آرمی چیف سے بحرین نیشنل گارڈ کے کمانڈر کی ملاقات     No IMG     اسرائیل کی جیل میں آگ بھڑک اٹھی، کئی کمرے جھلس گئے     No IMG     اسرائیلی فوج کی گھر گھر تلاشی15 فلسطینی شہری گرفتار     No IMG     وزیر ریلوے شیخ رشید کی نا اہلی کے لیے الیکشن کمیشن میں درخواست دائر     No IMG     فضائی حدود کی بندش، ائیرانڈیا کو کروڑوں کا نقصان     No IMG     دہشت گردی کا کوئی دین اور نسل نہیں ہوتی ,سعودی وزیر خارجہ     No IMG     ایران، عراق اور شامی افواج کے خون نے تینوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مزید مضبوط بنایا, بشار الاسد     No IMG     آصف زرداری اور فریال تالپور کی 10 دن کے لیے حفاظتی ضمانت منظور     No IMG     سابق وزیراعلی شہباز شریف کے خلاف ایک اور انکوائری شروع     No IMG     کینیڈین وزیر اعظم جسٹس ٹروڈو نے نیوزی لینڈ میں دہشت گردی کے واقعہ کی مذمت     No IMG     روسی صدر پوتن نے کہا ہے کہ وہ روس میں کرائسٹ چرچ جیسا دہشت گرد حملہ نہیں ہونے دیں گے     No IMG     برطانوی حکام نے نیوزی لینڈ کی مسجدوں میں ہوئی دہشت گردی کی طرز پر برطانیہ میں بھی واقعات پیش آنے کا خدشہ     No IMG     نیوزی لینڈ کی پارلیمنٹ کے پہلے اجلاس کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا     No IMG     نیوزی لینڈ مساجد پر دہشت گرد حملے سے متعلق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنے بیان پر میڈیا کی تنقید سے برہم     No IMG     نیوزی لینڈ کی قومی فٹسل ٹیم کے گول کیپر عطا الیان بھی کرائسٹ چرچ واقعے میں شہید     No IMG    

سابق وزیر اعظم نواز شریف، ان کی صاحبزادی مریم صفدر اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔
تاریخ :   07-11-2017

اسلام آباد(ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو) سابق وزیر اعظم نواز شریف، ان کی صاحبزادی مریم صفدر اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔سابق وزیراعظم نوازشریف‘ان کی صاحبزادی مریم صفدر اور داماد کیپٹن صفدر احتساب عدالت میں پیشی کے بعد عدالت سے روانہ ہوگئے ہیں -اس موقع پر سیکورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیئے گئے تھے-پونے دوگھنٹوں تک جاری رہنے والی عدالتی کاروائی کے دوران نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نے اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کی کاپی عدالت میں پیش کی اور تینوں ریفررنسزکو یکجا کرنے کے لیے ایک نئی درخواست دائر کی گئی ہے جبکہ نیب کی جانب سے دائردرخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نوازشریف پر دوبارہ فردجرم عائد کی جائے -نوازشریف کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ تینوں ریفررنسزمیں گواہان مشترک ہیں اور اثاثوں کی تفصیلات بھی ایک ہیں لہذا ریفررنسزکو یکجا کرکے ایک ریفررنس دائر کیا جائے-نوازشریف کی عدالت سے روانگی کے بعد عدالت نے10منٹ کے وقفے کا اعلان کیا جس کے بعد نیب کے پراسکیوٹردلائل دیں گے-اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نیب ریفرنسز کی سماعت کررہے ہیں۔نواز شریف کی تین نیب ریفرنسز کو یک جا کرکے ایک فرد جرم عائد کرنے کی درخواست پر سماعت کا امکان ہے۔نواز شریف، مریم نوازاور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر جوڈیشل کمپلیکس کے اطراف سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔ پولیس اور ایف سی کی بھاری نفری تعینات ہے، جبکہ نون لیگ کے کارکنوں کی بڑی تعداد بھی موجود ہے۔اسلام آباد میں ایس ایس پی سیکورٹی جمیل احمدہاشمی کافیڈرل جوڈیشل کمپلیکس کادورہ کیا اور عمارت کی سیکیورٹی صورتحال کاجائزہ بھی لیا۔سابق وزیر اعظم نواز شریف پنجاب ہاﺅس سے احتساب عدالت کے لیے روانہ ہوئے تو مئیر اسلام آباد، امیر مقام، تہمینہ دولتانہ اور دیگر راہنماپنجاب ہاﺅس میں موجود تھے۔احتساب عدالت نے 19 اکتوبر کونواز شریف کی تینوں ریفرنسز یک جا کرنے کی درخواستیں مسترد کر دی تھی جس کے بعد فیصلے کو چیلنج کیا گیا تو اسلام آباد ہائی کورٹ نے ان درخواستوں پردوبارہ سماعت کرنے کاحکم دیا۔نواز شریف کے وکیل اعظم نذیر تارڑ نے عدالت کو بتایا تھا کہ درخواست مسترد کرنے کی کوئی قانونی وجہ بیان نہیں کی گئی ، آمدن سے زائد اثاثے بنانے کے ایک الزام پر صرف ایک ریفرنس چلایا جا سکتا ہے۔ سابق وزیراعظم نواز شریف، ان کی بیٹی اور داماد اپنے خلاف دائر ریفرنسز کی سماعت کے موقع پر احتساب عدالت میں پیش ہو گئے ہیں۔احتساب عدالت کے جج محمد بشیر اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں نواز شریف کی جانب سے دائر کی جانے والی ان درخواستوں کو دوبارہ سنیں گے جس میں ان کے خلاف دائر تینوں ریفرنسز کو اکٹھا کرنے کی استدعا کی گئی تھی۔احتساب عدالت میں نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث درخواستوں کے حق میں دلائل دے رہے ہیں۔ تاہم عدالت نے جن دو گواہوں کو بیانات ریکارڈ کروانے کے لیے طلب کیا تھا ان کے سمن معطل کر دیے گئے ہیں۔احتساب عدالت پہلے ان درخواستوں پر فیصلہ دے گی جس کے بعد اس مقدمے کی کارروائی آگے بڑھنے کا امکان ہے۔احتساب عدالت کے جج نے 19 اکتوبر کو ملزم نواز شریف کی طرف سے ان ریفرنسز کو اکھٹا کرنے سے متعلق درخواستیں مسترد کر دی تھی۔اس کے علاوہ ان کی غیر موجودگی میں تینوں ریفرنسز میں ان پر فرد جرم بھی عائد کی تھی۔ جس کے خلاف نواز شریف نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست دی تھی۔گذشتہ ہفتے احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف اور ان کے بچوں اور داماد کے خلاف دائر ریفرنسز کی سماعت سات نومبر تک ملتوی کر دی تھی تاہم عدالت نے انھیں حاضری سے استثنیٰ نہیں دیا تھا۔ نیب نے 8 ستمبر کو نوازشریف اور ان کے بچوں کے خلاف لندن فلیٹس، آف شورکمپنیوں، عزیزیہ اسٹیل اور ہل میٹل کمپنی سے متعلق 3 مقدمات درج کیے۔ان مقدمات میں نیب آرڈیننس کی سیکشن 9 اے لگائی گئی ہے جو غیرقانونی رقوم اور تحائف کی ترسیل سے متعلق ہے۔ جرم ثابت ہونے کی صورت میں ملزمان کو 14 سال قید کی سزا ہوسکتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
جنرل قمر جاوید باجوہ کی ایران کی فوجی اور سیاسی قیادت سے ملاقاتیں،
سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے ذاتی رنجش کے باعث گرفتار کرنے کا حکم دیا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Translate News »