79 واں یوم پاکستان: وفاقی دارالحکومت میں مسلح افواج کی شاندار پریڈ     No IMG     پاک فوج نے ایک آپریشن میں 4 مغوی ایرانی فوجیوں کو بازیاب کرالیا     No IMG     دنیا بھر میں آج ہندو برادری اپنا مذہبی تہوار ہولی منا رہی ہے     No IMG     افغانستان کے صوبے ہرات میں سیلاب سے 13 افراد کے جاں بحق ہونے سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 63 ہوگئی     No IMG     لیبیا میں پناہ گزینوں کو لے جانے والی کشتی ڈوب گئی جس کے نتیجے میں 9 افراد ہلاک     No IMG     اسرائیلی دہشت گردی، غرب اردن میں مزید3 فلسطینیوں کو شہید کردیا     No IMG     پیپلز پارٹی کےچیئرمین نے 3 وفاقی وزرا کو فارغ کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     وزیراعظم عمران خان کی ہولی کے تہوار پر ہندو برادی کو مبارک باد     No IMG     سابق وزیراعظم نوازشریف نے ای سی ایل سے نام نکالنے کی درخواست دائر کردی     No IMG     سمجھوتہ ایکسپریس کیس کا فیصلہ 12 سال بعد بھی تاخیر کا شکار     No IMG     وزیر اعظم آئین کے آرٹیکل 214 کی شق دو اے پر عمل کرنے میں ناکام     No IMG     روس کے وزیر دفاع سرگئی شویگو نے شام کے صدر بشار اسد سے ملاقات     No IMG     بھارت اور پاکستان متنازع معاملات مذاکرات کے مذاکرات کے ذریعے حل کریں,چین     No IMG     بریگزیٹ پرٹریزامے کی حکمت عملی انتہائی کمزورہے، ٹرمپ     No IMG     امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو کی کویت کے بادشاہ سے ملاقات     No IMG    

پاک فوج سے اختلاف رائے رہا، قومی ادارہ ہے عدلیہ کے فیصلوں کی مخالفت کرتا ہوں,مولانا فضل الرحمن
تاریخ :   23-11-2017

اسلام آباد (ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو)جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ پاک فوج سے اختلاف رائے رہا، قومی ادارہ ہے نرم گرم حالات چلتے رہتے ہیں۔ فوج کو سیاست میں فریق نہیں سمجھتا۔ عدلیہ کے فیصلوں کی مخالفت کرتا ہوں ایسے فیصلوں سے ملک پر اچھے اثرات مرتب نہیں ہوتے۔ پاکستانی سیاسی کلچر بے حیائی میں ڈوب گیا ہے۔گزشتہ روز نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ ملک میں امن کے بغیر ملکی معیشت کسی صورت میں بہتر نہیں ہو سکتی۔ بہت سے ممالک جو پاکستان سے پیچھے تھے آج ہم سے آگے نکل چکے ہیں۔ افغانستان جنگ میں ہم سے غلطیاں ہوئیں ہیں۔ افغانیوں کے لئے پاکستانی سر زمین آزادانہ کھول دی جو ہمارے لئے پریشانی کا باعث بنی۔پاک افغان بہترین تعلق دونوں ممالک کی عوام کی ترقی کا ذریعہ ہے۔ دنیا ترقی کے لئے سمٹ رہی ہے۔ اقتصادی نقشہ تبدیل ہو رہا ہے۔ چین دنیا کی ابھرتی ہوئی معاشی ترقی بن رہا ہے۔ ہمارے ادارے ملک میں امن و امان کے خیال کے لئے قربانیاں دے رہے ہیں۔ پاکستانی عوام اپنی دفاعی صلاحیت پر بھرپور اعتماد کرتی ہے۔ پاک افواج کی صلاحیتوں میں اضافہ ہوتا رہا ہے۔مارشل لاء کے نفاذ پر اپنی فوج سے ہم نے اختلاف رائے کیا۔ پاک فوج ہمارا ادارہ ہے۔ نرم گرم حالات چلتے رہتے ہیں۔ پاک فوج کو سیاست میں اپنا فریق نہیں سمجھنا چاہیئے۔ سابق آرمی چیف جنرل (ر) راحیل شریف نے ملک میں قیام امن کے لئے بہت قربانیاں دی ہیں۔ جنرل قمر باجوہ نے بھی قیام امن کے لئے بہترین کام کر دیئے ہیں۔ پاک فوج ہمارا سیاسی اور مذاکرات کے راستوں کی حمایت کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ میرے عدلیہ کے کچھ فیصلوں پر تحفظات ہیں۔ اداروں کی جانب سے ہر وزیراعظم کو وجوہات تلاش کر کے نکالنا درست نہیں ہے۔ عدلیہ کی جانب سے نواز شریف اور یوسف رضا گیلانی کو نا اہل کرنے پر سیاسی حلقوں میں تحفظات ہیں۔ پہلے بھی اس قسم کے فیصلوں کے حق نہیں تھا اور آجب ھی مخالفت کرتا ہوں ۔ اس قسم کے فیصلوں سے ملک کے اوپر اچھے اثرات مرتب نہیں ہوئے۔میں نے پارلیمنٹ میں 1988ء میں پہلی بار قدم رکھا۔ کتنی حکومتیں میرے سامنے بنیں اور کتنی ہی حکومتیں گئیں۔ میں اس بات کا بالکل قائل نہیں کہ کسی کے ساتھ شدت سے لڑا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ میری ہمیشہ کوشش رہی ہے کہ تمام پارٹیوں کو ایکد وسرے کے قریب رکھوں۔ مسلم لیگ ن اور پیپل زپارٹی چار سال افہام تفہیم سے چلتی رہی ہیں۔ مگر اب پانچ سال الیکشن کا ہے دونوں جماعتوں نے الیکشن میں جانا ہے اور الیکشن کی تیاری میں مصروف عمل ہیں۔مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ ہمارا پورا سیاسی کلچر بے حیائی میں ڈوبا ہوا ہے۔ اس ملک میں ہم شریعت کے حوالے سے بات کریں تو ہمیں تنگ نظر کہا جاتاہے۔ مقبوضہ میں بھارتی افواج کے مظالم جاری ہے کشمیری قوم آزادی کے لئے قربانیاں دے رہے ہیں۔ کشمیری قوم کا خون بہہ رہا ہے۔ کشمیری قربانی والی قوم ہے ۔ فحش پروگرام پسند نہیں کرتے۔۔

Print Friendly, PDF & Email
وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے کہا ہے کہ تبدیلی لانے والوں نے اپنا تمام وقت دھرنوں اور منفی سیاست میں برباد کیا
سپریم کورٹ نے حکم دیا ہے کہ دھرنا کرنے والوں کا محاصرہ کر لیا جائے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Translate News »