سعودی عرب نے سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل سے متعلق امریکی سینیٹ کی قرارداد کو مسترد کردیا     No IMG     سابق سینیٹر اور پیپلز پارٹی کے رہنما فیصل رضا عابدی پر انسداد دہشت گردی کی عدالت نے فردجرم عائد کر دی     No IMG     مقبوضہ کشمیر میں نوجوانوں کی شہادت پراحتجاجی مارچ     No IMG     چیف جسٹس آف پاکستان کا دورہ تُرکی ,تُرک کمپنی نے ڈیمز فنڈ میں عطیہ دے دیا     No IMG     وینزویلا سے تعلق رکھنے والی 25 سالہ نوجوان لڑکی نے ملکہ حسن کا ٹائٹل جیت لیا     No IMG     حزب اللہ کی ايک اور سرنگ دريافت ,اسرائیلی فوج کا دعوی     No IMG     عوام اپنے مسائل کے حل کیلیے وزیر اعظم کمپلینٹ پورٹل کا استعمال کریں،وزیراعظم     No IMG     سابق صدر آصف زرداری نے پنجاب کی بجلی بند کرنے کی دھمکی دے دی     No IMG     رشوت کا سب سے بڑا ناسور پٹواری ہیں, چیف جسٹس     No IMG     فرانسیسی پولیس نے پیلے رنگ جیکٹس والے مظاہرین پر شدید تشدد     No IMG     اسلام آباد تھانہ سہالہ میں شدید فائرنگ, بدنام زمانہ شیرپنجاب جاں بحق     No IMG     اگر گرفتار ہوا تو کیا ہوگا کیونکہ جیل تو میرا دوسرا گھر ہے, آصف علی زرداری     No IMG     امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کا نیا وزیر داخلہ مقرر کرنے کا اعلان     No IMG     اٹلی میں ہزاروں مظاہرین نے مہاجر مخالف قوانین کے خلاف مظاہرہ     No IMG     پاکستانیوں کے دل پر آرمی پبلک سکول (اے پی ایس ) پشاور میں لگنے والے زخم کو چار سال مکمل ہوگئے     No IMG    

لیبیا کے دارالحکومت طرابلس میں پانچ لاکھ بچے خطرے سے دوچار
تاریخ :   24-09-2018

طرابلس ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) لیبیا کے دارالحکومت طرابلس میں پانچ لاکھ بچے متحارب جنگجو ملیشیاؤں کے درمیان جاری لڑائی کے نتیجے میں خطرے سے دوچار ہوچکے ہیں۔

اقوام متحدہ کے تحت حقوقِ اطفال کے ادارے یونیسیف نے سوموار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ گذشتہ 48 گھنٹے کے دوران میں طرابلس کے جنوب میں لڑائی میں شدت کے بعد سے مزید بارہ سو سے زیادہ خاندان بے گھر ہوگئے ہیں۔

یونیسف کا کہنا ہے کہ طرابلس اور اس کے نواحی علاقوں میں اگست سے جاری مسلح جھڑپوں کے نتیجےمیں پچیس ہزار سے زیادہ افراد بے گھر ہوچکے ہیں۔ان میں نصف تعداد بچوں کی ہے۔

اقوام متحدہ کی اس ایجنسی کے مشرقِ اوسط اور شمالی افریقا میں ڈائریکٹر گیرٹ کیپلائر نے کہا ہے کہ ’’ مزید بچوں کو جنگ کے لیے بھرتی کیا جارہا ہے جس سے وہ فوری خطرے سے دوچار ہوچکے ہیں اور لڑائی میں شریک ایک بچہ مارا بھی جاچکا ہے‘‘۔

لیبیا کی وزارت صحت کے ہفتے کی شب فراہم کردہ اعداد وشمار کے مطابق طرابلس اور اس کے نواحی علاقے میں گذشتہ ایک ماہ سے متحارب جنگجو دھڑوں کے درمیان جاری لڑائی کے نتیجے میں 115 افراد ہلاک اور کم سے کم 400 زخمی ہوچکے ہیں۔لڑائی سے متاثرہ علاقوں سے بے گھر ہونے والے افراد کو ا سکولوں میں عارضی طور پر ٹھہرایا جارہا ہے جس کے پیش نظر 3 اکتوبر سے نئے تعلیمی سال کا آغاز ممکن نظر نہیں آرہا ہے اور اس میں تاخیر ہوجائے گی۔

یونیسف کے مطابق لڑائی سے متاثرہ علاقوں کے مکینوں کو خوراک ، بجلی اور پانی کی قلت کا سامنا ہے۔لڑائی میں شدت سے تارکین ِ وطن کی مشکلات میں بھی اضافہ ہوچکا ہے۔کیپلائر کا کہنا تھا کہ ’’ سیکڑوں گرفتار پناہ گزینوں اور تارکین وطن کو تشدد کی وجہ سے زبردستی دوسری جگہوں پر منتقل کیا جارہا ہے۔ان کے علاوہ بہت سے تارکین ِ وطن ایسے مراکز میں پھنس کر رہ گئے ہیں ،جن کی حالت انتہائی ناگفتہ بہ ہے۔

واضح رہے کہ اقوام متحدہ کی مصالحتی کوششوں کے نتیجے میں 4 ستمبر کو متحارب ملیشیاؤں کے درمیان جنگ بندی ہوئی تھی لیکن گذشتہ ہفتے طرابلس کے جنوبی علاقوں میں ترہونہ اور مصراتہ سے تعلق رکھنےو الی ملیشیاؤں اور طرابلس میں لیبیا کی قومی حکومت کے تحت ملیشیا میں دوبارہ لڑائی چھڑ گئی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email
پنجاب حکومت نے یروزگار نوجوانوں کو اپنا کاروبار شروع کرنے کیلئے 30 لاکھ روپے آسان شرائط پر قرضہ دینے کا فیصلہ
غزہ اقوام متحدہ ایجنسی کے فلسطینی ملازمین کی جبری برطرفیوں کے خلاف ہڑتال
Translate News »