پاک فوج نے ایک آپریشن میں 4 مغوی ایرانی فوجیوں کو بازیاب کرالیا     No IMG     دنیا بھر میں آج ہندو برادری اپنا مذہبی تہوار ہولی منا رہی ہے     No IMG     افغانستان کے صوبے ہرات میں سیلاب سے 13 افراد کے جاں بحق ہونے سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 63 ہوگئی     No IMG     لیبیا میں پناہ گزینوں کو لے جانے والی کشتی ڈوب گئی جس کے نتیجے میں 9 افراد ہلاک     No IMG     اسرائیلی دہشت گردی، غرب اردن میں مزید3 فلسطینیوں کو شہید کردیا     No IMG     پیپلز پارٹی کےچیئرمین نے 3 وفاقی وزرا کو فارغ کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     وزیراعظم عمران خان کی ہولی کے تہوار پر ہندو برادی کو مبارک باد     No IMG     سابق وزیراعظم نوازشریف نے ای سی ایل سے نام نکالنے کی درخواست دائر کردی     No IMG     سمجھوتہ ایکسپریس کیس کا فیصلہ 12 سال بعد بھی تاخیر کا شکار     No IMG     وزیر اعظم آئین کے آرٹیکل 214 کی شق دو اے پر عمل کرنے میں ناکام     No IMG     روس کے وزیر دفاع سرگئی شویگو نے شام کے صدر بشار اسد سے ملاقات     No IMG     بھارت اور پاکستان متنازع معاملات مذاکرات کے مذاکرات کے ذریعے حل کریں,چین     No IMG     بریگزیٹ پرٹریزامے کی حکمت عملی انتہائی کمزورہے، ٹرمپ     No IMG     امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو کی کویت کے بادشاہ سے ملاقات     No IMG     نیوزی لینڈ میں جمعہ کو سرکاری ریڈیو اور ٹی وی سے براہ راست اذان نشر ہوگی,جیسنڈا آرڈرن     No IMG    

منی لانڈرنگ تحقیقات:سابق صدر آصف علی زرداری اور،فریال تالپور نے الیکشن کےبعد پیش ہونےکی مہلت مانگ لی
تاریخ :   11-07-2018

کراچی: (ورلڈفاسٹ نیوزفاریو)سابق صدر آصف علی زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کو منی لانڈرنگ کیس میں ایف آئی اے اسٹیٹ بنک سرکل نے آج بیان ریکارڈ کرانے کے لیے طلب کیا تھا، تاہم سینئر وکلاء کی جانب سے سابق صدر کو آج پیش نہ ہونے کے مشورے کے بعد ان کی قانونی ٹیم ایف آئی اے کے سامنے پیش ہوئی۔
آصف علی زرداری کی جانب سے سینئر وکیل فاروق ایچ نائیک کے دو جونئیر وکیل ایف آئی اے اسٹیٹ بینک کرائم سرکل میں پیش ہوئے اور سابق صدر اور ان کی بہن فریال تالپور کی جانب سے تحریری بیان جمع کرایا، جس میں الیکشن کے بعد پیش ہونے کی مہلت مانگی گئی۔

آصف علی زرداری کی جانب سے جمع کرائے گئے جواب کے متن کے مطابق 2014 کے معاملے پر ایک دن میں جواب دینا اور بینک اسٹیٹمنٹ اور دیگر متعلقہ ریکارڈ فوری پیش کرنا ممکن نہیں۔

بیان کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹرین کے صدر آصف زرداری این اے 213 سے الیکشن لڑ رہے ہیں اور اِن دنوں انتخابی سرگرمیوں کی وجہ سے مصروف ہیں ، انہیں ایک ایسے وقت میں طلب کیا جارہا ہے، جب دو ہفتوں بعد انتخابات ہیں۔

جعلی اکاؤنٹس کیس: ایف آئی اے نے آصف زرداری، فریال تالپور11 جولائی کو طلب کرلیا
مزید کہا گیا کہ اس وقت طلب کرنا بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے اور انہیں مقدمات میں مصروف رکھنے سے الیکشن مہم متاثر ہوسکتی ہے، جبکہ آئین کا آرٹیکل 218 صاف شفاف اور منصفانہ انتخابات کی ضمانت دیتا ہے۔

سابق صدر کی جانب سے جمع کرائے گئے جواب کے متن کے مطابق زرداری گروپ کا روزانہ کی بنیاد پر ہونے والی کارروائی سے براہ راست کوئی تعلق نہیں، تاہم آصف علی زرداری قانون کا احترام کرتے ہیں اور 25 جولائی کے بعد ایف آئی اے کے تمام سوالوں کے جواب دے دیں گے۔

دوسری جانب آصف زرداری کی بہن کی جانب سے جمع کرائے گئے جواب میں کہا گیا کہ فریال تالپور پیپلز پارٹی خواتین ونگ کی سربراہ ہیں، جو پی ایس 10 لاڑکانہ سے انتخابات میں حصہ لے رہی ہیں۔

جواب کے متن کے مطابق فریال تالپور الیکشن مہم میں مصروف ہیں، جس کی وجہ سے ریکارڈ جمع کرکے جواب دینا ممکن نہیں ہے۔
ساتھ ہی فریال تالپور کی جانب سے درخواست کی گئی کہ جواب داخل کرانے کے لیے 31 جولائی تک مہلت دی جائے۔

واضح رہے کہ ایف آئی اے بے نامی اکاؤنٹ سے منی لانڈرنگ کیس میں 32 افراد کے خلاف تحقیقات کر رہی ہے، جن میں آصف علی زرداری اور فریال تالپور بھی شامل ہیں، اسی سلسلے میں گزشتہ دنوں نجی بینک کے صدر حسین لوائی کو گرفتارکیا گیا تھا۔

ایف آئی اے حکام کے مطابق آصف زرداری کو زرداری گروپ لمیٹڈ کے شیئر ہولڈر اور فریال تالپور کو زرداری گروپ کی ڈائریکٹر کی حیثیت سے طلب کیا گیا۔

تاہم نوٹس وصول نہ کیے جانے پر بلاول ہاؤس اور فریال ہاؤس کی دیوار پر ان کی طلبی کے نوٹس چسپاں کردیئے گئے تھے۔

منی لانڈرنگ کیس میں طلبی کے معاملے پر آصف زرداری نے فاروق ایچ نائیک، لطیف کھوسہ، اعتزاز احسن اور نیئر بخاری سے مشاورت کی، تاہم سینئر وکلاء نے آصف زرداری کو پیش نہ ہونے کا مشورہ دیا، جس کے بعد ان کی قانونی ٹیم ایف آئی اے کے سامنے پیش ہوئی

Print Friendly, PDF & Email
جیل آتی ہے یا پھانسی قوم کا ساتھ نہیں چھوڑوں گا،سابق وزیراعظم نوازشریف
سپریم کورٹ کا اسحاق ڈار کو ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کا تحریری حکم
Translate News »