پاکستان کو کشمیر نہیں چاہیے ہمارے سیاستدان تو اپنے 4 صوبے نہیں سنبھال سکتے۔شاہد خان آفریدی     No IMG     چین میں متعدد پاکستانیوں کی بیگمات گرفتار     No IMG     ساہیوال میں کارروائی کے دوران 3 دہشت گرد گرفتار     No IMG     فیصل آباد میں وکلاء کا احتجاج     No IMG     اوورسیز پاکستانیوں کیلئے نیا پاکستان کالنگ ویب پورٹل کا افتتاح     No IMG     بلوچستان ریلوے کی بہتری کیلئے انقلابی اقدامات کئے جارہے ہیں, وفاقی وزیر ریلوے     No IMG     اسمبلی کی تقریر کو عدالت میں بطور ثبوت پیش نہیں کیا جا سکتا,سابق وزیر اعظم     No IMG     اسرائیلی فوج ’فوری طور پر حملے بند, کرے، ترکی     No IMG     یورپی فوج‘ تشکیل دی جائے ,چانسلر انگیلا میرکل     No IMG     ترکی میں مہاجرین کی کشتی ڈوبنے سے 3 بچوں سمیت 5 افراد ہلاک     No IMG     آرمی چیف کی زیر صدارت کمانڈرز کانفرنس     No IMG     ٹریفک کےمختلف حادثات میں 7 افراد جاں بحق     No IMG     اسٹاک مارکیٹ میں کاروباری سرگرمیوں کے آغاز کے ساتھ ہی مندی کا رحجان     No IMG     ایف بی آرنے وفاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے خلاف تحقیقات کیلئے قائم کردہ جے آئی ٹی کو معلومات فراہم کرنے سے انکار کردیا     No IMG     نیب ادارہ ختم کر دیا جا ئے ، اہم ترین اعلان     No IMG    

جرمنی میں ایک مرد نرس نے ملک کے 2 مختلف ہسپتالوں میں 100 سے زائد مریضوں کو قتل کرنے کا اعتراف
تاریخ :   30-10-2018

اولدنبورگ ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) جرمنی میں ایک مرد نرس نے ملک کے 2 مختلف ہسپتالوں میں 100 سے زائد مریضوں کو قتل کرنے کا اعتراف کرلیا۔ اطلاعات کے مطابق 41 سالہ نیلس ہویگیل پر الزام ہے کہ وہ ساتھیوں کو متاثر کرنے کے لیے مریضوں کو جان بوجھ کر ضرورت سے زیادہ ادویات کا

 

استعمال کراتے تھے تاکہ مریض کی صحت بحال کی جاسکے۔ملزم نے ٹرائل کے پہلے دن عدالت میں اعتراف کیا کہ ان پر لگائے جانے والے الزامات درست ہیں۔ ملزم پر 1999 سے 2002 کے دوران جرمنی کے شمال مغربی شہر اولدنبورگ کے ایک ہسپتال میں متعدد مریضوں جبکہ 2003 سے 2005 کے دوران ایک اور ہسپتال میں متعدد مریضوں کے قتل کا الزام ہے۔واضح رہے کہ 2015 میں 2 مریضوں کے اقدام قتل کے جرم میں انہیں عمر قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ٹرائل کے دوران ملزم کا کہنا تھا کہ انہوں نے جان بوجھ کر مریضوں کو ہارٹ اٹیک کی حالت تک پہنچایا کیونکہ وہ ان کی بحالی کی حالت کا لطف اٹھانا چاہتے تھے۔

اس اعتراف جرم کے بعد حکام سیکڑوں ایسی ہلاکتوں کی تحقیقات کررہے ہیں جن کی لاشوں کو بغیر کسی پوسٹ مارٹم کے دفنا دیا گیا تھا۔

ملزم کے خلاف اولدنبورگ میں 36 مریضوں کی ہلاکت جبکہ دیلمین ہورسٹ کے ہسپتال میں 64 مریضوں کے قتل میں نامزد کیا گیا، ان کا شکار مریضوں کی عمریں 34 سال اور 96 سال کے درمیان تھیں۔

Print Friendly, PDF & Email
قطر,کا غیر ملکی کارکنوں کے لیے انشورنس فنڈ کا منصوبہ
ترکی, ایران اور آذربائیجان اور ترک وزراء خارجہ کا سہ فریقی اجلاس
Translate News »