وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر سے پاک برطانیہ اور پاکستان سکاٹ لینڈ بزنس کونسل کے وفد کی ملاقات     No IMG     حکومت کو شدید مشکلات کا سامنا آئی ایم ایف نے بیل آوٹ پیکج کیلئے اپنی شرائط سخت کردیں     No IMG     آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا آرمی سروس کور سینٹر نوشہرہ کا دورہ     No IMG     جاپانی وزیراعظم شینزو آبے آسٹریلیا پہنچ گئے     No IMG     کیلیفورنیا ,کی جنگلاتی آگ ، ہلاکتوں کی تعداد 63 ہو گئی     No IMG     برطانوی وزیراعظم کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک اگلے ہفتے پیش ہو سکتی ہے     No IMG     ملائیشین ہائی کمشنر اکرام بن محمد ابراہیم کی وزیراعظم عمران خان سے ملاقات     No IMG     امریکی بلیک میلنگ کا مقصد حماس کی قیادت کو نشانہ بنانا ہے     No IMG     زمبابوے بس میں گیس سیلنڈر پھٹنے سے 42 افراد ہلاک جبکہ متعدد افراد زخمی ہوگئے     No IMG     زلفی بخاری کیس: ’دوستی پر معاملات نہیں چلیں گے‘ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار     No IMG     غزہ پرحملے, اسرائیل کو 40 گھنٹوں میں 33 ملین ڈالر کا نقصان     No IMG     تنخواہیں واپس لے لیں سپریم کورٹ کاحکم آتے ہی افسران سیدھے ہو گئے     No IMG     پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان ابوظہبی ٹیسٹ کا پہلا دن باؤلرز کے نام     No IMG     چودھری پرویز الٰہی اپنے ہی جال میں پھنس گئے     No IMG     ق لیگ نے پاکستان تحریک انصاف کیخلاف بغاوت کردی     No IMG    

پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ میں تباہ کن بولنگ کی بدولت پاکستان کی آسٹریلیا کے خلاف 66 رنز سے جیت
تاریخ :   24-10-2018

ابو ظہبی ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) میں پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ میں آسٹریلیا کو پاکستان کے خلاف جیت کے لیے 156 رنز کا ہدف ملا لیکن جارحانہ پاکستانی بولنگ کی تاب نہ لاتے ہوئے آسٹریلوی بیٹنگ 88 رنز بنا کر ریت کی دیوار ثابت ہوئی اور 66 رنز سے میچ ہار گئی۔

پاکستان کی جانب سے عماد وسیم نے ٹیم میں واپسی کو درست ثابت کیا اور چار اوورز میں 20 رنز دے کر تین کھلاڑی آؤٹ کیے اور مین آف دا میچ کے حقدار بنے۔
ان کے علاوہ فہیم اشرف اور شاہین آفریدی نے دو، دو جبکہ حسن علی اور شاداب خان نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔
آسٹریلیا کی جانب سے صرف تین کھلاڑی دہرے ہندسے میں داخل ہوئے اور نیل کولٹر نائل نے سب سے زیادہ 34 رنز بنائے۔
یہ پہلا موقع نہیں تھا جب آسٹریلیا نے پاکستان کے خلاف اس قدر خراب بیٹنگ کی ہو۔ ٹی ٹوئنٹی کی تاریخ میں آسٹریلیا کے دس کم ترین سکورز میں سے پانچ پاکستان کے خلاف ہیں اور آج کے بنائے ہوئے 88 رنز کم ترین ہیں۔
لیکن جب پاکستان کی اننگز کا آغاز ہوا تھا تو یقیناً آسٹریلوی کپتان آرون فنچ خوشی سے پھلے نہیں سما رہے ہوں گے کیونکہ ان کی ٹیم نے پاکستان کو صرف 155 تک محدود رکھا۔
لیکن جب ان کی بیٹنگ شروع ہوئی تو وہ پاکستان کے بولنگ اٹیک کے سامنے ٹک نہ سکی۔
جب آسٹریلوی اننگز کا آغاز ہوا تو ٹیم میں واپس آنے والے عماد وسیم نے پہلا اوور کرایا جس میں انھوں نے تیسری گیند پر آرون فنچ کو صفر اور پھر آخری گیند پر ڈارسی شارٹ کو بھی آؤٹ کر دیا جنھوں نے چار رنز بنائے تھے۔
اس کے بعد اگلے اوورز میں کرس لُن اور گلین میکس ویل نے کوشش کی کے شراکت قائم کریں لیکن چوتھے اوور میں فہیم اشرف نے میکسویل کو بولڈ کر دیا جو صرف دو رنز بنا سکے۔
نئے آنے والے بیٹسمین بین میکڈرمٹ دو گیندوں میں ہی پویلین لوٹ گئے جب صفر پر وہ رن آؤٹ ہو گئے۔
پانچویں اوور میں عماد وسیم کو اپنی تیسری کامیابی ملی جب الیکس کیری بھی صرف ایک ہی رن بنا سکے جب سرفراز احمد نے ان کا کیچ پکڑ لیا۔
چھٹے اوور میں بھی یہ سلسلہ جاری رہا اور فہیم اشرف نے بھی اپنی دوسری وکٹ حاصل کر لی جب کرس لِن 14 رنز بنا کر بولڈ ہو گئے۔
پاور پلے کے اختتام تک پاکستان نے آسٹریلیا کے چھ کھلاڑی آؤٹ کر دیے تھے اور انھوں نے صرف 26 رنز بنائے تھے۔
پہلے چھ اوورز میں چھ وکٹیں گرنے کے بعد ایشٹن ایگر اور نیتھن کولٹر نائل نے ٹیم کو سنبھالنے کی کچھ کوشش کی اور سات اوورز میں 38 رنز کی شراکت قائم کی لیکن 13ویں اوور میں حسن علی نے ایشٹن ایگر کو 19 رنز پر وکٹوں کے پیچھے کیچ آؤٹ کروا دیا۔
ایشٹن ایگر کے بعد بھی آؤٹ ہونے کا سلسلہ جاری رہا اور ایڈم زامپا تین رنز، اینڈریو ٹائی چھ رنز اور آخر میں نیتھن کولٹر نائل 34 رنز پر آؤٹ ہو گئے اور پوری ٹیم کا قصہ 17ویں اوور میں تمام ہو گیا۔
اس سے قبل پہلی اننگز میں پاکستانی بلے بازوں کی کارکردگی غیر تسلی بخش رہی اور ماسوائے بابر اعظم اور محمد حفیظ کے کوئی بھی بلے باز آسٹریلین اٹیک کا سامنا نہ کرسکا۔
14ویں اوور میں محمد حفیظ کے آوٹ ہونے کے بعد پاکستان کے اگلے سات کھلاڑی مجموعی سکور میں صرف 30 رن کا ہی اضافہ کرسکے۔
جب پاکستان کی طرف سے بابر اعظم اور فخر زمان نے جب اننگز کی شروعات کی تو دونوں بلے بازوں نے پہلے تین اووروں میں جارحانہ انداز اپنائے رکھا۔ پاکستان کو پہلا نقصان فخر زمان کی صورت میں اٹھانا پڑا۔
وہ نیتھن کاؤنٹر نائل کی 148 میل کی رفتار سے آتی ہوئی گیند پر ہک شارٹ کھیلنے کی کوشش میں کوور پر کیچ آؤٹ ہوگئے۔ انھوں نے 14 رن سکور کیے۔
اس کے بعد محمد حفیظ اور بابر عاظم نے دوسری وکٹ کی شراکت میں 73 رن سکور کیے۔ محمد حفیظ 39 کے نفرادی سکور پر ڈارسی شارٹ کی گیند پر میک ڈر موٹ کے ہاتھوں کیچ ہوگئے۔ انھوں نے ڈارسی کی گیند پر پل شارٹ مارنے کی کوشش کی اور لانگ آن پر دے بیٹھے۔
نمبر 4 پر بیٹنگ کے لیے آنے والے آصف علی صرف تین گیندیں ہی کھیل سکے اور اگلے ہی اوور میں آیڈم زیمپا نے انھیں 2 کے سکور پر ایل بی ڈبلیو کردیا۔
پیچھے آنے والے طلعت حسین 9 جبکہ فحیم اشرف صفر رن بنا سکے، ان دونوں بیٹسمینوں کو یکے بعد دیگرے انیڈریو ٹائی نے آوٹ کیا۔
کپتان سرفراز احمد اور سپنر شاداب خان بھی کوئی رن نا بنا سکے۔ ان دونوں کی وکٹیں بلی سٹینلیک نے لیں۔
ابوظہبی میں ہونے والے اس میچ میں پاکستان کی طرف سے عماد وسیم اس سال اپنا پہلا ٹی ٹوئنٹی میچ کھیل رہے ہیں۔ عماد وسیم فٹنس کے مسائل کی وجہ سے اس سال انٹرنیشنل کرکٹ سے دور رہے ہیں۔

پاکستان کی طرف سے فخر زمان محمد حفیظ، بابر اعظم، حسین طلعت، سرفراز احمد (کپتان ۔ وکٹ کیپر)، آصف علی، عماد وسیم، شاداب خان، فہیم اشرف، حسن علی اور شاہین آفریدی کھیل رہے ہیں۔

جبکہ آسٹریلیا کی ٹیم میں ایرن فنچ (کپتان)، ڈارسی شارٹ، کرس لِن، گلین میکسویل، بین میک ڈرموٹ، ایلکس کیری (وکٹ کیپر) ایشٹن ایگر، نیتھن نائل، اینڈریو ٹائی، ایڈم زیمپا اور بلی سٹینلیک کھیلیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
سابق امریکی صدر بل کلنٹن کے گھر سے بم برآمد
وفاقی محکمہ اطلاعات میں آگ لگ گئی جس کے نتیجے میں بہت سا ریکارڈ جل گیا
Translate News »