پاک فوج نے ایک آپریشن میں 4 مغوی ایرانی فوجیوں کو بازیاب کرالیا     No IMG     دنیا بھر میں آج ہندو برادری اپنا مذہبی تہوار ہولی منا رہی ہے     No IMG     افغانستان کے صوبے ہرات میں سیلاب سے 13 افراد کے جاں بحق ہونے سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 63 ہوگئی     No IMG     لیبیا میں پناہ گزینوں کو لے جانے والی کشتی ڈوب گئی جس کے نتیجے میں 9 افراد ہلاک     No IMG     اسرائیلی دہشت گردی، غرب اردن میں مزید3 فلسطینیوں کو شہید کردیا     No IMG     پیپلز پارٹی کےچیئرمین نے 3 وفاقی وزرا کو فارغ کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     وزیراعظم عمران خان کی ہولی کے تہوار پر ہندو برادی کو مبارک باد     No IMG     سابق وزیراعظم نوازشریف نے ای سی ایل سے نام نکالنے کی درخواست دائر کردی     No IMG     سمجھوتہ ایکسپریس کیس کا فیصلہ 12 سال بعد بھی تاخیر کا شکار     No IMG     وزیر اعظم آئین کے آرٹیکل 214 کی شق دو اے پر عمل کرنے میں ناکام     No IMG     روس کے وزیر دفاع سرگئی شویگو نے شام کے صدر بشار اسد سے ملاقات     No IMG     بھارت اور پاکستان متنازع معاملات مذاکرات کے مذاکرات کے ذریعے حل کریں,چین     No IMG     بریگزیٹ پرٹریزامے کی حکمت عملی انتہائی کمزورہے، ٹرمپ     No IMG     امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو کی کویت کے بادشاہ سے ملاقات     No IMG     نیوزی لینڈ میں جمعہ کو سرکاری ریڈیو اور ٹی وی سے براہ راست اذان نشر ہوگی,جیسنڈا آرڈرن     No IMG    

جرمن وزیر خارجہ زیگمار گابریئل اسرائیل اور فلسطین کے دورے پر
تاریخ :   31-01-2018

نو ماہ قبل جرمن(ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو)  وزیر خارجہ زیگمار گابریئل کا دورہ اسرائیل دونوں ممالک کے باہمی تعلقات میں مزید سرد مہری کا سبب بن گیا تھا۔ اور اس وقت اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے ان کے ساتھ طے شدہ ملاقات منسوخ کر دی تھی۔

اسرائیلی وزیر اعظم کی جانب سے ملکی دورے پر آئے ہوئے جرمن وزیر خارجہ زیگمار گابریئل سے ملاقات نہ کرنے کے فیصلے کے نو ماہ بعد گابریئل پہلی مرتبہ تل ابیب پہنچ گئے ہیں۔ اس دورے کے دوران وہ نیتن یاہو سے ملاقات کے بعد فلسطینی وزیر اعظم محمود عباس سے بھی ملیں گے۔

گزشتہ برس اپریل میں جرمن وزیر خارجہ زیگمار گابریئل نے اپنے دورہ اسرائیل کے دوران اسرائیل میں انسانی حقوق کے لیے سرگرم غیر سرکاری تنظیموں کے نمائندوں سے بھی ملاقات کی تھی۔ ان تنظیموں میں سے ایک ایسی بھی تھی جو مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں اسرائیلی فوجیوں کے تشدد کے بارے میں شواہد بھی جمع کرتی ہے۔ تل ابیب حکومت جرمن وزیر خارجہ کی ان ملاقاتوں سے ناخوش تھی تاہم اس کے باوجود زیگمار گابرئیل نے یہ ملاقاتیں منسوخ نہ کرنے کا فیصلہ کیا تھا

اسی کے ردِ عمل میں اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے یہ کہتے ہوئے جرمن وزیر خارجہ سے طے شدہ ملاقات منسوخ کر دی تھی کہ وہ ’’کسی ایسے شخص کی میزبانی نہیں کر سکتے جو اسرائیلی فوجیوں پر ’الزام تراشی‘ کرنے والے گروپ سے ملاقات کر رہا ہو‘‘۔

اس واقعے کے بعد اسرائیل اور اس کے اہم یورپی اتحادی ملک جرمنی کے مابین سفارتی تعلقات سرد مہری کا شکار ہو گئے تھے۔ اس واقعے کے نو ماہ بعد اب زیگمار گابریئل دوبارہ اسرائیل اور فلسطین کے دورے پر پہنچے ہیں۔ اس مرتبہ گابریئل اسرائیلی وزیر اعظم سے ملاقات کے بعد راملہ بھی جائیں گے جہاں وہ محمود عباس سے بھی ملاقات کریں گے۔

گابریئل اس سے قبل بھی اسرائیل پر تنقید کرتے رہے ہیں۔ سن 2012 میں مغربی کنارے کے دورے کے بعد انہوں نے اپنے فیس بُک اکاؤنٹ پر جاری کردہ ایک پیغام میں اسرائیلی حکومت پر ’نسلی عصبیت‘ برتنے کا الزام عائد کیا تھا۔ برلن حکومت نے اسرائیلی پارلیمان کی جانب سے مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں تعمیرات کا قانون منظور کیے جانے کے بعد دوطرفہ مذاکرات کا سلسلہ بھی معطل کر دیا تھا۔

ان تمام واقعات کے بعد اسرائیلی وزیر اعظم اور جرمن چانسلر انگیلا میرکل کے مابین پہلی ملاقات گزشتہ ہفتے ہی ’ورلڈ اکنامک فورم‘ کے موقع پر ہوئی تھی جس کے بعد دونوں ممالک کے مابین سفارتی تعلقات میں بہتری دکھائی دے رہی ہے۔ توقع ہے کہ نیتن یاہو آئندہ ماہ جرمن شہر میونخ میں منعقد ہونے والی سکیورٹی کانفرنس میں بھی شرکت کریں گے۔

اسرائیل کی ایک یونیورسٹی سے وابستہ بین الاقوامی تعلقات کے شعبے کے پروفیسر گیرالڈ اشٹائنبرگ کے مطابق جرمن وزیر خارجہ زیگمار گابریئل کی اسرائیل آمد کا مقصد دونوں ممالک کے مابین کشیدہ تعلقات میں بہتری لانا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
جرمنی میں حکام نے غیر قانونی طور پر ملازمتیں فراہم کرنے والی کمپنیوں اور اداروں کے خلاف بڑے پیمانے پر کارروائی شروع
خادم اعلی پنجاب شہباز شریف نے زلزکے کے حوالے سے تمام امدادی سر گرمیوں کے اداروں کو الرٹ رہنے کی ہدایات

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Translate News »