اسرائیلی فوج ’فوری طور پر حملے بند, کرے، ترکی     No IMG     یورپی فوج‘ تشکیل دی جائے ,چانسلر انگیلا میرکل     No IMG     ترکی میں مہاجرین کی کشتی ڈوبنے سے 3 بچوں سمیت 5 افراد ہلاک     No IMG     آرمی چیف کی زیر صدارت کمانڈرز کانفرنس     No IMG     ٹریفک کےمختلف حادثات میں 7 افراد جاں بحق     No IMG     اسٹاک مارکیٹ میں کاروباری سرگرمیوں کے آغاز کے ساتھ ہی مندی کا رحجان     No IMG     ایف بی آرنے وفاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے خلاف تحقیقات کیلئے قائم کردہ جے آئی ٹی کو معلومات فراہم کرنے سے انکار کردیا     No IMG     نیب ادارہ ختم کر دیا جا ئے ، اہم ترین اعلان     No IMG     آصف علی زرداری، فریال تالپور اور دیگر ملزمان کی عبوری ضمانت میں 10 دسمبر تک کی توسیع     No IMG     ہولناک ٹریفک حادثہ، ڈرائیور ہلاک، 7 افراد زخمی     No IMG     فلسطینیوں نے مقبوضہ علاقوں پر 200 راکٹ فائر کئے ہیں جن کے نتیجے میں 19 صہیونی زخمی     No IMG     بالی ووڈ اداکارہ راکھی ساونت کوغیر ملکی خاتون ریسلر سے پنگا مہنگا پڑگیا‘ اداکارہ ہسپتال پہنچ گئی     No IMG     موجودہ حکومت کے پاس نہ تو اہلیت ہے نہ ہی صلاحیت اور نہ ہی منصوبہ بندی,چیف جسٹس آف پاکستان     No IMG     چیئرمین نیب نے تمام افسران کے میڈیا کو انٹرویوز پر پابندی عائد کردی     No IMG     افریقی ملک یوگنڈا میں ایک اسکول میں آگ لگنے کے سبب 9 بچے ہلاک 40 زخمی     No IMG    

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے کہا ہے کہ ایران کی طرف سے یمنی ملیشیا گروہوں کو راکٹ سپلائی،
تاریخ :   07-11-2017

سعودی (ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو) ولی عہد محمد بن سلمان نے کہا ہے کہ ایران کی طرف سے یمنی ملیشیا گروہوں کو راکٹ سپلائی، سعودی عرب کے خلاف ’براہ راست عسکری جارحیت‘ ہے۔ ایران ایسے الزامات مسترد کرتا ہے کہ وہ حوثی باغیوں کو عسکری مدد فراہم کر رہا ہے۔

خبر رساں ادارے روئٹرز نے سعودی سرکاری نیوز ایجنسی SPA کے حوالے سے سات نومبر بروز منگل بتایا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے ایران پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ ریاض حکومت کے خلاف ’براہ راست جارحیت‘ کا مرتکب ہو رہا ہے۔

محمد بن سلمان نے کہا کہ یمن میں فعال ایران نواز حوثی باغیوں کو راکٹ کی سپلائی ’سعودی عرب کے خلاف جنگ‘ کے زمرے میں آ سکتی ہے۔ سعودی عرب کے ولی عہد اور وزیر دفاع محمد بن سلمان نے برطانوی وزیر خارجہ بورس جانسن سے ٹیلی فون میں گفتگو میں ان خیالات کا اظہار کیا۔

یمن کے دارالحکومت صنعاء سمیت ملک کے بڑے حصے پر قابض حوثی باغیوں نے ہفتہ چار نومبر کو سعودی دارالحکومت ریاض کی طرف ایک بیلسٹک میزائل فائر کیا تھا، جس سعودی فضائیہ نے ہوا میں ہی تباہ کر دیا تھا۔

سعودی عرب الزام عائد کرتا ہے کہ یمن کی خانہ جنگی میں تہران حکومت حوثی باغیوں کو عسکری مدد فراہم کر رہی ہے۔ تاہم ایران ان الزامات کو مسترد کرتا ہے۔

ریاض پر بیلسٹک میزائل فائر کرنے کے واقعے پر امریکا نے بھی ایران کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ واشنگٹن اور ریاض نے اس حملے پر ایران کی مذمت کرتے ہوئے اسے ’تباہ کن اور اشتعال انگیزی‘ قرار دیا تاہم تہران نے واضح کیا ہے کہ اس واقعے میں ایران ملوث نہیں ہے۔

سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر کے مطابق یمن میں حوثی باغیوں کے زیر قبضہ علاقوں سے یہ بیلسٹک میزائل لبنانی جنگجو گروہ حزب اللہ نے فائر کیا تھا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ یہ ’ایک ایرانی میزائل‘ تھا۔

میزائل حملے کے بعد سعودی عرب نے اعلان کیا ہے کہ وہ یمن سے متصل تمام تر ہوائی، زمینی اور بحری راستے بند کر رہا ہے۔ اس پیشرفت سے شورش زدہ ملک یمن میں انسانی بحران کی صورتحال مزید ابتر ہو سکتی ہے۔

یمن میں سن دو ہزار پندرہ سے جاری اس بحران کی وجہ سے نہ صرف ملکی بنیادی ڈھانچہ تباہ ہو چکا ہے بلکہ کم خوراکی اور حفظان صحت کی سہولیات کی عدم دستیابی سے شہری آبادی بری طرح متاثر ہو رہی ہے۔ اسی دوران یمن میں ہیضے کی وباء بھی پھیل چکی ہے۔ اقوام متحدہ کے اعدادوشمار کے مطابق خانہ جنگی کے شکار ملک یمن میں تقریبا نو لاکھ افراد ہیضے سے متاثر ہو چکے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
کابل اور اسلام آباد کے تعلقات کشیدہ ہونے کا خدشہ,سیاسی مبصرین
شامی جنگ دیرالزور میں ختم نہیں ہوئی,شامی صدر بشارالاسد

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Translate News »