دنیا بھر میں آج ہندو برادری اپنا مذہبی تہوار ہولی منا رہی ہے     No IMG     افغانستان کے صوبے ہرات میں سیلاب سے 13 افراد کے جاں بحق ہونے سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 63 ہوگئی     No IMG     لیبیا میں پناہ گزینوں کو لے جانے والی کشتی ڈوب گئی جس کے نتیجے میں 9 افراد ہلاک     No IMG     اسرائیلی دہشت گردی، غرب اردن میں مزید3 فلسطینیوں کو شہید کردیا     No IMG     پیپلز پارٹی کےچیئرمین نے 3 وفاقی وزرا کو فارغ کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     وزیراعظم عمران خان کی ہولی کے تہوار پر ہندو برادی کو مبارک باد     No IMG     سابق وزیراعظم نوازشریف نے ای سی ایل سے نام نکالنے کی درخواست دائر کردی     No IMG     سمجھوتہ ایکسپریس کیس کا فیصلہ 12 سال بعد بھی تاخیر کا شکار     No IMG     وزیر اعظم آئین کے آرٹیکل 214 کی شق دو اے پر عمل کرنے میں ناکام     No IMG     روس کے وزیر دفاع سرگئی شویگو نے شام کے صدر بشار اسد سے ملاقات     No IMG     بھارت اور پاکستان متنازع معاملات مذاکرات کے مذاکرات کے ذریعے حل کریں,چین     No IMG     بریگزیٹ پرٹریزامے کی حکمت عملی انتہائی کمزورہے، ٹرمپ     No IMG     امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو کی کویت کے بادشاہ سے ملاقات     No IMG     نیوزی لینڈ میں جمعہ کو سرکاری ریڈیو اور ٹی وی سے براہ راست اذان نشر ہوگی,جیسنڈا آرڈرن     No IMG     جھوٹی گواہی دینے پر کاروائی کی جائے گی،عدالتیں جھوٹے گواہ کے خلاف کسی قسم کی لچک نہ دکھائیں,۔چیف جسٹس آف پاکستان     No IMG    

جنوبی کوریائی، شمالی کوریا کے رہنما کی تاریخی ملاقات
تاریخ :   27-04-2018

جنوبی کوریا- شمالی کوریا (ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو)   دونوں کوریائی ریاستوں کے اعلیٰ ترین رہنماؤں کی ایک تاریخی ملاقات آج جمعہ ستائیس اپریل کو ہوئی۔ جنوبی کوریائی صدر مُون جے اِن سے ملاقات کے لیے کمیونسٹ شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اُن آج پہلی بار جنوبی کوریا پہنچے تھے۔

جنوبی کوریا میں گویانگ سے ملنے والی نیوز ایجنسی اے ایف پی کی رپورٹوں کے مطابق جزیرہ نما کوریا پر 65 برس قبل جو جنگ ختم ہوئے بغیر محض ایک جنگ بندی معاہدے کے ساتھ رک گئی تھی، اس کے بعد سے اور شمالی کوریا کی تاریخ میں کم جونگ اُن وہ پہلے رہنما بن گئے ہیں، جنہوں نے جنوبی کوریا کا دورہ کیا ہے۔
کمیونسٹ شمالی کوریا کے رہنما اُن کے اس دورہ جنوبی کوریا کی علامتی اہمیت انتہائی زیادہ ہے۔ انہوں نے دونوں ہمسایہ حریف ریاستوں کو تقسیم کرنے والی فوجی حد بندی لائن کو عبور کر کے آج جب جنوبی کوریائی سرزمین پر قدم رکھا تو گرم جوشی سے ہاتھ ملا کر ان کا استقبال کرنے کے لیے جنوبی کوریا کے صدر مُون جے اِن ذاتی طور پر موجود تھے۔

گزشتہ 65 برسوں میں جنوبی کوریا جانے والے پہلے شمالی کوریائی رہنما کے طور پر کم جونگ اُن نے بعد میں کہا کہ ایسا کرتے ہوئے وہ ’جذبات سے لبریز‘ تھے۔
جنوبی کوریا میں داخلے کے بعد کم جونگ اُن ہی کی دعوت پر ایک بڑا علامتی قدم یہ بھی تھا کہ یہی دونوں رہنما ایک دوسرے کا ہاتھ پکڑے مشترکہ فوجی حد بندی لکیر پار کر کے کچھ دیر کے لیے شمالی کوریا میں بھی داخل ہو گئے۔
اس کے بعد یہ دونوں سربراہان جنوبی کوریائی علاقے میں واقع سرحدی گاؤں پان مُون جوم میں قائم اس ’پیس ہاؤس‘ یا ’ایوان امن‘ میں چلے گئے، جہاں ان کی پہلی باہمی ملاقات عمل میں آئی۔ 1953ء میں کوریائی جنگ میں فائر بندی کے بعد سے مجموعی طور پر یہ تیسرا موقع ہے کہ شمالی اور جنوبی کوریائی رہنماؤں کی آپس میں کوئی ملاقات ہوئی ہے۔

شمالی کوریا پر اس کے متنازعہ ایٹمی پروگرام اور وہاں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی وجہ سے بین الاقوامی سطح پر شدید تنقید بھی کی جاتی ہے۔ لیکن اس موقع پر کم جونگ اُن نے کہا، ’’میں تاریخ کے ایک نئے باب کے آغاز پر ایک مثبت ابتدائی اشارہ دینے کا عزم لے کر یہاں آیا ہوں۔‘‘
اسی طرح جنوبی کوریائی صدر اِن نے امید ظاہر کی کہ جلد ہی ایک ایسا دوطرفہ معاہدہ طے پا سکے گا، جو امن کے خواہش مند دونوں کوریائی ریاستوں کے تمام باشندوں کے لیے ایک تحفہ ہو گا۔‘‘ اس سمٹ کے موقع پر دونوں رہنماؤں کے ساتھ ان کے قریبی معاونین بھی تھے
شمالی کوریائی رہنما کے ساتھ ان کی ہمشیرہ اور قریبی مشیر کم یو جونگ کے علاوہ کمیونسٹ کوریا کے بین الکوریائی تعلقات کے شعبے کے سربراہ بھی تھے۔ اسی طرح جنوبی کوریائی صدر کے ہمراہ ان کے ملک کے انٹیلیجنس سربراہ اور چیف آف سٹاف بھی تھے۔
اس سمٹ کے پہلے دور کے بعد مقامی وقت کے مطابق جمعے کو بعد دوپہر تک ملنے والی رپورٹوں میں بتایا گیا ہے کہ اس ملاقات میں دونوں لیڈروں نے ایٹمی ہتھیاروں کے خاتمے کے علاوہ قیام امن کے امکانات پر بھی بات چیت کی۔

جنوبی کوریائی صدر کے دفتر کے ایک ترجمان نے بعد ازاں بتایا، ’’صدر مُون جے اِن اور شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اُن نے جزیرہ نما کوریا کو غیر ایٹمی خطہ بنانے کے موضوع پر انتہائی سنجیدگی اور ایمانداری سے تبادلہ خیال کیا۔‘‘

گویانگ سے موصولہ تازہ ترین رپورٹوں کے مطابق اس سمٹ کے بعد اس موقع پر دی جانے والی سرکاری ضیافت میں دونوں ممالک کی خواتین اوّل بھی شریک ہوں گی۔

Print Friendly, PDF & Email
بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی اور چینی صدر شی جن پنگ کی ملاقات آج ہوگی
پنجاب حکومت کا شاندار اقدام صوبے بھر کے عارضی ملازمین کو مستقل کرنے کا بل منظور

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Translate News »