ساہیوال میں گاڑی پر فائرنگ کے واقعے میں ملوث سی ٹی ڈی اہلکاروں کو حراست میں لے لیا     No IMG     لیبیا کے قریب مہاجرین کی کشتی ڈوبنے سے 117 افراد لاپتا     No IMG     صومالیہ ,میں امریکی جنگی طیاروں کے حملے میں 52 شدت پسند ہلاک     No IMG     پولیس کی درندگی نے شادی والے گھر میں صف ماتم بچھادی     No IMG     پیپلز پارٹی کے رہنما قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے چیئر مین سینیٹر رحمان ملک نے اسلام آباد میں بڑھتی ہوئی ڈکیتیوں، موٹرکار و موٹر سائیکل چوریوں کا نوٹس اور آئی جی اسلام آباد سے رپورٹ طلب کرلی     No IMG     بھارت میں سوائن فلو سے 40 افراد ہلاک اور ایک ہزار 36 افراد متاثر     No IMG     سابق آرمی چیف راحیل شریف کو این او سی جاری     No IMG     چوہدری برادران کے ساتھ معاملات حل ہوگئے ہیں,صوبائی وزیر اطلاعات     No IMG     پولیس کے محکمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) کی فائرنگ سے 2 خواتین سمیت 4 افراد ہلاک اور 3 بچے زخمی     No IMG     مقبوضہ کشمیر میں ٹرک پر برفانی تودہ گرنے سے 5 افراد ہلاک     No IMG     سوڈان ,میں حکومت کے خلاف مظاہرے، ڈاکٹر سمیت 3افراد جاں بحق     No IMG     حکومت کو کسی قسم کا کوئی خطرہ ہے، پاکستان کے اچھے دن شروع ہوگئے ہیں, فواد چوہدری     No IMG     گیس لیکج سے 2 دھماکے ،3 افراد جاں بحق ،4 زخمی     No IMG     برطانوی وزیر اعظم مے کے یورپی رہنماؤں سے رابطے     No IMG     پیپلزپارٹی ک رہنماؤں کا حکومت کو اینٹ کا جواب پتھر سے دینے کا فیصلہ     No IMG    

عمران خان کی وزارت عظمیٰ کی حلف برداری تقریب پر خرچ سے متعلق عندلیب عباس کا دعویٰ جھوٹ نکلا
تاریخ :   21-08-2018

اسلام آباد ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو )عمران خان کی وزارت عظمیٰ کی حلف برداری کی تقریب کی سادگی کے تو بہت چرچے رہے جس پر پاکستان تحریک انصاف کے رہنما عندلیب عباس نے مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں دعویٰ کیا کہ وزارت عظمیٰ کی

حلف برداری کی تقریب پر کُل 50 ہزار روپے خرچ آیا جس کے بعد اس حوالے سے کچھ رپورٹرز نے تفتیش شروع کر دی ۔تاہم دی نیوز کی رپورٹ کے مطابق عندلیب عباس سے وزارت عظمیٰ کی تقریب پر ہونے والے اخراجات سے متعلق معلومات کا ذریعہ پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ مجھے نہیں معلوم ، ہو سکتا ہے کہ میں غلط ہوں، میں نے یہ معلومات ملیحہ ہاشمی سے لی تھیں جو پاکستان تحریک انصاف کی کارکن ہے۔ ایوان صدر کے حکام نے عندلیب عباس کے ٹویٹ میں بیان کیے گئے اخراجات کی تردید کی اورکہا کہ ایسا کچھ نہیں ہوا ، اس بات میں کوئی صداقت نہیں ہے۔

رپورٹ میں میں بتایا گیا کہ ایوان صدر میں وزارت عظمیٰ کی حلف برداری تقریب کے اخراجات سے متعلق بحث کا آغاز عندلیب عباس کے ٹویٹ سے ہوا۔ عندلیب عباس کے ذرائع کےمطابق پیپلزپارٹی کے وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کی تقریب حلف برداری پر2008ء میں 76لاکھ روپے خرچ ہوئے۔ 2013ء میں مسلم لیگ ن کے وزیراعظم نوازشریف کی ایوان صدر میں تقریب حلف برداری پر92لاکھ روپے خرچ ہوئے۔اور اب 2018ء میں تحریک انصاف کے وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پرتقریب حلف برداری کوانتہائی سادہ رکھا گیا جس کے باعث حلف برداری کی تقریب پر صرف 50ہزار روپے خرچ ہوئے۔ عندلیب عباس کے اس ٹویٹ کے اسکرین شاٹس کافی وائرل ہوئے جس پر ایک شخص نے ایوان صدر سے اس ٹویٹ کی حقیقت سے متعلق دریافت کیا تو انہیں بتایا گیا کہ عندلیب عباس نے ایک جھوٹی خبر پوسٹ کی۔ایوان صدر میں ‘عدنان’ نامی کوئی ڈپٹی ڈائریکٹر موجود نہیں ہے۔ تفتیش کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ ایوان صدر میں عدنان نامی ایک شخص موجود تو ہے لیکن وہ ڈپٹی ڈائریکٹر نہیں بلکہ صدر کا ڈائریکٹر آف کوآرڈینیشن ہے۔ عدنان مجید سے اس سلسلے میں رابطہ کیا گیا تو انہوں اس بات پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہمیرا فنانس سے دور دور تک کوئی تعلق نہیں ہے تو تقریب حلف برداری کے اخراجات کا مجھے کس طرح علم ہو گا؟ عدنان کے اس بیان کے بعد عندلیب عباس سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ مجھے نہیں پتہ ، میں غلط بھی ہو سکتی ہوں، میں نے یہ معلومات ملیحہ ہاشمی سے لی تھیں جو پاکستان تحریک انصاف کی کارکن ہے۔اور جب ملیحہ ہاشمی سے اس حوالے سے دریافت کیا گیا تو انہوں نے بھی اس بات کی تردید کی اور حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایوان صدر میں عدنان نامی کوئی ڈپٹی ڈائریکٹر موجود نہیں ہے۔ ملیحہ نے کہا کہ میں اس حوالے سے پارٹی ذرائع سے ضرور تصدیق کروں گی کہ کس نے بغیر تحقیق یہ نام دے دیا۔ کابینہ ڈویژن کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ نواز شریف کی تقریب حلف برداری پر 9.2 ملین کی بجائے صرف ساڑھے چار لاکھ ، شاہد خاقان عباسی کی تقریب حلف برداری پر 40 ہزار اور ناصر الملک کی تقریب حلف برداری پر 36 ہزار روپے خرچ کیے گئے۔ان تمام انکشافات کے بعد عندلیب عباس کا دعویٰ جھوٹا اور بے بنیاد ثابت ہو گیا۔ یاد رہے کہ ٹویٹر پر پی ٹی آئی کی رہنماء عندلیب عباس نے اپنے پیغام میں کہا تھا کہ یہ سادگی ہوتی ہے۔ وزیراعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری کے لیے صرف 50ہزار اخراجات کیے گئے ہیں۔ ان اخراجات میں تقریب حلف برداری میں آنے والے مہمانوں کے لیے دودھ، چائے ، بسکٹ اور پھول سمیت بجلی کا بل بھی شامل ہے۔تاہم اس سے قبل پیپلزپارٹی کے وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کی تقریب حلف برداری پر2008ء میں 76لاکھ روپے خرچ ہوئے۔ 2013ء میں مسلم لیگ نکے وزیراعظم نوازشریف کی ایوان صدر میں تقریب حلف برداری پر92لاکھ روپے خرچ ہوئے۔تاہم اب 2018ء میں تحریک انصاف کے وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پرتقریب حلف برداری کوانتہائی سادہ رکھا گیا جس کے باعث حلف برداری کی تقریب پر صرف 50ہزار روپے خرچ ہوئے ہیں۔ اگر ماضی کی نسبت عمران خان کی تقریب کا موازنہ کیا جائے توماضی کے دو ادوار حکومت کے وزراء کی تقریب حلف برداری پر80لاکھ سے زائد پاکستان کی عوام کے پیسے خرچ ہوئے۔

Print Friendly, PDF & Email
مسلم لیگ ن نے نوازشریف کیلئے انصاف دوتحریک شروع کرنے کا فیصلہ
برطانوی عوام سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کو برطانیہ بدر کرنے کے لیے میدان میں آگئی
Translate News »