وزیراعظم عمران خان نے مکران کوسٹل ہائی وے پر دہشت گردی کی سخت مذمت کرتے ہوئے حکام سے واقعے پر رپورٹ طلب کر لی     No IMG     افغانستان اور افغان طالبان کے درمیان مذاکرات ایک مرتبہ پھر کھٹائی میں پڑتے دکھائی دے رہے ہیں     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کا افتتاح کردیا     No IMG     ایران کے وزیر خارجہ کی ترک صدر اردوغان کے ساتھ ملاقات     No IMG     عمان کے وزیر خارجہ نے اپنے ایک بیان میں شام کی عرب لیگ میں واپسی پر تاکیدکی     No IMG     سعودی عرب کی ایک کمپنی نے ترکی میں 100 ملین ڈالر کا سرمایہ لگانے کا اعلان     No IMG     روس کی سرحد پربرطانوی فوجی ہیلی کاپٹروں کی تعیناتی پر شدید رد عمل     No IMG     چین ,نے سی پیک پر بھارت کے اعتراضات کو مسترد کردیا     No IMG     چلی میں چھوٹا طیارہ ایک گھر پر گر کر تباہ ہوگیا، جس کے نتیجے میں 6 افراد ہلاک     No IMG     فیصل آباد میں جعلی اکاﺅنٹ پکڑے گئے‘بنکوں کا عملہ بھی ملوث نکلا     No IMG     حمزہ شہبازعبوری ضمانت میں توسیع کے لیے ہائی کورٹ پہنچ گئے     No IMG     عوامی مقامات پر غیر مناسب لباس ممنوع، 5 ہزار ریال جرمانہ     No IMG     عالمی بینک نے پاکستان سے جوہری پروگرام، جے ایف 17 تھنڈر، بحری آبدوزوں اور سی پیک قرضوں کی تفصیلات فراہم کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     امریکی شہری پاکستان کا غیر ضروری سفر کرنے سے گریز کریں, امریکی محکمہ خارجہ     No IMG     ملک بھر میں شدید طوفان آنے کا خدشہ     No IMG    

پاکستانی لڑکی مس انگلینڈ کا مقابلہ نہ جیت سکی
تاریخ :   06-09-2018

نوٹنگھم شائر ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) مس انگلینڈ کے مقابلے میں پہلی بار ایک ایسی لڑکی بھی حصہ لیا جو حجاب پہنتی ہے۔ لیکن وہ مقابلہ جیتنے میں ناکام رہی۔مس انگلینڈ کا ٹائیٹل نیوکیسل سے مقابلہ حسن جیت کر آنے والی علیشا کوئی نے جیت لیا۔ اس سے پہلے منتظمین نے میڈیا کو بتایا کہ مس انگلینڈ

کے مقابلے میں شامل 50 لڑکیوں میں سارا افتخار بھی شامل ہے۔ وہ مسلمان ہے اور اس کا تعلق پاکستان سے ہے۔برطانیہ کے روزنامے ڈیلی میل نے مس انگلینڈ مقابلے کی ترجمان اینجی بریسلی کے حوالے سے بتایا کہ مقابلے میں مس ہینڈرز فیلڈ بھی حصہ لے رہی ہیں جو حجاب پہننے والی لڑکی ہے۔سارہ انگلینڈ کے شمالی شہر ہینڈرز فیلڈ کا مقابلہ جیت کر مس انگلینڈ کے مرحلے میں پہنچی تھیں۔سارہ افتحار کی عمر 20 سال ہے۔ وہ لاء کی طالبہ ہیں اور میک اپ آرٹسٹ کے طور پر بھی کام کرتی ہیں۔وہ پاکستانی لباس میں اپنی تصویریں سوشل میڈیا پر شیئر کرتی رہتی ہیں۔انہوں نے میڈیا کو بتایا کہ میں مس انگلینڈ کے مقابلے میں حصہ لینے والی پہلی ایسی لڑکی ہوں جو حجاب بھی پہنتی ہے۔ اس مقابلے میں ہم سب کے لیے یکساں مواقع ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ اگر میں اپنا جسم ڈھانپتی ہوں اور لباس کے معاملے میں اعتدال سے کام لیتی ہوں تو اس میں کیا مسئلہ ہے۔ میں مقابلے میں حصہ لینے والی دوسری لڑکیوں جیسی ہوں۔نوٹنگھم شائر کے کیلھم ہال میں مس انگلینڈ کے ٹائیٹل کے لیے دوسرے مرحلے کا مقابلہ ہوا۔ جس میں پہلا مرحلہ جیت کر آنے والی 50 لڑکیاں اسٹیج پر کیٹ واک کیا۔ منگل کی رات گیارہ بجے تک لوگ مقابلے کی ووٹنگ میں اپنی رائے ٹیکسٹ کرنے کے لیے کہا گیا تھا۔ مس ورلڈ کا مقابلہ برائے 2018 سال کے آخر میں چین کے شہر سینیا میں ہو گا۔مس ورلڈ کے مقابلوں کا آغاز 1951 میں ہوا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
حکومت نے وزیراعظم معائنہ کمیشن کے 6 ارکان فارغ کر دیئے
بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے خلاف بہت بڑا احتجاجی مظاہرہ
Translate News »