جرمن نے شام اور عراق کے لیے مالی امداد سو ملین یوروکا اعلان     No IMG     سعودی عرب کے سفیر خالد بن سلمان واشنگٹن سے فرار ہوگئے     No IMG     کویت نے غزہ میں تعمیر نو اور جنگ سے تباہ ہونے والے مکانات کی تعمیر کے لیے 25 لاکھ ڈالر کی امداد دینے کا اعلان     No IMG     اسرائیل کا غزہ پر فضائی حملہ ایک فلسطینی نوجوان شہید 8 زخمی     No IMG     روس کے زیر انتظام کریمیا میں بم دھماکے کے نتیجے میں 18 افراد ہلاک اور 50 زخمی     No IMG     ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے کہا ہے کہ اگر امریکہ شام میں کئے گئے وعدے پورے کرے     No IMG     پی آئی اے نے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری کےالزامات کو غلط قرار دیتے ہوئے سینیٹر مشاہد اللہ خان کو کلین چٹ دیدی     No IMG     قطر کی حکومت نے ملازمت کے خواہش مندوں کے لیے پاکستان میں ویزا مرکز کھولنے کا اعلان     No IMG     مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف نے کہاہے کہ کے الیکٹرک بکا ہی نہیں تھا اس لئے کسی ڈیل کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا،     No IMG     سلمان خان نے اپنے بھائیوں کے ساتھ مل کر میرا ریپ کیا,بھارتی ماڈل اور وی جے پوجا مشرا کا الزام     No IMG     اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایس ایس پی تشدد کیس میں وزیراعظم عمران خان کی بریت کیخلاف وفاق کی اپیل پر مقدمے کا ریکارڈ طلب کرلیا     No IMG     ابوظہبی, پاکستان کی میچ پر گرفت مضبوط ، ایک وکٹ کے نقصان پر 106 رنز جوڑ لیے ،245 رنز کی برتری     No IMG     افغانستان کے صوبے ہلمند میں انتخابی مہم کے دفتر میں دھماکے سے انتخابی امیدوار سمیت 3 افراد ہلاک     No IMG     ہارون اختر اور سابق وزیر اعظم کی بہن سعدیہ عباسی نااہل قرار     No IMG     بھارت اور چین نے افغانستان کے سفارت کاروں کو تربیت دینے کے مشترکہ پروگرام کا آغاز کر دیا     No IMG    

غزہ اقوام متحدہ ایجنسی کے فلسطینی ملازمین کی جبری برطرفیوں کے خلاف ہڑتال
تاریخ :   24-09-2018

غزہ ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) غزہ میں اقوام متحد ہ کے تحت فلسطینی مہاجرین کی امدادی ایجنسی اُنرو ا کے ہزاروں ملازمین نے جبری برطرفیوں اور امریکی امداد کی کٹوتی کے خلاف ہڑتال کردی ہے۔

اُنروا کے ملازمین کی لیبر یونین کی اپیل پر غزہ میں سوموار کو ایک روزہ ہڑتال کے دوران میں ڈھائی سو سے زیادہ اسکولوں کے علاوہ طبی اور امدادی تقسیم کے مراکز بھی بند ہیں۔ غزہ شہر میں اُنروا کے ہیڈ کوارٹرز کے باہر اس کے ملازمین نے احتجاجی مظاہرہ کیا ہے۔
لیبر یونین نے برطرف کیے گئے ملازمین کی بحالی کا مطالبہ کیا ہے ۔اس کے لیڈروں کا کہنا ہے کہ وہ اپنے مطالبات کے حق میں ہڑتال کے علاوہ مزید اقدامات بھی کرسکتے ہیں۔یونین کی ڈپٹی چئیرمین امل البطش نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ہڑتال اُنروا کی انتظامیہ کی جانب سے ملازمین کے مطالبات پر کان نہ دھرنے کے ردعمل میں کی جارہی ہے۔اس کو ملازمین کے مسائل کے حل میں کوئی دلچسپی نہیں ہے‘‘۔
اُنروا کے ترجمان کرس گونیس نے مزدور یونین کی اس ہڑتال پر افسوس کا اظہا ر کیا ہے اور کہا ہے کہ ’’ ہمیں ایسے کسی اقدام پر افسوس ہے جس سے مہاجرین کو ایجنسی کی جانب سے مہیا کی جانے والی خدمات پر منفی اثرات مرتب ہو سکتے ہوں۔بالخصوص غزہ ایسی جگہ پر جہاں ایک عشرے سے ناکا بندی جاری ہے اور اس سے مہاجرین نے کافی مصائب جھیلے ہیں‘‘۔
اُنروا کا کہنا ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے مالی امداد میں کٹوتی کے بعد اسامیوں اور خدمات میں تحدید ناگزیر ہوچکی ہے۔ امریکا فلسطینی مہاجرین کو بنیادی شہری سہولیات مہیا کرنے کی ذمے دار اس ایجنسی کو 35 کروڑ ڈالرز سالانہ امداد کی شکل میں دے رہا تھا لیکن صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس سال کے اوائل سے یہ تمام کی تمام رقم بند کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور اس رقم کو اب اسرائیل کی امداد یا دوسرے منصوبوں کے لیے مختص کردیا ہے۔
امریکی صدر کے فیصلے کے بعد اقوام متحدہ کی امدادی ایجنسی مالی مشکلات سے دوچار ہوگئی ہے اور اس نے غزہ اور مغربی کنارے میں ڈھائی سو اسامیاں ختم کرنے اور پانچ سو سے زیادہ کل وقتی ملازمین کو جزوقتی قرار دینے کا اعلان کردیا ہے۔
واضح رہے کہ اُنروا گذشتہ کئی عشروں سے پچاس لاکھ سے زیادہ فلسطینی مہاجرین کو خوراک کی شکل میں امداد مہیا کر رہی ہے اور تیس لاکھ کے لگ بھگ فلسطینیوں کو تعلیم اور صحت سمیت مختلف شہری خدمات مہیا کررہی ہے۔غزہ کی پٹی میں مقیم قریباً 80 فی صد فلسطینی اس ایجنسی کی امداد کے اہل ہیں ۔
اسرائیل کے محاصرہ زدہ اس فلسطینی علاقے میں اُنروا کے ملازمین کی تعداد قریباً تیرہ ہزار ہے۔ان کا کہنا ہے کہ اگر انھیں بے روزگار کرنے کا سلسلہ جاری رہا تو ان کے اہلِ خانہ نانِ جویں کو ترس جائیں گے اور انھیں جان کے لالے پڑ جائیں گے۔غزہ کی پٹی میں اُنروا کے تحت اسکولوں میں دو لاکھ سے زیادہ فلسطینی بچے زیر تعلیم ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
لیبیا کے دارالحکومت طرابلس میں پانچ لاکھ بچے خطرے سے دوچار
چین کے مالیاتی حکام نے فضائی آلودگی کی وجہ سے 158 کمپنیوں کے خلاف کارروائی
Translate News »