گاڑیوں کی درآمد پر ٹیکس اب غیر ملکی کرنسی میں ادا کرنا ہوگا, وزیر خزانہ     No IMG     تائيوان, کے معاملے ميں مداخلت برداشت نہيں کی جائے گی, چين     No IMG     امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترکی کی معیشت کو تباہ کرنے کے بیان سے یوٹرن لیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان معاشی ترقی کے وسیع مواقع ہی     No IMG     وزیراعظم سے سابق امریکی سفیر کیمرون منٹر کی ملاقات     No IMG     آپ لوگ کام نہیں کر سکتے چیف جسٹس نے اسد عمرکو دو ٹوک الفاظ میں کیا کہہ ڈالا     No IMG     شادی والے گھر میں آگ لگنے سے دلہن سمیت 4 خواتین جاں بحق     No IMG     قومی ترقی میں بھرپور کردار ادا کریں گے،آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ     No IMG     اپوزیشن ,جماعتوں نے منی بجٹ مسترد کردیا     No IMG     وزیراعظم عمران خان کو سونے کی کلاشنکوف کا تحفہ مل گیا     No IMG     سعودی لڑکی رھف کا فرار ہونے کے بعد پہلا انٹرویو     No IMG     بنگلہ دیش,گارمنٹس ملازمین کا تنخواہوں میں اضافہ نہ ہونے پر مظاہرہ     No IMG     بھارتی فوج مغربی سرحد کیساتھ دہشتگردانہ کارروائیوں کیخلاف سخت ایکشن لینے سے نہیں ہچکچائے گی۔     No IMG     حکومت نے ایک ہفتے میں ہم سے 113 ارب روپے قرض لیاہے، پاکستانی اسٹیٹ بینک     No IMG     وزیراعظم کی اپوزیشن پر شدید تنقید     No IMG     چین کی عدالت نے منشیات کی اسمگلنگ کے الزام میں کینیڈا کے شہری کی 15 سال قید کی سزا کو پھانسی میں تبدیل کردیا     No IMG    

تحریک انصاف کی حکومت خطرے میں
تاریخ :   31-12-2018

اسلام آباد ( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) پاکستان تحریک انصاف کو اقتدار میں آنے کے بعد سے ہی کئی تنازعات اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تاہم اب اپوزیشن نے موجودہ حکومتی جماعت کو مزید ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کر لیا ہے جس کے تحت اپوزیشن وفاقی میں تبدیلی کے لیے آزاد اراکین سے رابطے کرے گی۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی نے پی ٹی آئی کی جانب سے سندھ حکومت کے خاتمے کی کوشش کا جواب دینے کا فیصلہ کر لیا ہے جس کے لیے پیپلز پارٹی نے وفاق میں تبدیلی کے لیے قومی اسمبلی میں اپوزیشن اتحاد سے مل کر حکومت میں شامل ہونے والے آزاد ارکان سے رابطے شروع کر دئے ہیں۔
ذرائع کے مطابق سابق صدر آصف علی زرداری نے خود اور سید خورشید شاہ نے بھی کئی حکومتی ارکان سے رابطہ کیا ہے۔
جبکہ پیپلز پارٹی قیادت ایم کیو ایم پاکستان اور بلوچستان سے منتخب ہونے والے بعض ارکان قومی اسمبلی سے بھی رابطہ کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ سابق صدر آصف علی زرداری نے وفاقی حکومت کی جانب سے سندھ میں پیپلز پارٹی کی حکومت گرانے کی کوششوں پر سخت باراضگی کا اظہار کیا ہے۔

آصف علی زرداری نے حکومتی جماعت کی اس کوشش پر تشویش کا اظہار کیا اور اسی کے تحت اب وفاقی حکومت کو بھی ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ اس حوالے سے جے یو آئی کے امیر مولانا فضل الرحمان سے بھی ملاقاتیں کی جائیں گی۔ آصف علی زرداری ن لیگ کے ساتھ مل کر پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کو گرانے کی ہر ممکن کوشش کریں گے ، سابق صدر پی ٹی آئی کی حکومت کو گرانے کے لیے مسلم لیگ ن کا وزیراعظم بھی قبول کرنے کو تیار ہیں۔
ذرائع نے بتایا کہ آئندہ چند دنوں میں مسلم لیگ ن ، پیپلز پارٹی، جمیعت علمائے اسلام اور دیگر چھوٹی سیاسی و پارلیمانی جماعتوں کا اجلاس بھی بلایا جائے گا ، دوسری جانب پیپلز پارٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ اگر سابق صدر آصف علی زرداری کو گرفتار کیا گیا تو حکومت کے خلاف بھرپور تحریک چلائی جائے گی جبکہ آصف علی زرداری کی گرفتاری کے بعد پارلیمنٹ کا گھیراؤ کیے جانے کا بھی امکان ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
بنگلہ دیش میں برسراقتدار شیخ حسینہ واجد کی جماعت عوامی لیگ نے عام انتخابات میں جیت گئی
دنیا بھر میں نئے سال کے جشن کا آغاز نیوزی لینڈ سے ہوگا
Translate News »