وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر سے پاک برطانیہ اور پاکستان سکاٹ لینڈ بزنس کونسل کے وفد کی ملاقات     No IMG     حکومت کو شدید مشکلات کا سامنا آئی ایم ایف نے بیل آوٹ پیکج کیلئے اپنی شرائط سخت کردیں     No IMG     آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا آرمی سروس کور سینٹر نوشہرہ کا دورہ     No IMG     جاپانی وزیراعظم شینزو آبے آسٹریلیا پہنچ گئے     No IMG     کیلیفورنیا ,کی جنگلاتی آگ ، ہلاکتوں کی تعداد 63 ہو گئی     No IMG     برطانوی وزیراعظم کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک اگلے ہفتے پیش ہو سکتی ہے     No IMG     ملائیشین ہائی کمشنر اکرام بن محمد ابراہیم کی وزیراعظم عمران خان سے ملاقات     No IMG     امریکی بلیک میلنگ کا مقصد حماس کی قیادت کو نشانہ بنانا ہے     No IMG     زمبابوے بس میں گیس سیلنڈر پھٹنے سے 42 افراد ہلاک جبکہ متعدد افراد زخمی ہوگئے     No IMG     زلفی بخاری کیس: ’دوستی پر معاملات نہیں چلیں گے‘ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار     No IMG     غزہ پرحملے, اسرائیل کو 40 گھنٹوں میں 33 ملین ڈالر کا نقصان     No IMG     تنخواہیں واپس لے لیں سپریم کورٹ کاحکم آتے ہی افسران سیدھے ہو گئے     No IMG     پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان ابوظہبی ٹیسٹ کا پہلا دن باؤلرز کے نام     No IMG     چودھری پرویز الٰہی اپنے ہی جال میں پھنس گئے     No IMG     ق لیگ نے پاکستان تحریک انصاف کیخلاف بغاوت کردی     No IMG    

قطر کے ساتھ تنازعہ، عالمی عدالت کا عرب امارات کے خلاف فیصلہ
تاریخ :   24-07-2018

قطر( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) کے ساتھ تنازعہ، عالمی عدالت برائے انصاف نے اپنے ایک عبوری مگر نافذ العمل فیصلے میں متحدہ عرب امارات سے کہا ہے کہ وہ قطری شہریوں کے حقوق کا تحفظ یقینی بنائے۔ قطر نے اس فیصلے کا خیرمقدم کیا ہے۔
پیر کے روز بین الاقوامی عدالت برائے انصاف میں جیوری کے سات کے مقابلے میں آٹھ ججوں نے قطری شہریوں کے حقوق کے حق میں فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ ابوظہبی حکومت ایسے خاندانوں کو ملنے دے، جن کے کچھ افراد قطری شہری ہیں۔ اسی طرح اس عدالتی فیصلے میں متحدہ عرب امارات سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ قطری طلبہ کو متحدہ عرب امارات میں تعلیم مکمل کرنے کا موقع فراہم کیا جائے۔
گزشتہ برس جون میں سعودی عرب، متحدہ عرب امارات اور متعدد دیگر خلیجی ممالک نے قطر کے ساتھ تمام تر سفارتی اور سفری تعلقات ختم کر دیے تھے۔ ان ممالک کا الزام ہے کہ قطری حکومت دہشت گردوں کی معاونت میں ملوث ہے، تاہم دوحہ حکومت ان الزامات کو مسترد کرتی ہے۔

بین الاقوامی عدالت برائے انصاف کے اس فیصلے میں متحدہ عرب امارات کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ قطری شہریوں کے حامل خاندانوں کو ملنے اور ساتھ رہنے کی اجازت دی جانا چاہیے اور متحدہ عرب امارات میں تعلیم حاصل کرنے والے ایسے قطری طلبہ، جن کی تعلیم اس تنازعے کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہے، انہیں اپنی تعلیم مکمل کرنے کا موقع فراہم کیا جائے۔ گزشتہ برس جون میں اس تنازعے کے بعد سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات نے تمام قطری شہریوں کو 14 روز کے اندر ملک سے چلے جانے کی ہدایات دی تھیں اور اس تناظر میں متعدد خاندان متاثر ہوئے تھے جب کہ متحدہ عرب امارات میں زیرتعلیم قطری طلبہ کی تعلیم کا سلسلہ بھی منقطع ہو گیا تھا۔

عالمی عدالت برائے انصاف نے پیر کے روز اپنے فیصلے میں کہا کہ ابوظہبی حکومت کے متعدد اقدامات قطری شہریوں کے لیے ’ناقابل تلافی‘ نقصان کا سبب بن رہے ہیں اور سلسلے میں ایک مربوط منصوبہ بنایا جائے، تاکہ جدا ہو جانے والے خاندان دوبارہ مل سکیں۔
قطر نے اس عدالتی فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ عرب امارات کے ساتھ جاری تنازعے کو ہوا نہیں دینا چاہتا۔ قطری وزارت خارجہ کے ترجمان احمد بن سعید الرمیحی نے اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا، ’’ہم امارات کے ساتھ تنازعے میں مزید شدت نہیں چاہتے مگر ہم اپنے شہریوں کے خلاف تفریق کو ختم کرنا چاہتے ہیں۔‘‘

متحدہ عرب امارات کا عدالت میں موقف تھا کہ یہ معاملہ عالمی عدالت کے دائرہ اختیار میں نہیں آتا۔ اس فیصلے کے بعد ابوظہبی حکومت کی جانب سے کہا گیا ہے کہ عدالت نے اس معاملے میں فقط ’عبوری اقدامات‘ کا حکم سنایا ہے اور ان میں سے متعدد پر متحدہ عرب امارات پہلے ہی سے عمل کر رہا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
نواز شریف کی والدہ نے بیٹے کو جیل سے نکالنے کے لیے مقتدر قوتوں سے رابطے شروع کر دئیے
اسرائیل نے ایک شامی جنگی طیارہ مار گرایا
Translate News »