ساہیوال میں گاڑی پر فائرنگ کے واقعے میں ملوث سی ٹی ڈی اہلکاروں کو حراست میں لے لیا     No IMG     لیبیا کے قریب مہاجرین کی کشتی ڈوبنے سے 117 افراد لاپتا     No IMG     صومالیہ ,میں امریکی جنگی طیاروں کے حملے میں 52 شدت پسند ہلاک     No IMG     پولیس کی درندگی نے شادی والے گھر میں صف ماتم بچھادی     No IMG     پیپلز پارٹی کے رہنما قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے چیئر مین سینیٹر رحمان ملک نے اسلام آباد میں بڑھتی ہوئی ڈکیتیوں، موٹرکار و موٹر سائیکل چوریوں کا نوٹس اور آئی جی اسلام آباد سے رپورٹ طلب کرلی     No IMG     بھارت میں سوائن فلو سے 40 افراد ہلاک اور ایک ہزار 36 افراد متاثر     No IMG     سابق آرمی چیف راحیل شریف کو این او سی جاری     No IMG     چوہدری برادران کے ساتھ معاملات حل ہوگئے ہیں,صوبائی وزیر اطلاعات     No IMG     پولیس کے محکمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) کی فائرنگ سے 2 خواتین سمیت 4 افراد ہلاک اور 3 بچے زخمی     No IMG     مقبوضہ کشمیر میں ٹرک پر برفانی تودہ گرنے سے 5 افراد ہلاک     No IMG     سوڈان ,میں حکومت کے خلاف مظاہرے، ڈاکٹر سمیت 3افراد جاں بحق     No IMG     حکومت کو کسی قسم کا کوئی خطرہ ہے، پاکستان کے اچھے دن شروع ہوگئے ہیں, فواد چوہدری     No IMG     گیس لیکج سے 2 دھماکے ،3 افراد جاں بحق ،4 زخمی     No IMG     برطانوی وزیر اعظم مے کے یورپی رہنماؤں سے رابطے     No IMG     پیپلزپارٹی ک رہنماؤں کا حکومت کو اینٹ کا جواب پتھر سے دینے کا فیصلہ     No IMG    

ترکی ایران پر عالمی اقتصادی پابندیاں غیرموثر بنانے میں مدد دے گا؟
تاریخ :   09-08-2018

ایران ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو )کے متنازع جوہری پروگرام پر تہران اور چھ عالمی طاقتوں کے درمیان سمجھوتے سے قبل کئی سال تک ترکی نے ایران پر عاید کردہ عالمی پابندیوں کو غیرموثر بنانے میں اہم کردار ادا کیا۔

ترکی کے غیر سرکاری ادارے اور نجی سیکٹر نے اقتصادی ناکہ بندی کی دیوار کو پھلانگنے میں ایران کی ہرممکن مدد کی۔ ایرانی اور غیرملکی تجزیہ نگار تسلیم کرتے ہیں کہ ترکی نے ایران کے ساتھ اختلافات کے علی الرغم تہران کو ہر ممکن معاشی اور اقتصادی فایدہ پہنچنے کی کوشش کی۔

فارسی ویب سائیٹ ’تابناک‘ پر شائع ہونےوالے ایرانی اقتصادی تجزیہ نگار ڈاکٹر ولی گل محمد نے اپنے مضمون میں لکھا ہے کہ چھ اگست کوٹرمپ انتظامیہ کی طرف سے عاید کردہ تازہ معاشی پابندیوں کے بعد ترکی ایک بار پھر ایران کے لیے معاشی سہولت کار کے طور پر سرگرم ہوسکتا ہے۔

مسٹر گل محمد نے کہا ہے کہ ترکی نے ماضی میں بھی مغرب کے ایران پر اقتصادی پابندیوں کے دباؤ کو کم کرنے کے لیے غیرسرکاری چینلز کا استعمال کرکے ایران درآمدات و برآمدات کا تحفظ کیا اور تہران کو 20 ارب ڈالر کا فائدہ پہنچایا۔

ایران اور مغربی طاقتوں کے درمیان سمجھوتے کے بعد تو گویا ترکی کو ایران میں معاشی اور تجارتی میدان میں کھل کھیلنے کا موقع مل گیا۔ پابندیاں اٹھتے ہی ترکی نے ایران میں اپنی 300 کمپنیاں بھیجیں اور ترکی کے چار ہزار تجارتی وفود نے تہران کےدورے کیے۔

حال ہی میں جب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران سے طے پائے سمجھوتے سے علاحدگی اور ایران پر نئی اقتصادی پابندیوں کے نفاذ کا اعلان کیا تو ترکی نے کھل کر امریکی پابندیوں کی مخالفت کی۔ مگر ترکی اب دوراہے پر کھڑا ہے۔ انقرہ کو یہ فیصلہ کرنا ہے اسے ایران کےساتھ اربوں ڈالر کی تجارت کرنا ہے یا امریکی پابندیوں کی تلوار کا سامنا کرنا ہے۔

تابناک ویب سائیٹ نے استفسار کیا ہے کہ آیا ترکی ایران پرامریکی پابندیوں کے خلاف کھل کر ایران کے ساتھ کھڑا ہو گا؟ ایسی صورت میں ترکی تہران پر پابندیوں کو کس حد تک غیر موثر بنا سکتا ہے۔

سنہ 2012ء کو ایران اور ترکی کا دو طرفہ تجارتی حجم 22 ارب ڈالر تھا۔ ترکی سے سونے کی بھاری مقدار ایران کو فروخت کی جا رہی تھی تاہم سنہ 2015ء کو جب ایران اور دوسرے ملکوں کے درمیان معاہدہ طے پایا تو ترکی اور ایران کے درمیان سونے کی تجارت کےحجم میں کمی آگئی۔ سنہ 2016ء میں دونوں ملکوں کے دو طرفہ تجارتی حجم 10 ارب ڈالر تک رہ گیا۔ عراق اور شام کے بارے میں دونوں ملکوں کے باہمی اختلافات کے باوجود تہران اور انقرہ کے درمیان تجارتی تعاون جاری رہا ہے۔

حالیہ ایک عشرےمیں ترکی کو بھی معاشی بحران کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ ترکی لیرہ غیرملکی کرنسی کےمقابلے میں بہت گراوٹ کا شکار رہا ہے۔ رواں سال کے دوران ترک لیرہ کی ڈالر کے مقابلے میں قیمت میں 20 فی صد کمی ہوئی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ترکی کا غیرملکی قرضے کا حجم 4 کھرب ڈالرکے برابر ہے مگر ترکی ایران پر امریکی پابندیوں سے فائدہ اٹھا کر تہران کے ساتھ تجارت کو بڑھا سکتا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
ایرانی صدر نےشمالی کوریا سے کہا ہے کہ وہ دھوکے باز امریکیوں پر اعتبار نہ کرے
غزہ پر اسرائیل کی وحشیانہ بمباری کے نتیجے میں 3 فلسطینی شہید جب کہ 8 زخمی ہوگئے
Translate News »