور انتظامی نیٹ ورک کوقابو کرنے کے لیے دونوں فریقین مزید معلومات کا تبادلہ کریں۔

تاہم معلومات کے تبادلے کے بارے میں کریپنکو نے اے ایف پی کو بتایا کہ  یوروپول نئے قانونی ضوابط کی وجہ سے  صرف یورپی یونین کے رکن ممالک سے معلومات کا تبادلہ کرسکتا ہے۔ جس کی وجہ سے یورو زون کے اندر مہاجرین کی اسمگلنگ پر قابو پانے میں یوروپول ایجنسی کو کامیابی حاصل رہی ہے۔

ع آ، ص ح، اے ایف پی

Print Friendly, PDF & Email
ترکی کے اسکی شہر میں یونیورسٹی میں مسلح شخص کی فائرنگ کے نتیجے میں 4 افراد ہلاک
پاکستان اور بھارت میں آبی مسائل پر ایک بار پھر تلخی بڑھ رہی ہے اور اسلام آباد نے کشن گنگا پروجیکٹ کے حوالے سے عالمی بینک سے رابطہ کر لیا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Translate News »