چیف جسٹس کے اعزاز میں فُل کورٹ ریفرنس کاایک جج نے بائیکاٹ کردیا، جانتے ہیں وہ معزز جج کون ہیں ؟     No IMG     الیکشن کمیشن آف پاکستان نے گوشوارے جمع نہ کروانے پر 322 ارکان کی رکنیت معطل     No IMG     حکومت کا غیر قانونی موبائل فونز ضبط کرنے کا فیصلہ     No IMG     امریکہ نے پریس ٹی وی کی اینکر پرسن کو بغیر کسی جرم کے گرفتار کرلیا     No IMG     سندھ میں آئینی تبدیلی لائیں گے، فواد چودھری     No IMG     کسی کی خواہش پرسابق آصف زرداری کو گرفتار نہیں کرسکتے، نیب     No IMG     نئے پاکستان میں تبدیلی آگئی تبدیلی آگئی، اب لاہور ایئرپورٹ پر شراب دستیاب ہوگی     No IMG     برطانوی وزیراعظم ٹریزامےکیخلاف تحریکِ عدم اعتماد ناکام ہوگئی     No IMG     وزیراعظم کی رہائش گاہ پر وفاقی کابینہ کا ہنگامی اجلاس طلب     No IMG     گاڑیوں کی درآمد پر ٹیکس اب غیر ملکی کرنسی میں ادا کرنا ہوگا, وزیر خزانہ     No IMG     تائيوان, کے معاملے ميں مداخلت برداشت نہيں کی جائے گی, چين     No IMG     امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترکی کی معیشت کو تباہ کرنے کے بیان سے یوٹرن لیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان معاشی ترقی کے وسیع مواقع ہی     No IMG     وزیراعظم سے سابق امریکی سفیر کیمرون منٹر کی ملاقات     No IMG     آپ لوگ کام نہیں کر سکتے چیف جسٹس نے اسد عمرکو دو ٹوک الفاظ میں کیا کہہ ڈالا     No IMG     شادی والے گھر میں آگ لگنے سے دلہن سمیت 4 خواتین جاں بحق     No IMG    

یورپ میں قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کے مطابق تقریباﹰ پینسٹھ ہزار مہاجرین کے اسمگلروں کو تلاش کیا جارہا,یوروپول
تاریخ :   05-04-2018

یورپ ( ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو ) میں قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کے مطابق تقریباﹰ پینسٹھ ہزار مہاجرین کے اسمگلروں کو تلاش کیا جارہا ہے۔ یورپی سرحدی نگرانی کے ادارے یوروپول نے بتایا ہے کہ مہاجرین کی غیر قانونی اسمگلنگ میں تیزی نظر آرہی ہے۔

بیلجیم کے دارالحکومت برسلز سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق  یورپی سرحدی نگرانی کے ادارے یوروپول کے مطابق مہاجرین کو غیر قانونی طور پر یورپ پہنچانے والے گروہ میں اضافہ ہورہا ہے۔

تین سال قبل خانہ جنگی کی وجہ سے لاکھوں شامی مہاجرین  نے یورپ کا رخ کیا تھا۔ سن 2015 میں یورپ کو دوسری عالمی جنگِ عظیم کے بعد مہاجرین کے سب سے بڑے بحران کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ تارکین وطن کی اتنے بڑے پیمانے پر نقل مکانی کے سبب اس تناظر میں انسانی  اسمگلروں کی تعداد بھی دگنی ہوگئی ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے ’اے ایف پی‘ کو یورپی مائیگرنٹ اسمگلنگ سنٹر کے سربراہ روبرٹ کریپنکو نے بتایا ہے کہ گزشتہ سال کے آخر تک یوروپول کے ڈیٹا بیس میں پینسٹھ ہزار سمگلروں کا ڈیٹا درج کیا گیا ہے۔ یوروپول کے اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ تین برسوں میں مہاجرین کو غیر قانونی طور پر یورپ پہنچانے والے گروہ کی تعداد میں تسلسل سے اضافہ ہورہا ہے۔ اس حوالے سے 2015ء میں تیس ہزار، 2016ء میں پچپن ہزار جب کہ سن 2017 کے آخر تک اس فہرست میں مزید دس ہزار اسمگلروں کے بارے میں معلومات درج ہوئیں۔

 یہ بات بھی اہم ہے کہ مہاجرین کے اسمگلنگ میں ملوث 63% یورپی شہری ہیں جن میں 45% کا تعلق بلقان ممالک سے بتایا جارہا ہے۔ مزید یہ کہ اس بین الاقوامی جرائم پیشہ گروہ میں 14% مشرق وسطیٰ سے،13% افریقہ سے، 9% مشرقی ایشیا سے اور 1% کا تعلق امریکا سے ہے۔

 ’یورپی مائیگرنٹ اسمگلنگ سنٹر‘  کے سربراہ روبرٹو کریپِنکو نے بتایا کہ مہاجرین کی اسمگلنگ اربوں یورو کا کاروبار ہے۔ اگرچہ یورپی یونین کی جانب سے لیبیا اور ترکی  کے ساتھ  معاہدے کے نتیجے میں مہاجرین کی یورپ آمد میں کمی تو واقع ہوئی ہے لیکن یورپی سرحدوں میں داخل ہونے والے غیر قانونی مہاجرین آج بھی ترکی اور لیبیا کے راستے کو ترجیح دیتے ہیں۔

گزشتہ سال ای یو افریقہ اجلاس میں طے ہونے والے معاہدے کے پیش نظر لیبیا سے ہزاروں مہاجرین کو اپنے آبائی وطن منتقل کیا گیا تھا۔ فرانسیسی صدر ماکروں کی جانب سے اعلان کیا گیا تھا ایسے گروہوں کے مالی اور انتظامی نیٹ ورک کوقابو کرنے کے لیے دونوں فریقین مزید معلومات کا تبادلہ کریں۔

تاہم معلومات کے تبادلے کے بارے میں کریپنکو نے اے ایف پی کو بتایا کہ  یوروپول نئے قانونی ضوابط کی وجہ سے  صرف یورپی یونین کے رکن ممالک سے معلومات کا تبادلہ کرسکتا ہے۔ جس کی وجہ سے یورو زون کے اندر مہاجرین کی اسمگلنگ پر قابو پانے میں یوروپول ایجنسی کو کامیابی حاصل رہی ہے۔

ع آ، ص ح، اے ایف پی

Print Friendly, PDF & Email
ترکی کے اسکی شہر میں یونیورسٹی میں مسلح شخص کی فائرنگ کے نتیجے میں 4 افراد ہلاک
پاکستان اور بھارت میں آبی مسائل پر ایک بار پھر تلخی بڑھ رہی ہے اور اسلام آباد نے کشن گنگا پروجیکٹ کے حوالے سے عالمی بینک سے رابطہ کر لیا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Translate News »