وزیراعظم عمران خان نے مکران کوسٹل ہائی وے پر دہشت گردی کی سخت مذمت کرتے ہوئے حکام سے واقعے پر رپورٹ طلب کر لی     No IMG     افغانستان اور افغان طالبان کے درمیان مذاکرات ایک مرتبہ پھر کھٹائی میں پڑتے دکھائی دے رہے ہیں     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کا افتتاح کردیا     No IMG     ایران کے وزیر خارجہ کی ترک صدر اردوغان کے ساتھ ملاقات     No IMG     عمان کے وزیر خارجہ نے اپنے ایک بیان میں شام کی عرب لیگ میں واپسی پر تاکیدکی     No IMG     سعودی عرب کی ایک کمپنی نے ترکی میں 100 ملین ڈالر کا سرمایہ لگانے کا اعلان     No IMG     روس کی سرحد پربرطانوی فوجی ہیلی کاپٹروں کی تعیناتی پر شدید رد عمل     No IMG     چین ,نے سی پیک پر بھارت کے اعتراضات کو مسترد کردیا     No IMG     چلی میں چھوٹا طیارہ ایک گھر پر گر کر تباہ ہوگیا، جس کے نتیجے میں 6 افراد ہلاک     No IMG     فیصل آباد میں جعلی اکاﺅنٹ پکڑے گئے‘بنکوں کا عملہ بھی ملوث نکلا     No IMG     حمزہ شہبازعبوری ضمانت میں توسیع کے لیے ہائی کورٹ پہنچ گئے     No IMG     عوامی مقامات پر غیر مناسب لباس ممنوع، 5 ہزار ریال جرمانہ     No IMG     عالمی بینک نے پاکستان سے جوہری پروگرام، جے ایف 17 تھنڈر، بحری آبدوزوں اور سی پیک قرضوں کی تفصیلات فراہم کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     امریکی شہری پاکستان کا غیر ضروری سفر کرنے سے گریز کریں, امریکی محکمہ خارجہ     No IMG     ملک بھر میں شدید طوفان آنے کا خدشہ     No IMG    

ڈی جی آئی ایس پی آرمیجر جنرل آصف غفور کی نیوز کانفرنس
تاریخ :   06-12-2018

راولپنڈی ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور کا کہنا ہے کہ سال دوہزار اٹھارہ میں بھارت کی جانب جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزیوں میں اضافہ ہوا ہے،بھارتی فوج شہری آبادی کو نشانہ بناتی ہے، جنگ بندی معاہدے پر دونوں ممالک کے تعلقات پر

اثرات مرتب ہوتے ہیں۔تفصیلات کے مطابق ڈی جی آئی ایس پی آرمیجرجنرل آصف غفور نے میڈیابریفنگ دیتے ہوئے کہا آج کی بریفنگ میں سرحدوں اورملک کی موجودگی صورتحال شیئرکروں ، اور پہلے لائن آف کنٹرول سے متعلق آگاہ کروں گا۔
لائن آف کنٹرول کی صورت حالڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ بھارت کی جانب سے سیزلائن کی خلاف ورزی میں اضافہ ہوا، پچھلے دو سالوں میں ایل اوسی پر سیزفائر کی خلاف ورزی میں اضافہ ہوا ہے، سیزفائرکی خلاف ورزیاں دوہزار سترہ اور اٹھارہ میں زیادہ ہوئیں، بھارت کی جانب سےسیزفائرکی خلاف ورزی کاگراف تیزی سےاوپرجارہاہے۔صرف دوہزار اٹھارہ بھارتی اشتعال انگیزی کے باعث پچپن شہری شہید جبکہ تین سو زخمی ہوچکے ہیں۔بلوچستان کے حالات کا ذکرتفصیلات کے مطابق جنرل ہیڈ کوارٹرز میں میڈیا بریفنگ کے دوران میجر جنرل آصف غفور نے بتایا کہ بلوچستان میں دہشت گردی کے واقعات میں بہت کمی واقع ہوئی ہے، پچھلے سالوں کی نسبت سال دوہزار اٹھارہ میں دو سو سے زائد فراریوں نے ہتھیار ڈالے اور خود کو قومی دھارے میں شامل کیا۔ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان میں پہاڑوں پربیٹھےلوگ واپسی کی طرف آرہےہیں، پہاڑوں پربیٹھےلوگ قومی دھارےمیں شامل ہوں اورترقی میں کرداراداکریں، پہاڑوں پر بیٹھےلوگوں نے بیرون ممالک بیٹھےعناصرسےقطع تعلق کرناشروع کردیاہے۔کراچی آپریشن کا تذکرہنیوز بریفنگ میں ڈی جی آئی ایس پی آر نے بتایا کہ گذشتہ چند سالوں میں کراچی میں امن وامان کی صورتحال میں بہت بہتری واقع ہوئی ہے، جس کا کریڈٹ پاکستان رینجرز سندھ کو جاتا ہے، جس نے جانفشانی سے کام کیا ہے اور اس شہر کی روشنیاں واپس لوٹائی ہیں جبکہ پولیس سمیت دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں نے بھی اہم کردار ادا کیا۔ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق کراچی ایک زمانے میں جرائم کی شرح کے لحاظ سے چھٹے نمبر پر تھا لیکن اب یہاں صورتحال بہت بہتر ہے، اور یہاں دہشت گردی میں 99 فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔پشتون تحفظ موومنٹ کے بارے میں بریفنگترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور نے نیوز بریفنگ میں بتایا کہ پشتون تحفظ قومی موومنٹ کی جانب سے تین مطالبات کئے گئے تھے، جن میں چیک پوسٹس میں کمی، کلیئر قرار دئیے گئے علاقوں سے مائنز کی صفائی اور لاپتہ افراد کی بازیابی۔لاپتہ افراد کی بازیابی کے مطالبے پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم نے پندرہ سال جنگ لڑی، جس کے دوران بہت سے دہشت گرد مارے بھی گئے، اس وقت بھی تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کی فورس وہاں بیٹھی ہے تو یہ کیسے ثابت ہوگا کہ لاپتہ افراد ان کی فورس میں شامل نہ ہوں، یا کسی اور جگہ لڑائی ہیں استعمال نہ ہورہے ہوں۔میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ ستر ہزار پاکستانی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں لڑتےہوئے شہید یا زخمی ہوئے، وہ بھی ہم میں سے ہی ہیں،ساتھ ہی ڈی جی آئی ایس پی آر نے واضح کیا کہ ریاست نے پی ٹی ایم والوں کے ساتھ تعاون کیا، لیکن یہ لوگ جس طرف جارہے ہیں تو کہیں ایسا نہ ہو کہ یہ لوگ وہ لائن کراس کرلیں، جس کے بعد ریاست کو اپنا زور لگا کر صورتحال کو قابو کرنا پڑے۔آپریشن رد الفساد کے دوران کی گئی کارروائیاںملک بھر میں آپریشن رد الفساد کے دوران کی گئی کارروائیوں کے اعدادشمار بتاتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر نے بتایا کہ ملک بھر میں آپریشن رد الفساد کے تحت چوالیس بڑے آپریشن کیے گئے،اس دوران ملک سے بتیس ہزار سے زائد ہتھیار چھوٹے بڑے ہتھیار کیے گئے۔

Print Friendly, PDF & Email
پاکستان کا بھارتی فضائیہ کو مکمل طور پر ناکارہ کر دینے والے ائیر ڈیفنس میزائل سسٹم
آج اعظم سواتی نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا
Translate News »