یوکرین کے مزاحیہ اداکار ملک کے صدر منتخب     No IMG     وزیروں کو نکالنے سے سلیکٹڈ وزیراعظم کی نااہلی نہیں چھپے گی, بلاول بھٹو زرداری     No IMG     ایران کے صدر حسن روحانی نے تہران میں سعد آباد محل میں پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کا باقاعدہ اور سرکاری طور پر استقبال     No IMG     بھارت اور چین کے مابین پیر کے روز بیجنگ میں باہمی فیصلہ کن مذاکرات کا آغاز     No IMG     بھارتی وزیر اعظم,ہمارا پائلٹ واپس نہ کیا جاتا تو اگلی رات خون خرابے کی ہوتی     No IMG     ملکی سیاسی پارٹیاں ووٹ تو غریبوں ،محنت کشوں کے نام پر لیتی ہیں مگر تحفظ جاگیرداروں اور مافیاز کو دیتی ہیں ,جواد احمد     No IMG     افغان سپریم کورٹ نے صدر کے انتخاب تک صدر اشرف غنی کی مدت صدارت میں توسیع کردی     No IMG     آزاد کشمیر میں منڈا بانڈی کے مقام پر ایک جیپ کھائی میں گرنے سے 5 افراد ہلاک     No IMG     مصرمیں صدرکےاختیارات میں اضافے کےلیے ہونےوالے تین روزہ ریفرنڈم میں ووٹ ڈالنےکا سلسلہ جاری ہے     No IMG     لاہور میں 3 منزلہ خستہ حال گھر زمین بوس ہونے کے نتیجے میں خاتون سمیت 6 افراد جاں بحق جبکہ 4 افراد زخمی     No IMG     وزیراعظم عمران خان ایران کے پہلے سرکاری دورے پر تہران پہنچ گئے     No IMG     سری لنکا میں کل ہونے والے آٹھ بم دھماکوں کے نتیجے میں 300 افراد ہلاک اور 500 زخمی     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے مکران کوسٹل ہائی وے پر دہشت گردی کی سخت مذمت کرتے ہوئے حکام سے واقعے پر رپورٹ طلب کر لی     No IMG     افغانستان اور افغان طالبان کے درمیان مذاکرات ایک مرتبہ پھر کھٹائی میں پڑتے دکھائی دے رہے ہیں     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کا افتتاح کردیا     No IMG    

یورپین یونین کا سربراہ اجلاس
تاریخ :   18-09-2018

سالزبرگ ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) مائیگریشن کے حوالے سے یورپین یونین کا سربراہ اجلاس بدھ کے روز آسٹریا کے شہر سالزبرگ میں منعقد ہو رہا ہے۔ تاہم، اس بارے میں یورپین یونین کے رکن ممالک کے درمیان گہرے اختلافات پیدا ہو گئے ہیں۔برسلز تمام سرحدوں پر یورپین یونین کے حفاظتی گارڈ تعینات

کرنے کا خواہشمند ہے، جبکہ ہنگری جیسے چند کلیدی رکن ممالک اپنی سرحدوں پر خود اپنی پولیس تعینات کرنے پر زور دیتے ہیں۔افریقہ کے 60 امیگرنٹس کو بحیرہ ٴروم میں اُن کی کشتی ڈوب جانے سے پہلے ایک ریسکیو آپریشن کے دوران بچا لیا گیا۔بحیرہ ٴروم میں اس سال اس طرح کے کئی واقعات ہو چکے ہیں۔ یورپین یونین کے رکن ممالک میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے والے امیگرنٹس کی نصف تعداد اسی راستے کو استعمال کرتی ہے۔ ایسے زیادہ تر تارکین وطن کینیا، مالی اور مراکش سے تعلق رکھتے ہیں۔اگرچہ غیر قانونی تارکین وطن کی یورپ آمد میں ہر سال 40 فیصد کمی دیکھنے میں آئی ہے، امیگریشن یورپین یونین کی پالیسی کے حوالے سے موضوع بحث رہا ہے۔سربراہ اجلاس کے میزبان ملک آسٹریا کے چانسلر سیباشین کرز نے پیر کے روز یورپین یونین کے تمام رکن ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ اپنی سرحدوں پر یورپین یونین کی بارڈر ایجنسی کا کردار بڑھائیں۔ اُن کا کہنا ہے کہ بیرونی سرحدوں کو محفوظ بنانے کیلئے یورپی یونین کے کلیدی رکن ممالک کو ہماری مدد اور حمایت کی ضرورت ہے۔ تاہم، رکن ممالک کیلئے بھی لازمی ہے کہ وہ یونین کی حمایت کو قبول کریں۔ماہرین آسٹرین چانسلر کے اس بیان کو اٹلی اور ہنگری جیسے یورپین یونین کے کلیدی رکن ممالک کیلئے ایک انتباہ قرار دیتے ہیں جو مائیگریشن کے بحران کیلئے یورپین یونین کو ذمہ دار ٹھہراتے ہیں۔ہنگری کے وزیر اعظم وکٹر اوربن نے پیر کے روز پارلیمانی ارکان سے خطاب کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ ہنگری برسلز کے سربراہ اجلاس میں شریک تمام ممالک کے مقابلے میں اپنی سرحدوں کی حفاظت بہتر انداز میں کر سکتا ہے۔ لہذا، ہنگری اپنی سرحدوں کی حفاظت خود کرنے کے حق سے دستبردار نہیں ہو گا۔’اوپن یورپ‘ نامی پالیسی تجزیاتی گروپ سے وابستہ تجزیہ کار لیو پولڈ ٹروگوٹ کہتے ہیں کہ یورپین یونین کے سربراہ اجلاس کے دوران رکن ممالک کے دو گروپوں آمنے سامنے ہوں گے۔ بقول اُن کے، ان میں سے ایک ترقی پسند ممالک کا گروپ ہے جو یورپ کو کھلا اور آزاد رکھتے ہوئے سیاسی پناہ کے خواہشمند تارکین وکن کی مدد کرنا چاہتے ہیں جبکہ دوسرے گروپ میں سخت مؤقف رکھنے والے وہ ملک شامل ہیں جو یورپ کو تارکین وطن کیلئے مکمل طور پر بند کرتے ہوئے اسے ایک قلعے کی شکل دینا چاہتے ہیں۔برطانیہ کے اصرار پر اس سربراہ اجلاس میں یورپین یونین سے برطانیہ کی علیحدگی پر بھی بحث ہو گی۔

Print Friendly, PDF & Email
وزیراعلیٰ,بلوچستان کا مہاجرین کی شہریت بارے وزیراعظم کے بیان پر تحفظات کا اظہار
وزیراعظم عمران خان کا سعودی عرب میں شاندار استقبال، روضہِ رسولﷺ پر حاضری
Translate News »