مسلم لیگ ق نے کا تحریک انصاف کے رویے پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کو تحفظات سے آگاہ کرنے کا فیصلہ     No IMG     تحریک انصاف نے سابق صدرآصف علی زرداری کی نااہلی کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے سانحہ ساہیوال پر بغیر تحقیقات کے بیانات دینے پر وزرا اور پنجاب پولیس پر سخت اظہار برہمی     No IMG     وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری کی جسٹس ثاقب نثارپرتنقید، موجود چیف جسٹس کی تعریف     No IMG     برطانیہ میں بھی برف باری سے شدید سردی     No IMG     برطانیہ کے سابق وزیراعظم کے جان میجر نے موجودہ وزیرِاعظم تھریسا مے سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ یورپ سے علیحدگی (بریگزٹ) پر ریڈ لائن سے پیچھے ہٹ جائیں     No IMG     میکسیکو میں پیٹرول کی پائپ لائن میں دھماکے اور آگ لگنے کے حادثے میں ہلاکتوں کی تعداد 73 ہوگئی     No IMG     امریکی سینیٹر لنزے گراہم کی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات     No IMG     سی ٹی ڈی کے مطابق ذیشان کا تعلق داعش سے تھا ,صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت     No IMG     وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کو معلوم ہی نہیں پھولوں کا گلدستہ کہاں پیش کرنا ہے کہاں نہیں؟     No IMG     لاہورمیں شہریوں نے پولیس کی دھلائی کر ڈالی، بھاگ کر جان بچائی     No IMG     وزارتِ تجارت نےکاروں کی درآمد پر لگائی جانی والی پابندیوں پر نظر ثانی کرتے ہوئے انہیں مزید سخت کردیا     No IMG     خواتین کے مساوی حقوق اور تشدد کے خاتمے کے لیے امریکہ، برطانیہ سمیت مختلف ممالک میں خواتین کی جانب سے ریلیاں نکالی گئیں۔     No IMG     فرانس میں صدر میکروں کی حکومت کے خلاف پیلی جیکٹ والوں کا احتجاج اس ہفتے بھی جاری رہا، کئی مقامات پر پولیس اور مظاہرین میں جھڑپیں     No IMG     وزیراعلیٰ پنجاب نے اعلیٰ سطحی اجلاس طلب کرلیا     No IMG    

سپریم کورٹ میں ڈی پی او پاکپتن تبادلہ کیس کی سماعت
تاریخ :   08-10-2018

اسلام آباد( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو )سپریم کورٹ آف پاکستان میں ڈی پی او پاکپتن تبادلہ کیس کی سماعت ہوئی ۔ تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی۔ سماعت کے دوران چیف جسٹس نے جمع شدہ جوابات پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میں تو

وزیراعلیٰ پنجاب کا جواب پڑھ کر حیران رہ گیا ،آرٹیکل 62 ایف ون کے تحت کارروائی کروائیں گے تو نیا پاکستان بن جائے گا، کہ یہ ہے آپ کی حکومت جو ڈیلیور کرنے لگی ہے نیا پاکستان،، کہا جاتا ہے جب تک پی ٹی آئی حکومت رہےگی یہ ہی وزیراعلیٰ رہیں گے، کیا یہ ہے نیا پاکستان۔۔
ڈی پی او اتنا پلید ہو گیا کہ وزیراعلیٰ نے کہا کہ میں اس کی شکل نہیں دیکھوں گا، آ گئے ہیں اکٹھے ہو کر نیا پاکستان بنانے۔
چیف جسٹس نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کہتے ہیں کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت رہنے تک عثمان بزدار ہی وزیراعلیٰ پنجاب رہیں گے۔ اگر عثمان بزدار وزیراعلیٰ پنجاب رہےتو عدالت کےحکم کے تحت رہیں گے۔ چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ ہم قانون کی حکمرانی کی کوشش کر رہے ہیں ا ور آپ اس کی دھجیاں اُڑا رہے ہیں۔

کیا آپ وکلا ایسا رُول آف لاء چاہتے ہیں؟ جہاں رُول آف لاء کی بات آئے گی میں کسی لیڈر کو نہیں مانتا، میری طرف سے اس حوالے سے وزیراعظم کو ناپسندیدگی کا بتا دیں ، میں تو پانچ دن میں اس بندے سے پریشان ہو گیا ہوں۔ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے عدالت سے کیس کو دوسرے زاویے سے دیکھنے کی استدعا کی۔ چیف جسٹس نے کہا کہ معاملے کو جس زاویے سے بھی دیکھیں حقائق وہی رہیں گے، ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے کہا کہ معاملہ حساس تھا اسی لیے احسن جمیل نے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے بات کی۔
چیف جسٹس کہا کہ وزیراعلیٰ نے تو ملاقات نہیں کی بلکہ پرائیویٹ شخص کو ملاقات کے لیے بُلایا۔ ایڈووکیٹ جنرل ، وزیراعلیٰ خالق داد لک سے متعلق کیا زبان استعمال کی؟ آپ ایک بہترین افسر کے بارے میں ایسا لکھ رہے ہیں۔ میں خود اس معاملے کی انکوائری کر لیتا ہوں۔ کہتے ہیں تو جے آئی ٹی بنوا لیتے ہیں۔ آپ نے انکوائری افسر پر ذاتی نوعیت کے الزامات عائد کیے ہیں۔
آپ معافی کے دائرے سے باہر نکلتے جا رہے ہیں۔ ایڈووکیٹ جنرل ، آپ اس معاملے کو آسان لے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کسی کو یہ توفیق نہیں ہوئی کہ عدالت میں شرمساری کا اظہار کرے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ کیا ڈی پی او پلید ہو گیا تھا کہ آدھی رات کو اس کا تبادلہ کیا گیا ؟ جس پر سابق آئی جی کلیم امام نے عدالت مجں ندامت کا اظہار کیا۔ کلیم امام نے کہا کہ میں خود کو عدالت کے رحم و کرم پر چھوڑتا ہوں۔
جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ آپ اپنی غلطی کی تحریر معافی لکھ کر لائیں۔دوران سماعت احسن بھون نے کہا کہ میں 1980ء سے احسن جمیل گجر کو جانتا ہوں۔ وکیل رہنما احسن بھون عدالت میں روسٹرم پر آئے تو عدالت نے انہیں منع کر دیا۔ عدالت نے وزیراعلیٰ پنجاب اور سابق آئی جی امام کلیم کو تحریری معافی نامے عدالت میں جمع کروانے کی ہدایت کی۔۔عدالت نے احسن اقبال جمیل گجر کو بھی تحریری معافی نامہ جمع کروانے کی ہدایت کر دی۔ اورچیف جسٹس نے احسن جمیل گجر کو ہدایت کی کہ معافی اسٹرانگ ورڈز میں مانگیں۔

Print Friendly, PDF & Email
ٹریفک پولیس کا سکول وین کے خلاف کارروائی کا سلسلہ جاری
جرمنی میں ایک تیز رفتار کار شہریوں پر چڑھ دوڑی جس کے نتیجے میں ڈرائیور سمیت 6 افراد زخمی
Translate News »