مسلم لیگ ق نے کا تحریک انصاف کے رویے پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کو تحفظات سے آگاہ کرنے کا فیصلہ     No IMG     تحریک انصاف نے سابق صدرآصف علی زرداری کی نااہلی کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے سانحہ ساہیوال پر بغیر تحقیقات کے بیانات دینے پر وزرا اور پنجاب پولیس پر سخت اظہار برہمی     No IMG     وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری کی جسٹس ثاقب نثارپرتنقید، موجود چیف جسٹس کی تعریف     No IMG     برطانیہ میں بھی برف باری سے شدید سردی     No IMG     برطانیہ کے سابق وزیراعظم کے جان میجر نے موجودہ وزیرِاعظم تھریسا مے سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ یورپ سے علیحدگی (بریگزٹ) پر ریڈ لائن سے پیچھے ہٹ جائیں     No IMG     میکسیکو میں پیٹرول کی پائپ لائن میں دھماکے اور آگ لگنے کے حادثے میں ہلاکتوں کی تعداد 73 ہوگئی     No IMG     امریکی سینیٹر لنزے گراہم کی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات     No IMG     سی ٹی ڈی کے مطابق ذیشان کا تعلق داعش سے تھا ,صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت     No IMG     وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کو معلوم ہی نہیں پھولوں کا گلدستہ کہاں پیش کرنا ہے کہاں نہیں؟     No IMG     لاہورمیں شہریوں نے پولیس کی دھلائی کر ڈالی، بھاگ کر جان بچائی     No IMG     وزارتِ تجارت نےکاروں کی درآمد پر لگائی جانی والی پابندیوں پر نظر ثانی کرتے ہوئے انہیں مزید سخت کردیا     No IMG     خواتین کے مساوی حقوق اور تشدد کے خاتمے کے لیے امریکہ، برطانیہ سمیت مختلف ممالک میں خواتین کی جانب سے ریلیاں نکالی گئیں۔     No IMG     فرانس میں صدر میکروں کی حکومت کے خلاف پیلی جیکٹ والوں کا احتجاج اس ہفتے بھی جاری رہا، کئی مقامات پر پولیس اور مظاہرین میں جھڑپیں     No IMG     وزیراعلیٰ پنجاب نے اعلیٰ سطحی اجلاس طلب کرلیا     No IMG    

ترکی میں شامی بحران کا سیاسی حل تلاش کرنے کی کوششیں
تاریخ :   27-10-2018

استنبول ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) ترکی کے شہر استنبول میں جرمن چانسلر کے ساتھ ساتھ ترکی، روس اور فرانس کے صدور ایک اجلاس میں شرکت کر رہے ہیں۔ ان رہنماؤں کی بات چیت کا مقصد شامی بحران کا دیرپا حل تلاش کرنا ہے۔

ترکی کی میزبانی میں شام کے موضوع پر چار فریقی سربراہی اجلاس استنبول میں شروع ہو گیا ہے۔ اس اجلاس کا مقصد جنگ سے تباہ حال ملک شام کے بحران کا کوئی سیاسی حل تلاش کرنا ہے۔ اس دوران انسانی بنیادوں پر جاری کارروائیوں اور امداد میں اضافے کے علاوہ شام میں باغیوں کے آخری سب سے بڑے گڑھ ادلب میں فائر بندی کے نازک معاہدے میں توسیع جیسے موضوعات پر بھی تبادلہ خیال کیا جا رہا ہے۔

اس اجلاس کا افتتاح کرتے ہوئے میزبان صدر رجب طیب ایردوآن نے کہا، ’’آج دنیا کی نظریں ہم پر لگی ہوئی ہیں۔ مجھے امید ہے کہ ہم خلوص کے ساتھ کام کرتے ہوئے ایک تعمیری اتفاق پر پہنچیں گے اور عالمی توقعات کو پورا کرنے میں ناکام نہیں ہوں گے۔‘‘ اس موقع پر ایردوآن نے اپنے فرانسیسی ہم منصب ایمانوئل ماکروں، روسی صدر ولادی میر پوٹن اور جرمن چانسلر انگیلا میرکل کو استنبول پہنچنے پر خوش آمدید کہا۔

ماہرین کی خیال میں ایک بڑا مسئلہ اس اجلاس میں شریک رہنماؤں کی شامی صدر بشارالاسد کے حوالے سے اختلافِ رائے ہے۔ روس صدر اسد کی حمایت کرتا ہے جبکہ دوسری جانب جرمنی، فرانس اور ترکی کا شمار اسد مخالفین میں ہوتا ہے۔ تاہم اس دوران روس اور ترکی ادلب اور اس کے ارد گرد بفر زون قائم کرنے پر رضامند ہو گئے ہیں۔

اس سے قبل ترکی، ایران اور روس کے صدور شام کے موضوع پر ملاقات کرتے رہے ہیں تاہم یہ پہلی مرتبہ ہے کہ اس طرح کے کسی اجلاس میں یورپی یونین کے دو با اثر ممالک جرمنی اور فرانس کے رہنما بھی شریک ہیں۔ استنبول میں اجلاس شروع ہونے سے قبل جرمن چانسلر انگیلا میرکل نے ترک صدر ایردوآن اور روسی صدر پوٹن کے ساتھ علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کی تھیں۔ اس کے علاوہ میرکل اور ماکروں کے درمیان بھی شام کے موضوع پر بات چیت ہوئی تھی۔

2011ء میں شروع ہونے والے شامی بحران میں ساڑھے تین لاکھ سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ ساتھ ہی بمباری کی وجہ سے شام کے متعدد شہروں کا بنیادی ڈھانچہ مکمل طور پر تباہ ہو چکا ہے اور یہ شہر ملبے کا ڈھیر بن چکے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
سعودی عرب نے جمال خاشقجی کے18 قاتلوں کو ملک بدر کر کے ترکی کے حوالے کرنے سے انکار
منشا بم اور اسکے بیٹے عاصم منشا کے جسمانی ریمانڈ میں 10روز کی توسیع
Translate News »