مسلم لیگ ق نے کا تحریک انصاف کے رویے پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کو تحفظات سے آگاہ کرنے کا فیصلہ     No IMG     تحریک انصاف نے سابق صدرآصف علی زرداری کی نااہلی کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے سانحہ ساہیوال پر بغیر تحقیقات کے بیانات دینے پر وزرا اور پنجاب پولیس پر سخت اظہار برہمی     No IMG     وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری کی جسٹس ثاقب نثارپرتنقید، موجود چیف جسٹس کی تعریف     No IMG     برطانیہ میں بھی برف باری سے شدید سردی     No IMG     برطانیہ کے سابق وزیراعظم کے جان میجر نے موجودہ وزیرِاعظم تھریسا مے سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ یورپ سے علیحدگی (بریگزٹ) پر ریڈ لائن سے پیچھے ہٹ جائیں     No IMG     میکسیکو میں پیٹرول کی پائپ لائن میں دھماکے اور آگ لگنے کے حادثے میں ہلاکتوں کی تعداد 73 ہوگئی     No IMG     امریکی سینیٹر لنزے گراہم کی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات     No IMG     سی ٹی ڈی کے مطابق ذیشان کا تعلق داعش سے تھا ,صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت     No IMG     وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کو معلوم ہی نہیں پھولوں کا گلدستہ کہاں پیش کرنا ہے کہاں نہیں؟     No IMG     لاہورمیں شہریوں نے پولیس کی دھلائی کر ڈالی، بھاگ کر جان بچائی     No IMG     وزارتِ تجارت نےکاروں کی درآمد پر لگائی جانی والی پابندیوں پر نظر ثانی کرتے ہوئے انہیں مزید سخت کردیا     No IMG     خواتین کے مساوی حقوق اور تشدد کے خاتمے کے لیے امریکہ، برطانیہ سمیت مختلف ممالک میں خواتین کی جانب سے ریلیاں نکالی گئیں۔     No IMG     فرانس میں صدر میکروں کی حکومت کے خلاف پیلی جیکٹ والوں کا احتجاج اس ہفتے بھی جاری رہا، کئی مقامات پر پولیس اور مظاہرین میں جھڑپیں     No IMG     وزیراعلیٰ پنجاب نے اعلیٰ سطحی اجلاس طلب کرلیا     No IMG    

وزیراعظم عمران خان کی سعودی فرمانروا اور ولی عہد سے ملاقاتیں
تاریخ :   19-09-2018

الریاض ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے اپنے دورہٴ سعودی عرب میں سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد محمد بن سلمان سے ملاقات کی ہے۔دورہ سعودی عرب کے دوسرے روز وزیر اعظم عمران خان شاہی محل پہنچے تو ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا۔ وزیر اعظم

کو گارڈ آف آنر بھی پیش کیا گیا۔سرکاری ذرائع کے مطابق، وزیر اعظم نے خادمین الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے ملاقات کے دوران دوطرفہ معاشی تعلقات، باہمی دلچسپی کے امور، امت مسلمہ کو درپیش چیلنجوں اور اقتصادی تعاون میں مزید وسعت سمیت دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا۔وزیر اعظم اور ان کے وفد نے اعلیٰ سعودی حکام سے بھی ملاقاتیں کیں۔سعودی وزیر توانائی خالد الفالح اور صدر سعودی انوسٹمنٹ فنڈ اور دیگر سے ملاقات کے دوران وزیر اعظم عمران خان کے ہمراہ وزیر خزانہ اسد عمر، مشیر تجارت عبدالرزاق داوٴد، سیکرٹری خارجہ اور سعودی عرب میں پاکستان کے سفیر خان ہشام بن صدیق بھی موجود تھے۔ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور، دوطرفہ تعلقات، تجارت، سرمایہ کاری اور اقتصادی تعلقات کے امور پر تبادلہٴ خیال کیا گیا۔ دونوں ممالک کے درمیان تجارتی رابطے مزید بہتر کرنے پر بھی غورکیا گیا۔ملاقات کے دوران سعودی وزیر نے وزیر اعظم سے خانہ کعبہ کے اندر جانے کے تجربے سے متعلق پوچھا تو انہوں نے جواب دیا کہ یہ ہمارا پہلا اور بہترین دورہ ہے۔وزیر اعظم عمران خان سے اسلامی تعاون تنظیم کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر یوسف العثیمین نے بھی ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ اور پاکستانی سفیر ہشام بن صدیق موجود تھے۔ اس موقع پر باہمی دلچسپی کے امور اور مسلم امہ کو درپیش چیلنجوں پر گفتگو کی گئی۔وزیر اعظم عمران خان نے سعودی فرمانروا کے علاوہ سعودی وزیر دفاع اور ولی عہد محمد بن سلمان سے بھی ملاقات کی جس میں دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کے حوالے سے بات چیت کی گئی، محمد بن سلمان سعودی فرمانروا کے بعد سب سے اہم شخصیت مانے جاتے ہیں اور گذشتہ کچھ عرصہ میں عملی طور پر محمد بن سلمان ہی تمام اہم فیصلوں میں نظر آتے ہیں۔جدہ کے شاہ فیصل محل میں سعودی عرب میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے ارکان سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ اوورسیز وزارت اس انداز میں تشکیل دی جائے گی کہ یہ صحیح معنوں میں پاکستانیوں اور سرمایہ کاروں کی خدمت کر سکے اور ان کے مسائل کو حل کرنے کی کوشش کرے، اوورسیز پاکستانیوں میں بڑی صلاحیت ہے اور ھم ان کی صلاحیتوں سے بھرپور فائدہ حاصل کریں گے۔سعودی عرب کے دورہ کے بعد وزیر اعظم عمران خان اور ان کا وفد متحدہ عرب امارات پہنچا جہاں ائیرپورٹ پر متحدہ عرب امارات کے ولی عہد شیخ محمد بن زید النیہان نے ان کا استقبال کیا۔ عمران خان شاہی محل پہنچے جہاں انہوں نے متحدہ عرب امارات کے ولی عہد سے تفصیلی گفت گو کی۔ اس موقع پر ملاقات میں عرب امارات کے نائب وزیر اعظم اور وزیر داخلہ، وزیرِ خارجہ، نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزر، وزیر برائے صدارتی امور موجود تھے۔ان ملاقاتوں کے دوران دونوں ممالک کے ایک دوسرے کے ساتھ تعلقات کے فروغ کے حوالے سے بات چیت کی گئی۔پاکستان اور متحدہ عرب امارات کے درمیان گذشتہ کچھ عرصہ میں تعلقات کشیدہ رہے جس وقت یمن میں فوج نہ بھجوانے کے معاملہ پر اماراتی وزیر نے پاکستان کے حوالے سے سخت بیان دیا جس پر اس وقت کے وزیر داخلہ چوہدری نثار نے پریس کانفرنس میں سخت جواب دیا جس کے بعد دونوں ممالک کے درمیان تعلقات سرد مہری کا شکار تھے۔وزیر اعظم عمران خان اپنے اس دو روزہ دورہ کے بعد پاکستان روانہ ہوگئے ہیں۔اس دورہ کے دوران پاکستان کو کوئی مالی معاونت حاصل ہوئی یا سعودی عرب کی طرف سے کوئی یقین دہانی کروائی گئی، اس حوالے سے تاحال کوئی تفصیل سامنے نہیں آ سکی۔ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل سے بدھ کے روز جب اس بارے میں سوال کیا گیا تو انہوں نے بھی مکمل لاعلمی کا اظہار کیا۔

Print Friendly, PDF & Email
ریلوے کا ٹکٹوں میں اضافے کا فیصلہ
انڈیا نے پاکستان کو8 وکٹوں سے شکست دے دی
Translate News »