آرمی چیف سے بحرین نیشنل گارڈ کے کمانڈر کی ملاقات     No IMG     اسرائیل کی جیل میں آگ بھڑک اٹھی، کئی کمرے جھلس گئے     No IMG     اسرائیلی فوج کی گھر گھر تلاشی15 فلسطینی شہری گرفتار     No IMG     وزیر ریلوے شیخ رشید کی نا اہلی کے لیے الیکشن کمیشن میں درخواست دائر     No IMG     فضائی حدود کی بندش، ائیرانڈیا کو کروڑوں کا نقصان     No IMG     دہشت گردی کا کوئی دین اور نسل نہیں ہوتی ,سعودی وزیر خارجہ     No IMG     ایران، عراق اور شامی افواج کے خون نے تینوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مزید مضبوط بنایا, بشار الاسد     No IMG     آصف زرداری اور فریال تالپور کی 10 دن کے لیے حفاظتی ضمانت منظور     No IMG     سابق وزیراعلی شہباز شریف کے خلاف ایک اور انکوائری شروع     No IMG     کینیڈین وزیر اعظم جسٹس ٹروڈو نے نیوزی لینڈ میں دہشت گردی کے واقعہ کی مذمت     No IMG     روسی صدر پوتن نے کہا ہے کہ وہ روس میں کرائسٹ چرچ جیسا دہشت گرد حملہ نہیں ہونے دیں گے     No IMG     برطانوی حکام نے نیوزی لینڈ کی مسجدوں میں ہوئی دہشت گردی کی طرز پر برطانیہ میں بھی واقعات پیش آنے کا خدشہ     No IMG     نیوزی لینڈ کی پارلیمنٹ کے پہلے اجلاس کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا     No IMG     نیوزی لینڈ مساجد پر دہشت گرد حملے سے متعلق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنے بیان پر میڈیا کی تنقید سے برہم     No IMG     نیوزی لینڈ کی قومی فٹسل ٹیم کے گول کیپر عطا الیان بھی کرائسٹ چرچ واقعے میں شہید     No IMG    

خواجہ آصف کی نااہلی کے اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف پٹیشن پر سپریم کورٹ نے اپنا تفصیلی فیصلہ جاری
تاریخ :   20-10-2018

اسلام آباد( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) پاکستان مسلم لیگ(ن) کے رہنما خواجہ آصف کی نااہلی کے اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف پٹیشن پر سپریم کورٹ نے اپنا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ہے. تفصیلی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ کسی بھی منتخب رکن کو آئین کے آرٹیکل 62(1) ایف کے تحت اس وقت تک

زندگی بھر کے لیے نااہل قرار نہیں دیا جاسکتا جب تک اس پر بددیانتی کا الزام ثابت نہ ہوجائے.
جسٹس فیصل عرب کے لکھے گئے تفصیلی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ آئین کے آرٹیکل 62 (1) ایف کے اطلاق سے پارلیمنٹ کا یہ مقصد ہر گز نہیں کہ اثاثے نہ ظاہر کرنے جیسی بھول کے لیے ایک منتخب رکن کو ہمیشہ کے لیے ناہل قرار دے دیا جائے.
خیال رہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے 26 اپریل کو خواجہ آصف کو امارتی کمپنی کی جانب سے لی گئی تنخواہ نہ ظاہر کرنے پر آرٹیکل 62 (1) ایف کے تحت نااہل قرار دے دیا تھا.

اس فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں دی گئی درخواست میں انہوں نے موقف اختیار کیا تھا کہ ان پر بدعنوانی، دھوکہ دہی، غبن، دولت کا ناجائز استعمال ، منی لانڈرنگ، عوامی املاک یا وسائل کو نقصان پہنچانے یا ذاتی مفاد کے لیے عوام کے دیے گئے اختیار کا غلط استعمال کرنے کا کوئی الزام نہیں. سپریم کورٹ میں اس درخواست کی سماعت جسٹس فیصل عرب کی سربراہی میں جسٹس عمر عطا بندیال پر مشتمل 3 رکن بینچ نے کی تھی.
تفصیلی فیصلے میں کہا گیا کہ تمام طرح کے اثاثے ظاہر نہیں کرنے کو ایک ہی تناظر میں نہیں دیکھا جاسکتا، ہماری نظر میں اس سلسلے میں کوئی پیمانہ مقرر نہیں کیا جاسکتا جس کے تحت کاغذاتِ نامزدگی میں ظاہر کیے گئے اثاثوں میں ہونے والی کوتاہی کو جواز بنا کر کسی بے ایمان قرار دینا اور اس کے تحت زندگی بھر کے لیے نااہل کیے جانے کی سزا دی جائے.
خواجہ آصف کے کیس کا حوالہ دیتے ہوئے فیصلے میں کہا گیا کہ ان کی نااہلی کے لیے ابو ظہبی کے نیشنل بینک میں موجود اکاﺅنٹ میں 5 ہزار درہم کو جواز بنایا گیا. خواجہ آصف نے عام انتخابات کے لیے جمع کروائے گئے کاغذاتِ نامزدگی میں کسی غلطی کی بنا پر اثاثوں کی فہرست میں مذکورہ اکاﺅنٹ کا ذکر نہیں کیا البتہ2015 میں آر او پی اے کے سیکشن 42 اے کے تحت جمع کروائے گئے اثاثوں کی تفصیلات میں انہوں نے اس کا ذکر کیا تھا.
تفصیلی فیصلے میں کہا گیا کہ مذکورہ اکاﺅنٹ کی مکمل بینک اسٹیٹمنٹ ریکارڈ پر موجود ہے جس کے مطابق درخواست گزار نے 17 اپریل 2010 کو یہ اکاﺅنٹ 5 ہزار درہم کی رقم سے کھولا اور 5 سال بعد 7 جولائی 2015 کو بند کردیا. چناچہ اس معاملے میں نہ تو مفادات کا ٹکراو موجود ہے نہ ہی اثاثوں کے حوالے سے غلط بیانی کرنا پایا گیا.

Print Friendly, PDF & Email
آئل ٹینکرزمالکان نے کل سے ملک بھرمیں ہڑتال کااعلان
سعودی حکومت نے ترکی میں قونصل خانے کے اندر صحافی جمال خاشقجی کی موت تصدیق کردی
Translate News »