سری لنکا کے وزیراعظم مہندا راجاپاکسے مستعفی ہوگئے     No IMG     سپریم کورٹ نے افضل کھوکھر اور سیف الملوک کھوکھر کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کا حکم دے دیا     No IMG     بھارتی ارب پتی مکیشن امبانی کی شادی پر خزانوں کے منہ کھُل گئے     No IMG     ایرانی وزیر خارجہ کی قطر کے وزير اعظم سے ملاقات     No IMG     وزیر اعظم کا دہشت گردوں کا آخری حد تک پیچھا کرنے کا عزم     No IMG     فرانسیسی پولیس کا معذور افراد پر بھی ظلم و ستم     No IMG     چین کینیڈین شہریوں کو رہا کرے، امریکی وزیر خارجہ     No IMG     بھارتی ریاست کرناٹک میں زہریلی خوراک کھانے سے تقریباً ایک درجن یاتریوں کی ہلاکت     No IMG     یروشلم کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرتے ہیں، آسٹریلیا     No IMG     برطانوی وزیراعظم ٹیریزا مے کے پاس اب فقط چار آپشنز موجود ہیں۔     No IMG     سپریم کورٹ کا دہری شہریت والے ملازمین کے خلاف کارروائی کا حکم     No IMG     باردوی سرنگ کے دھماکے میں 6 سکیورٹی اہلکار ہلاک     No IMG     آئی ایم ایف سے پیکج صرف پاکستان کے مفاد کو مد نظر رکھ کر لیا جائے گا۔ وزیر خزانہ اسد عمر     No IMG     ہنگری میں غلام ایکٹ کے خلاف مظاہرے     No IMG     امریکی ایوان نمائندگان نے روہنگیا مسلمانوں پر بربریت کونسل کشی قرار دینے کی قرارداد بھاری اکثریت سے منظور     No IMG    

پی ٹی آئی حکومت کی 100 روزہ کارکردگی پر مسلم لیگ ن نے وائٹ پیپر جاری کر دیا
تاریخ :   30-11-2018

اسلام آباد ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) پاکستان مسلم لیگ(ن) نے پی ٹی آئی حکومت کی 100 روزہ کارکردگی پر وائٹ پیپر جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ 100 دن میں مہنگائی اوردرآمدات میں اضافہ جبکہ برآمدات میں کمی ہوئی، جب سے تحریک انصاف کی قیادت نے ایوان میں قدم

رکھا صرف ایک ہی چیز سمجھ میں آئی ہے اور وہ ہے ’’سو دن میں سو جھوٹ‘‘ ابتدائی 100 دنوں میں حکومتی پالیسی کس طرح کی رہی وہ کل وزیر اعظم کی تقریر سننے والوں کے چہروں سے عیاں تھی، وزیراعظم نے ملک کی معیشت بہتر کرنے کے لیے تین حیران کن تجاویز دی ہیں، پہلی تجویز بھینس کا بچہ یعنی کٹا پالنے کی ہے، دوسری دیسی مرغ پالنے کی ہے اور بتایا کہ حکومت ٹیکے بھی لگا کر دے گی جبکہ تیسری تجویز سیاحت کی مناسبت سے دی گئی ہے۔
سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی ،احسن اقبال ،مریم اورنگزیب ،رانا ثناء اللہ سمیت دیگر لیگی قیادت کے ہمراہ حکومت کی 100روزہ کارکردگی پر مسلم لیگ کی جانب سے وائٹ پیپر جاری کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ روز ملک کے وزیر اعظم نے اپنی حکومت کی 100 روزہ کارکردگی کے لیے ایک ایونٹ منعقد کرایا جس میں صرف گانے بہت اچھے تھے، ایسی تقریب پہلے کسی بھی وزیر اعظم نے نہیں کی، اخبارات میں کروڑوں روپے کے اشہارات بھی دیے گئے ،ان پیسوں کا حساب کون دے گا؟ عمران خان کی تقریر میں ٹیکس کے حوالے سے کوئی بات نہیں کی گئی، ملکی مسائل کا واحد حل ٹیکس چوری کی روک تھام ہے مگر حکومت اس طرف توجہ ہی نہیں دے رہی ہے،موجودہ حکومت بتائے کہ بیرون ملک پیسہ کن کن لوگوں کے پاس ہے؟ 30 ارب سے زائد اثاثے ملک سے باہر ہیں،جس رقم کی نشاندہی کی گئی ہے وہ باہر بھی لائی جائے، ہم منی لانڈرنگ کی گئی رقم کو واپس لانے کے لیے حکومت کے ساتھ ہیں،افسوس ہے کہ ایک کروڑ نوکریوں اور 50 لاکھ گھروں کی تعمیر وزیر اعظم کی تقریر کا حصہ نہ تھی، 100 دن میں مہنگائی میں اضافہ درآمدات میں اضافہ جبکہ برآمدات میں کمی ہوئی،جب سے پی ٹی آئی قیادت نے ایوان میں قدم رکھا صرف ایک ہی چیز سمجھ میں آئی ہے اور وہ ہے سو دن میں سو جھوٹ۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ وزیراعظم نے ملک کی معیشت بہتر کرنے کے لیے تین حیران کن تجاویز دی ہیں، پہلی تجویز بھینس کا بچہ یعنی کٹا پالنے کی ہے، دوسری دیسی مرغ پالنے کی ہے اور بتایا کہ حکومت ٹیکے بھی لگا کر دے گی جبکہ تیسری تجویز سیاحت کی مناسبت سے دی گئی ہے۔سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہماری حکومت نے ٹیکس ایمنسٹی سکیم دی تھی، اب بھی وقت ہے حکومت ہماری ایمنسٹی سکیم پر عمل کرے۔شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ اس کے علاوہ بیرون ملک سے ترسیلات زر میں ریکارڈ کمی ہوئی، ترقیاتی منصوبوں کے بجٹ پر کٹ لگایا گیا، ابتدائی 100 دنوں میں حکومتی پالیسی کس طرح کی رہی وہ کل وزیر اعظم کی تقریر سننے والوں کے چہروں سے عیاں تھی۔
اس موقع پر سابق وزیر داخلہ احسن اقبال کا کہنا تھا کہ آج کا جاری وائٹ پیپر ثابت کرے گا کہ عمران خان کے پاس نہ اہلیت ہے، نہ ان کو چیلنجز کا احساس ہے، وزیراعظم عمران خان سو دن گزر جانے کے بعد بھی یہ نہ جان پائے کہ رولز آف بزنس کیا ہے؟?وزیراعظم جواب دہ نہیں کہ مرغیوں کی افزائش کیسے ہوتی ہے اور کٹے کتنے صحت مند ہیں؟مرغیوں کی افزائش اور کٹوں کو صحت مند رکھنے کی ذمے داری وزیراعلیٰ کی ہوتی ہے۔سابق وزیر داخلہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ پی ٹی آئی قیادت 100 دن اپنے گھروں کی آسائشوں پر لاکھوں روپے خرچ کرنے میں مصروف رہے، ہم حکومت میں ہوتے تو ایک روپیہ لگائے بغیر ان گھروں میں پانچ سال رہ لیتے۔ان کا کہنا تھا کہ یہ جھوٹ اور دھوکہ ہے جو قوم کے ساتھ کیا جا رہا ہے، گورنر ہاؤس کو چڑیا گھر بنا کر کوئی تبدیلی نہیں آئیگی،عمران خان نے کہا تھا کہ 90 دن میں ملک سے کرپشن ختم کر دوں گا البتہ 100 دن میں خیبرپختونخوا میں احتساب کمیشن کو رول بیک ضرور کر دیا گیا ہے۔احسن اقبال نے مزید کہا کہ عمران خان کی تقریر سن کر بہت خوف زدہ ہوا کیونکہ حکومتی ٹیم کے پاس کوئی پالیسی اور ویژن نہیں ہے۔سابق وزیر داخلہ نے کہا کہ عجیب بات تو یہ ہے کہ عمران خان کو یقین ہی نہیں آیا کہ وہ وزیراعظم بن گئے ہیں، عمران خان کو یہ نہیں پتہ وفاق اور صوبے کے ادارے کون سے ہیں، لائیو سٹاک اور پولٹری صوبائی حکومت کے ادارے ہیں، سب نے دیکھا کہ وزیراعظم 100 دن سیرسپاٹوں میں مصروف رہے۔احسن اقبال کا پریس کانفرنس میں مزید کہنا تھا کہ حکومت ترقیاتی منصوبوں کی طرف بھی توجہ دے، لاہور ملتان موٹروے مکمل ہو چکی ہے، لاہور کالا شاہ کاکو لنک مکمل ہو چکا ہے۔ کراچی حیدرآباد موٹروے کا ٹینڈر ہو چکا ہے، سمجھ سے بالاتر ہے کہ حکومت ان منصوبوں کو عوام کیلیے کیوں نہیں کھول رہی؟۔
سابق صوبائی وزیر قانون رانا ثناء اللہ کا پریس کانفرنس میں کہنا تھا کہ اللہ خیر اسی وقت کرتا ہے جب فرد اور قوم خود خیر کے لیے فکر مند ہوں، سو روزہ تقریب کے موقع پر تقریر میں عمران خان نے جو وضاحت کی اس سے انہوں نے اپنی ذہنی حالت واضح کر دی ہے یعنی وہ اکثر بھول جاتے ہیں کہ وہ وزیراعظم ہیں۔رانا ثناء اللہ نے حکومتی پالیسی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ کٹے اور مرغیوں کی بات ان کی ذہنی حالت ظاہر کرچکی ہے، چیف جسٹس سے گزارش ہے کہ وہ وزیراعظم کی ذہنی حالت کا نوٹس لیں، ان کا جلد علاج ہونا چاہیے۔

Print Friendly, PDF & Email
جی20 سربراہی کانفرنس کا آغاز ہو گیا
پاکستان کوبھارت سے دوستی کرنی ہے تو پہلے خود کو اسلامی ملک کی بجائے سیکولر ملک بنائے ،بھارتی آرمی چیف
Translate News »