وزیراعظم عمران خان نے مکران کوسٹل ہائی وے پر دہشت گردی کی سخت مذمت کرتے ہوئے حکام سے واقعے پر رپورٹ طلب کر لی     No IMG     افغانستان اور افغان طالبان کے درمیان مذاکرات ایک مرتبہ پھر کھٹائی میں پڑتے دکھائی دے رہے ہیں     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کا افتتاح کردیا     No IMG     ایران کے وزیر خارجہ کی ترک صدر اردوغان کے ساتھ ملاقات     No IMG     عمان کے وزیر خارجہ نے اپنے ایک بیان میں شام کی عرب لیگ میں واپسی پر تاکیدکی     No IMG     سعودی عرب کی ایک کمپنی نے ترکی میں 100 ملین ڈالر کا سرمایہ لگانے کا اعلان     No IMG     روس کی سرحد پربرطانوی فوجی ہیلی کاپٹروں کی تعیناتی پر شدید رد عمل     No IMG     چین ,نے سی پیک پر بھارت کے اعتراضات کو مسترد کردیا     No IMG     چلی میں چھوٹا طیارہ ایک گھر پر گر کر تباہ ہوگیا، جس کے نتیجے میں 6 افراد ہلاک     No IMG     فیصل آباد میں جعلی اکاﺅنٹ پکڑے گئے‘بنکوں کا عملہ بھی ملوث نکلا     No IMG     حمزہ شہبازعبوری ضمانت میں توسیع کے لیے ہائی کورٹ پہنچ گئے     No IMG     عوامی مقامات پر غیر مناسب لباس ممنوع، 5 ہزار ریال جرمانہ     No IMG     عالمی بینک نے پاکستان سے جوہری پروگرام، جے ایف 17 تھنڈر، بحری آبدوزوں اور سی پیک قرضوں کی تفصیلات فراہم کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     امریکی شہری پاکستان کا غیر ضروری سفر کرنے سے گریز کریں, امریکی محکمہ خارجہ     No IMG     ملک بھر میں شدید طوفان آنے کا خدشہ     No IMG    

جرمنی میں ایک مرد نرس نے ملک کے 2 مختلف ہسپتالوں میں 100 سے زائد مریضوں کو قتل کرنے کا اعتراف
تاریخ :   30-10-2018

اولدنبورگ ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) جرمنی میں ایک مرد نرس نے ملک کے 2 مختلف ہسپتالوں میں 100 سے زائد مریضوں کو قتل کرنے کا اعتراف کرلیا۔ اطلاعات کے مطابق 41 سالہ نیلس ہویگیل پر الزام ہے کہ وہ ساتھیوں کو متاثر کرنے کے لیے مریضوں کو جان بوجھ کر ضرورت سے زیادہ ادویات کا

 

استعمال کراتے تھے تاکہ مریض کی صحت بحال کی جاسکے۔ملزم نے ٹرائل کے پہلے دن عدالت میں اعتراف کیا کہ ان پر لگائے جانے والے الزامات درست ہیں۔ ملزم پر 1999 سے 2002 کے دوران جرمنی کے شمال مغربی شہر اولدنبورگ کے ایک ہسپتال میں متعدد مریضوں جبکہ 2003 سے 2005 کے دوران ایک اور ہسپتال میں متعدد مریضوں کے قتل کا الزام ہے۔واضح رہے کہ 2015 میں 2 مریضوں کے اقدام قتل کے جرم میں انہیں عمر قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ٹرائل کے دوران ملزم کا کہنا تھا کہ انہوں نے جان بوجھ کر مریضوں کو ہارٹ اٹیک کی حالت تک پہنچایا کیونکہ وہ ان کی بحالی کی حالت کا لطف اٹھانا چاہتے تھے۔

اس اعتراف جرم کے بعد حکام سیکڑوں ایسی ہلاکتوں کی تحقیقات کررہے ہیں جن کی لاشوں کو بغیر کسی پوسٹ مارٹم کے دفنا دیا گیا تھا۔

ملزم کے خلاف اولدنبورگ میں 36 مریضوں کی ہلاکت جبکہ دیلمین ہورسٹ کے ہسپتال میں 64 مریضوں کے قتل میں نامزد کیا گیا، ان کا شکار مریضوں کی عمریں 34 سال اور 96 سال کے درمیان تھیں۔

Print Friendly, PDF & Email
قطر,کا غیر ملکی کارکنوں کے لیے انشورنس فنڈ کا منصوبہ
ترکی, ایران اور آذربائیجان اور ترک وزراء خارجہ کا سہ فریقی اجلاس
Translate News »