پاکستان کو کشمیر نہیں چاہیے ہمارے سیاستدان تو اپنے 4 صوبے نہیں سنبھال سکتے۔شاہد خان آفریدی     No IMG     چین میں متعدد پاکستانیوں کی بیگمات گرفتار     No IMG     ساہیوال میں کارروائی کے دوران 3 دہشت گرد گرفتار     No IMG     فیصل آباد میں وکلاء کا احتجاج     No IMG     اوورسیز پاکستانیوں کیلئے نیا پاکستان کالنگ ویب پورٹل کا افتتاح     No IMG     بلوچستان ریلوے کی بہتری کیلئے انقلابی اقدامات کئے جارہے ہیں, وفاقی وزیر ریلوے     No IMG     اسمبلی کی تقریر کو عدالت میں بطور ثبوت پیش نہیں کیا جا سکتا,سابق وزیر اعظم     No IMG     اسرائیلی فوج ’فوری طور پر حملے بند, کرے، ترکی     No IMG     یورپی فوج‘ تشکیل دی جائے ,چانسلر انگیلا میرکل     No IMG     ترکی میں مہاجرین کی کشتی ڈوبنے سے 3 بچوں سمیت 5 افراد ہلاک     No IMG     آرمی چیف کی زیر صدارت کمانڈرز کانفرنس     No IMG     ٹریفک کےمختلف حادثات میں 7 افراد جاں بحق     No IMG     اسٹاک مارکیٹ میں کاروباری سرگرمیوں کے آغاز کے ساتھ ہی مندی کا رحجان     No IMG     ایف بی آرنے وفاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے خلاف تحقیقات کیلئے قائم کردہ جے آئی ٹی کو معلومات فراہم کرنے سے انکار کردیا     No IMG     نیب ادارہ ختم کر دیا جا ئے ، اہم ترین اعلان     No IMG    

سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات ميں سروسز و مصنوعات پر پانچ فيصد ٹيکس
تاریخ :   27-12-2017

پاکستان، بنگلہ ديش، بھارت اور خطےکے ديگر ملکوں کے لاکھوں شہريوں ليے بغير ٹيکس کے آمدنی اور اشياء خليجی ممالک ميں ملازمت کی ايک اہم وجہ رہی ہے۔ تاہم اب يہ تبديل ہونے کو ہے۔

سعودی عرب متحدہ عرب امارات ٹيکس ميں چھوٹ دينے کے سبب ايک عرصے سے غير ملکی ملازمين کی توجہ کا مرکز بنے رہے ہيں ليکن اب يہ سلسلہ ختم ہونے کو ہے۔ دونوں ممالک آئندہ برس سے سامان و سروسز پر پانچ فيصد ٹيکس لگانے والے ہيں۔ يہ قدم عالمی منڈی ميں تيل کی قيمتوں ميں کمی کی وجہ سے ملکی آمدنی گھٹنے کے سبب اٹھايا گيا ہے اور اس کا مقصد کچھ اضافی منافع حاصل کرنا ہے۔ ’ويليو ايڈڈ ٹيکس‘ يا VAT کھانے پينے کی اشياء، کپڑے، اليکٹرونک مصنوعات، گيسولين، فون، پانی، بجلی اور ہوٹل کی قيمتوں پر لاگو ہو گا۔ مکانات کے کرائے، پراپرٹی، چند ادويات، ہوائی جہاز کے ٹکٹس اور اسکولوں کی ٹيوشن فيس جيسے اخراجات کو فی الحال ٹيکس سے استثنیٰ حاصل ہے۔ متحدہ عرب امارات ميں البتہ تعليم کے شعبے ميں بھی ٹيکس متعارف کرايا جا رہا ہے۔

دونوں ملکوں سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات ميں سروسز و مصنوعات پر پانچ فيصد ٹيکس کا اطلاق يکم جنوری سن 2018 سے شروع ہو رہا ہے۔ اطلاع ہے کہ ديگر خليجی ممالک بھی آئندہ برسوں ميں اپنی اپنی ٹيکس اسکيموں کا اعلان کرنے والے ہيں۔ واضح رہے کہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات ميں متعارف کرائے جانے والے ٹيکس کا اگر يورپی رياستوں سے موازنہ کيا جائے، تو يہ شرح کافی کم ہے۔ بيشتر يورپی ملکوں ميں VAT بيس فيصد ليا جاتا ہے۔

اس بارے ميں ابو ظہبی کے ايک اخبار نيشنل نيوز پيپر ميں شائع ہونے والی ايک رپورٹ کے مطابق اس پيش رفت کے بعد متحدہ عرب امارات ميں زندگی گزارنے کے اخراجات ميں اوسطاً ڈھائی فيصد کا اضافہ ہو گا۔ تنخواہيں البتہ وہی رہيں گی۔ در اصل حکومت تيل کی کم قيمتوں کی وجہ سے ملکی آمدنی ميں کمی کو پورا کرنے کے ليے يہ قدم اٹھا رہی ہے۔ ٹيکس سے متحدہ عرب امارات کی حکومت بارہ بلين درہم يعنی لگ بھگ 3.3 بلين ڈالر اکھٹے کرنا چاہتی ہے۔

دريں اثناء رياض حکومت نے حال ہی ميں اپنی تاريخ کے سب سے بڑے بجٹ کا اعلان کيا۔ حکومت آئندہ برس 978 بلين ريال يا 261 بلين ڈالر خرچ کرنا چاہتی ہے اور اس ميں ٹيکس سے حاصل کردہ اضافی آمدنی بھی شامل ہو گی۔

عالمی منڈيوں ميں تيل کی قيمتوں ميں کمی کے تناظر ميں عالمی مالياتی فنڈ نے تيل برآمد کرنے والے ممالک کو يہ تجويز دی تھی کہ وہ تيل سے حاصل ہونے والی آمدنی ميں کمی کو پورا کرنے کے ليے ’ويليو ايڈڈ ٹيکس‘ متعارف کرائيں۔ آئی ايم ايف کے مشرق وسطیٰ کے ليے ڈائريکٹر جہاد آزور کے مطابق ٹيکس متعارف کرانے سے طويل املدتی بنيادوں پر ان ممالک کا تيل کی آمدنی پر انحصار کم ہو گا۔

Print Friendly, PDF & Email
برطانیہ میں: غیرملکی طالبعلم دوران تعلیم ورک ویزا حاصل کرسکیں گے
بھارتی سزا یافتہ جاسوس‘ کلبھوشن یادیو سے پاکستان میں ملاقات: بھارت میں اب داخلی سیاست گرم

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Translate News »