چیف جسٹس کے اعزاز میں فُل کورٹ ریفرنس کاایک جج نے بائیکاٹ کردیا، جانتے ہیں وہ معزز جج کون ہیں ؟     No IMG     الیکشن کمیشن آف پاکستان نے گوشوارے جمع نہ کروانے پر 322 ارکان کی رکنیت معطل     No IMG     حکومت کا غیر قانونی موبائل فونز ضبط کرنے کا فیصلہ     No IMG     امریکہ نے پریس ٹی وی کی اینکر پرسن کو بغیر کسی جرم کے گرفتار کرلیا     No IMG     سندھ میں آئینی تبدیلی لائیں گے، فواد چودھری     No IMG     کسی کی خواہش پرسابق آصف زرداری کو گرفتار نہیں کرسکتے، نیب     No IMG     نئے پاکستان میں تبدیلی آگئی تبدیلی آگئی، اب لاہور ایئرپورٹ پر شراب دستیاب ہوگی     No IMG     برطانوی وزیراعظم ٹریزامےکیخلاف تحریکِ عدم اعتماد ناکام ہوگئی     No IMG     وزیراعظم کی رہائش گاہ پر وفاقی کابینہ کا ہنگامی اجلاس طلب     No IMG     گاڑیوں کی درآمد پر ٹیکس اب غیر ملکی کرنسی میں ادا کرنا ہوگا, وزیر خزانہ     No IMG     تائيوان, کے معاملے ميں مداخلت برداشت نہيں کی جائے گی, چين     No IMG     امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترکی کی معیشت کو تباہ کرنے کے بیان سے یوٹرن لیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان معاشی ترقی کے وسیع مواقع ہی     No IMG     وزیراعظم سے سابق امریکی سفیر کیمرون منٹر کی ملاقات     No IMG     آپ لوگ کام نہیں کر سکتے چیف جسٹس نے اسد عمرکو دو ٹوک الفاظ میں کیا کہہ ڈالا     No IMG     شادی والے گھر میں آگ لگنے سے دلہن سمیت 4 خواتین جاں بحق     No IMG    

لاؤس میں زیر تعمیر ڈیم کے ٹوٹنے سے پانی دیہاتوں میں داخل ہوگیا ہے جس کے نتیجے میں 100 سے زائد افراد لاپتہ اور درجنوں گاؤں زیر آب آگئے
تاریخ :   24-07-2018

لاؤس  ۔( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) میں زیر تعمیر ڈیم کے ٹوٹنے سے پانی دیہاتوں میں داخل ہوگیا ہے جس کے نتیجے میں 100 سے زائد افراد لاپتہ اور درجنوں گاؤں زیر آب آگئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق جنوب مشرقی ایشیائی ملک لاؤس کے صوبے اتاپیو میں واقع  زیرتعمیر ہائیڈرو الیکٹرک ڈیم ٹوٹنے سے 5 بلین کیوبک پانی 6 دیہاتوں کو اپنے ساتھ بہا لے گیا۔

سیلاب کے باعث 100 سے زائد افراد لاپتہ جب کہ 6 ہزار 6 سو افراد بے گھر ہوگئے، لاپتہ افراد کے ہلاک ہوجانے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔ سیلاب کے باعث تاحد نگاہ پانی ہی پانی ہے جس کی وجہ سے لوگوں نے چھتوں پر پناہ لے رکھی ہے۔ ریسکیو اداروں کو متاثرہ علاقے تک پہنچنے کے لیے شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ ہیلی کاپٹرز کی مدد سے سیلاب میں پھنسے افراد کی محفوظ علاقے میں منتقلی کا عمل جاری ہے۔ یان شی نامونے ڈیم پر 410 میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کے لیے پاور اسٹیشن قائم کیا جا رہا تھا جس کے لیے  1.2 بلین ڈالر کے پروجیکٹ کا آغاز 2013ء میں کیا گیا تھا اور جسے 2019ء میں مکمل ہونا تھا۔

اس پاور پلانٹ سے حاصل ہونے والی 90 فیصد بجلی تھائی لینڈ کو فروخت کی جانی تھی جب کہ بقیہ ماندہ بجلی کو مقامی گرڈ اسٹیشن میں شامل کیا جانا تھا۔ ڈیم پر قائم پاور پلانٹ کی تعمیر کے خلاف مقامی این جی اوز اور ماحولیاتی تنظیموں نے اپنے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے اسے مقامی آبادی کے لیے خطرہ قرار دیا تھا جس سے مقامی آبادی کو پانی کی قلت کا بھی سامنا ہوسکتا تھا۔ اس پاور اسٹیشن پر کام کرنے والی کمپنیوں کا تعلق تھائی لینڈ اور شمالی کوریا سے ہے جب کہ ایک مقامی کمپنی بھی شامل ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنے مخالفین سے ’بدلہ‘ لینا چاہتے ہیں
امریکہ کا ترکی کو ایف 35 طیارے نہ دینے کا اعلان
Translate News »