آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ پاکستان کسی بھی غیر متوقع صورتحال سے نمٹنے کے لیے تیار ہے     No IMG     نیازی صاحب کی نااہلی نے پاکستان کو ایشیا کی بدترین معیشت بنا دیا,مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف     No IMG     ایران سے بڑھتی کشیدگی کے باعث امریکا کی جانب سے اپنی ائیرلائنز کو خلیجی فضائی حدود میں محتاط رہنے کی ہدایت     No IMG     آصف علی زرداری کی مولانا فضل الرحمان سے ملاقات     No IMG     سمندر میں تیل، گیس کے ذخائر نہ مل سکے، ڈرلنگ روک دی گئی, ندیم بابر     No IMG     شامی فوج کے فضائی دفاعی سسٹم نے دارالحکومت دمشق کے جنوب مغرب میں اسرائیل کا ڈرون کو مار گرایا     No IMG     لالہ موسی میں قمر زمان کائرہ کے بیٹے اسامہ قمر اور ان کے دوست حمزہ آہوں سسکیوں میں سپرد خاک     No IMG     ملک چلانے کے لئے اسی قوم سے پیسہ اکٹھا کر کے دکھاؤں گا,وزیراعظم عمران خان     No IMG     عوام کو پتہ چلا کہ معاشی بدحالی کیا ہوتی ہے: مریم نواز     No IMG     وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی دو روزہ سرکاری دورے پر کویت روانہ     No IMG     بارسلونا قونصلیٹ نے پاکستانیوں کے لیے بڑا اعلان کردیا     No IMG     کوئٹہ میں بم دھماکے کے نتیجے میں 4 پولیس اہلکار جاں بحق جبکہ 6 افراد زخمی     No IMG     امریکہ نے ایک پاکستانی کمپنی سمیت متعدد اداروں پر پابندی عائد کردی     No IMG     بھارت کی حکمراں جماعت بی جے پی کے لیڈرکی بیٹی نامعلوم افراد کی چھیڑ چھاڑ     No IMG     ضلع کشمور کی تحصیل کندھ کوٹ میں ایک مسافر وین میں سلنڈر پھٹنے سے 2 بچوں اور 2 خواتین سمیت 5 افراد جھلس کر جاں بحق     No IMG    

وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کا افتتاح کردیا
تاریخ :   17-04-2019

اسلام آباد(ورلڈ فاسٹ نیوز فاریو) وزیر اعظم نے کہا ہے کہ قوم مشکلات سے نہ گھبرائے۔ زندگی میں مشکل وقت آتے رہتے ہیں۔ وہی اصول جو سرکار مدینہ ﷺ نے سکھائے تھے، نچلے طبقے کو اوپر اٹھانے کیلئے انہی اصولوں پر عمل پیرا ہوں گے۔نیا پاکستان ہاﺅسنگ منصوبے کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے

ہوئے عمران خان نے کہا کہ نیا پاکستان ہاﺅسنگ منصوبہ شروعات ہے۔ ہم بڑی جدوجہد کے ساتھ یہاں پہنچے ہیں اور اب ہم پورے پاکستان میں ان منصوبوں کا افتتاح کرتے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ میں یہاں بتانا چاہتا ہوں کہ میں کیوں سیاست میں آیا۔ میرے بارے میں کہا جاتاہے کہ میرا کوئی ویژن نہیں ہے۔ میں نے جب سیاست شروع کی تو مجھے کنفیوژن نہیں تھی اور جب میں وزیراعظم بنا تو اس وقت بھی مجھے کوئی کنفیوژن نہیں تھی۔وزیراعظم نے کہا کہ میرا سیاست میں آنے کا مقصد سادہ سا تھا کہ میں پاکستان کو ایک ایسا ملک بنانا چاہتا تھا جس کا خواب ہمارے آباﺅ اجداد قائد اعظم اور علامہ اقبال نے دیکھا تھا۔ یعنی ایک اسلامی اور فلاحی ریاست کا خواب تھا۔ اسلامی فلاحی ریاست کا مطلب ہی یہ ہے کہ وہ نچلے طبقے کی ذمہ داری لیتی ہے۔عمران خان نے کہا کہ یہ آسان کام نہیں ہے، آسان ہوتا تو دوسرے ستر سال میں کرلیتے۔ میں پاکستان کو اسلامی فلاحی ریاست کا عزم لے کر آیا ہوں۔ ہم نمازیں پڑھتے ہیں لیکن ہمیں یہ ہی نہیں پتہ کہ ہم نما ز میں کیا مانگتے ہیں۔ ہم نماز میں اپنے نبیﷺ کا راستہ مانگتے ہیں۔ ہم آپﷺ کے راستے پر چلنا چاہتے ہیں۔ آپ ﷺ کا راستہ یہ تھا کہ آپﷺ نے ایک فلاحی ریاست بنائی۔ غریبوں، یتیموں اور بیواﺅں کیلئے جس کی بنیاد رحم پر تھی۔انہوں نے کہا کہ ہم اس راستے پر لگیں گے تو اللہ کی رحمت آئے گی۔ میں نے کینسر اسپتال شروع کیا تو لوگوں نے میرا مذاق اڑایا۔ لوگوں کو غلط فہمی ہے کہ انسان یہ سمجھتا ہے کہ وہ کامیاب ہوتا ہے، کامیابی تو اللہ دیتاہے۔ جو یہ کہتا ہے کہ میں کامیاب ہوا ہوں تو وہ تکبر کرتا ہے اور اسی تکبر کی بناء پر تو اللہ تعالی نے شیطان کو نکالا تھا۔وزیراعظم نے کہا کہ عام آدمی کیلئے کسی نے کبھی سوچا ہے۔ تعلیمی نظام ہمارے لوگوں کو نیچے رکھتا ہے۔ تین طبقاتی نظام ہیں، تبدیلی میں سب سے بڑی رکاوٹ ایک چھوٹا سا طاقتور ٹولہ ہوتا ہے جونظام سے فائدہ اٹھا رہا ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ پہلے دن سے ہی جب ہماری حکومت بنی ہے تو وہ کون لوگ تھے جنہوں نے شور مچایا کہ حکومت فیل ہوگئی؟ یہ وہ لوگ ہیں جنہوں نے اس نظام سے فائدہ اٹھایا ہے۔ ان کے بچے ارب پتی بن گئے، پیسہ ان لوگوں نے باہر بھیج دیا ہے۔ آج تنقید کررہے ہیں کہ حکومت فیل ہوگئی۔عمران خان نے کہا کہ یہ اسٹیٹس کو ہے۔ جب تبدیلی کسی معاشرے میں لے کر آتے ہیں تو اسٹیٹس کو کو شکست دے کر آتے ہیں۔ ہر جگہ یہ لوگ بیٹھے ہوئے ہیں، یہ جنگ ہم جیت گئے ہیں۔ یہ اسٹیٹس کو ہم سے جیت نہیں سکتا، ان کو زمانہ پیچھے چھوڑ گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ جب ایک سرکاری ملازم نے اپنے بیٹے کو اپنے محکمہ میں ملازمت دلوانے اور اپنی فیملی کیلئے سرکاری مکان برقرار رکھنے کیلئے خودکشی کی تھی تو میں نے سوچا تھا کہ لوگوں کو گھر مہیا کیے جائیں۔ پاکستان میں ایک کروڑ گھروں کی کمی ہے۔عمران خان نے کہا کہ ہاﺅسنگ کے شعبہ میں سرمایہ کاری کرنے والوں کی باہر سے لائنیں لگی ہوئی ہیں۔ ہمارے کوشش ہے کہ اس میں پرائیوٹ سیکٹر آئے اور اس میں نوجوانوں کی فرمز بنائیں تاکہ وہ خود کاروبار کریں۔ پاکستان کی کچی آبادیوں کا کسی نے نہیں سوچا۔ انسان جب ایک راستے پر چلتا ہے تو اللہ تعالیٰ خود ہی انسان کو راستہ دکھاتا رہتا ہے۔انہوں نے کہا کہ مجھے ایک چینی کمپنی نے پیشکش کی ہے کہ وہ ایک ہفتے میں ایک فلور بنا سکتے ہیں۔ کچی آبادی میں ہم تمام لوگوں کیلئے گھر بنادیں گے اور کچی آبادی کے لوگوں کو وہاں منتقل کریں گے اور ساتھ ہی وہاں کمرشل سرگرمیاں بھی شروع کریں گے۔وزیراعظم نے کہا کہ ہم پانچ ارب کا قرضہ لوگوں کو دیں گے کہ وہ اپنے گھر بناسکیں۔ سرکاری ملازمین کیلئے راولپنڈی، اسلام آباد، بلوچستان اور کشمیر میں گھر بنائے جارہے ہیں۔عمران خان نے مزید کہا کہ میں آخر میں اپنی قوم سے کہنا چاہتا ہوں کہ جب کوشش کرتے ہیں تو اس میں کبھی سیدھی لائن نہیں ہوتی بلکہ اونچ نیچ ہوتی رہتی ہے۔ میں قوم سے کہتا ہوں کہ مشکل سے گھبرانا نہیں ہے۔ زندگی میں مشکل وقت آتے رہتے ہیں۔ ہم عظیم قوم بنیں گے اور وہی اصول جو سرکار مدینہ ﷺ نے سکھائے تھے، نچلے طبقے کو اوپر اٹھانے کیلئے انہی اصولوں پر عمل پیرا ہوں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
افغانستان اور افغان طالبان کے درمیان مذاکرات ایک مرتبہ پھر کھٹائی میں پڑتے دکھائی دے رہے ہیں
ایران کے وزیر خارجہ کی ترک صدر اردوغان کے ساتھ ملاقات
Translate News »