چیف جسٹس کے اعزاز میں فُل کورٹ ریفرنس کاایک جج نے بائیکاٹ کردیا، جانتے ہیں وہ معزز جج کون ہیں ؟     No IMG     الیکشن کمیشن آف پاکستان نے گوشوارے جمع نہ کروانے پر 322 ارکان کی رکنیت معطل     No IMG     حکومت کا غیر قانونی موبائل فونز ضبط کرنے کا فیصلہ     No IMG     امریکہ نے پریس ٹی وی کی اینکر پرسن کو بغیر کسی جرم کے گرفتار کرلیا     No IMG     سندھ میں آئینی تبدیلی لائیں گے، فواد چودھری     No IMG     کسی کی خواہش پرسابق آصف زرداری کو گرفتار نہیں کرسکتے، نیب     No IMG     نئے پاکستان میں تبدیلی آگئی تبدیلی آگئی، اب لاہور ایئرپورٹ پر شراب دستیاب ہوگی     No IMG     برطانوی وزیراعظم ٹریزامےکیخلاف تحریکِ عدم اعتماد ناکام ہوگئی     No IMG     وزیراعظم کی رہائش گاہ پر وفاقی کابینہ کا ہنگامی اجلاس طلب     No IMG     گاڑیوں کی درآمد پر ٹیکس اب غیر ملکی کرنسی میں ادا کرنا ہوگا, وزیر خزانہ     No IMG     تائيوان, کے معاملے ميں مداخلت برداشت نہيں کی جائے گی, چين     No IMG     امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترکی کی معیشت کو تباہ کرنے کے بیان سے یوٹرن لیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان معاشی ترقی کے وسیع مواقع ہی     No IMG     وزیراعظم سے سابق امریکی سفیر کیمرون منٹر کی ملاقات     No IMG     آپ لوگ کام نہیں کر سکتے چیف جسٹس نے اسد عمرکو دو ٹوک الفاظ میں کیا کہہ ڈالا     No IMG     شادی والے گھر میں آگ لگنے سے دلہن سمیت 4 خواتین جاں بحق     No IMG    

مصر نے سی پیک منصوبے پر پاکستان کو مکمل تعاون کی یقین دہانی
تاریخ :   25-09-2018

قاہرہ ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) مصر نے سی پیک منصوبے میں پاکستان کومکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے جبکہ پاکستان نے بھی مصر کو بھی سی پیک سے بھرپور استفادہ کرنے کی پیشکش کی ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان اور مصر کے تعلقات کے ستر سال مکمل ہونے پر مصری دارالحکومت قاہرہ میں

دو روزہ سی پیک ڈائیلاگ اور ٹریڈ سمٹ کا آغاز ہوا، کانفرنس کا انعقاد ساؤتھ ایشین اسٹریٹیجک اسٹیبلٹی انسٹی ٹیوٹ (ساسی) کی جانب سے کیا گیا،ساسی کی ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر ماریہ سلطان نے کانفرنس کا افتتاح کیا۔اس موقع پر وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی خسرو بختیار، مصر میں پاکستان کے سفیر مشتاق علی شاہ اور مصری وزیر برائے منصوبہ بندی ہالا السعید بھی موجود تھیں۔کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی خسرو بختیار کا کہنا تھا کہ بیلٹ اینڈ روڈ منصوبہ 70 ممالک کو آپس میں ملا دےگا اور مصر بھی سی پیک سے استفادہ کرسکتا ہے۔دوسری جانب مصر نے بھی سی پیک منصوبے میں پاکستان کے ساتھ مکمل تعاون کی یقین دہانی کروائی ہے،مصری وزیر برائے منصوبہ بندی کا کہنا تھا کہ مصر سی پیک سے بھرپور فائدہ اٹھائے گا اور پاکستان سے تعاون کرے گا۔واضح رہے کہ مصر اور پاکستان کے درمیان سفارتی تعلقات انیس سو اڑتالیس میں قائم ہوئے تھے اور قیامِ پاکستان کے بعد مشرقِ وسطیٰ میں سے مصر وہ پہلا ملک تھا، جس نے یہاں اپنا سفارت خانہ کھولا تھا۔واضح رہے کہ بیس ستمبر کو اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراطلاعات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ سعودی عرب سی پیک میں تیسرا پارٹنر ہوگا اور سی پیک منصوبوں میں بڑی سرمایہ کاری کرے گا۔ سعودی عرب کو سی پیک کا پارٹنر بننے کی دعوت دی گئی تھی۔وزیراطلاعات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ سعودی عرب میں روضہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی زیارت کی سعادت ملی جبکہ تہجد کے وقت خانہ کعبہ کی زیارت نصیب ہوئی اور وزیراعظم اور ان کے وفد کے نصیب میں یہ سعادت لکھی تھی۔یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیےانہوں نے کہا کہ سعودی عوام نے بھی وزیراعظم عمران خان کااستقبال کیا جبکہ جدہ شہر کو پاکستانی پرچموں سے سجایا گیا اور خادم الحرمین شریفین، ولی عہد محمد بن سلمان سے تفصیلی ملاقاتیں ہوئیں۔فواد چوہدری نے کہا کہ سعودی عرب نے یقین دلایا کہ وہ پاکستان کے ساتھ کھڑا ہے۔ وزیراعظم نے یقین دہانی کرائی کہ پاکستان سعودی عرب کے ساتھ ہے اور سعودی عرب کو سی پیک کا پارٹنر بننے کی دعوت دی گئی تھی جو انہوں نے قبول کرلی۔ اس طرح سعودی عرب سی پیک میں تیسرا پارٹنر ہوگا اور سی پیک منصوبوں میں بڑی سرمایہ کاری کرے گا۔وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ جو لوگ کہہ رہے ہیں کہ سعودی عرب سے ڈیل ہوگئی ہے انہیں کچھ پتہ ہی نہیں۔ نہ تو ڈیل ہوگی اور نہ ہی ڈھیل ہوگی۔انہوں نے کہا کہ میاں صاحب کا جیل میں آنا جانا لگا رہے گا۔ سزا معطل ہوئی ہے، باعزت بری نہیں ہوئے۔فواد چوہدری نے مزید کہا کہ حسن نواز، حسین نواز اور اسحاق ڈار کو باہر رہنے نہیں دیا جائے گا، جبکہ میاں صاحب کو آخر اڈیالہ ہی جانا ہے۔ ملک میں عدالتیں آزاد ہیں، شریف خاندان سے پاکستان تحریک انصاف یا عمران خان کی ذاتی لڑائی نہیں ہے۔واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان سعودی عرب کے دو روزہ دورے کے بعد آج پاکستان پہنچے ہیں۔ اپنے دورے میں وزیراعظم عمران خان اورسعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز ملاقات میں دو طرفہ تعلقات اور خطے کی صورتحال،عالمی امور اور امت مسلمہ کو درپیش چیلنجز پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ عمران خان اور سعودی فرمانروا نے پاک سعودی عرب تعلقات مزید مضبوط بنانے پر اتفاق اور باہمی تعاون مزید مضبوط بنانے کے عزم کا اعادہ بھی کیا۔وزیرِاعظم عمران خان نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان سے بھی ملاقات کی۔ دونوں رہنماوں نے اپنے وزراکےساتھ دو طرفہ تعلقات پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ وزیرِاعظم نے خطے کی سیکیورٹی صورتحال ،سیاست ، دفاع، اقتصادیات ،پاکستانیوں کو درپیش مسائل پر بھی بات چیت کی۔ وزیراعظم نےاورسعودی فرمانروااور ولی عہد کو پاکستان کے دورے کی دعوت بھی دی۔بعد ازاں وزیراعظم عمران خان نے العربیہ ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہنا تھا کہ سعودی عرب نے ضرورت پڑھنے پر ہمیشہ پاکستان کی مدد کی اور پاکستان میں جو بھی برسراقتدار آئے گا سب سے پہلے سعودی عرب کا دورہ کرے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ مسلم دنیا میں کوئی تنازع نہیں ہونا چاہیے کیونکہ مسلم دنیا میں تنازعات پہلے ہی ہم سب کو کمزور کر رہے ہیں۔وزیراعظم نے اپنے انٹرویو میں کہا کہ افغانستان اور دیگر ملکوں کے تنازعات سے پاکستان پہلے ہی بہت متاثر ہوا ہے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان مسلم دنیا میں تنازعات ختم کرنے اور مفاہمت میں کردار ادا کرنا چاہے گا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام سعودی عرب کا بہت احترام کرتے ہیں، پاکستان ہمیشہ سعودی عرب کے ساتھ کھڑا ہے اور اس کی حمایت جاری رکھے گا۔سعودی عرب کا دو روزہ مکمل کرنے کے بعد وزیراعظم عمران خان ابو ظہبی پہنچے، جہاں انہوں نے متحدہ عرب امارات کے ولی عہد شیخ محمد بن زید النہیان سے ملاقات کی۔ ملاقات میں یو اے ای کے نائب وزیر اعظم، وزیر داخلہ اور وزیر خارجہ بھی موجود تھے۔ملاقات کے دوران پاکستان، عرب امارات کے درمیان دو طرفہ تعلقات اور باہمی تعاون پر بات چیت کی گئی۔ دونوں رہنماؤں نے دو طرفہ تعلقات پر اطمینان کا اظہار کیا اورتعاون کو مزید مستحکم کرنے پر اتفاق کیا جبکہ علاقائی اور عالمی اہمیت کے معاملات پر بھی دونوں ممالک کے مشترکہ نکتہ نظر پر اطمینان کا اظہار کیا گیا۔ملاقات میں یو اے ای کے نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزر اور وزیر برائے صدارتی امور بھی موجود تھے جبکہ وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیرخزانہ اسدعمر، وزیر اطلاعات فواد چودھری، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد اور پاکستانی سفیر بھی شریک تھے۔

Print Friendly, PDF & Email
نیویارک میں ایرانی صدر حسن روحانی اور برطانوی وزير اعظم تھریسا مے کی ملاقات
مسلم لیگ (ن) نے پارلیمانی پارٹی کا مشترکہ اجلاس آج طلب
Translate News »