چودھری پرویزالٰہی سے فردوس عاشق اعوان کی ملاقات     No IMG     یوکرین کے مزاحیہ اداکار ملک کے صدر منتخب     No IMG     وزیروں کو نکالنے سے سلیکٹڈ وزیراعظم کی نااہلی نہیں چھپے گی, بلاول بھٹو زرداری     No IMG     ایران کے صدر حسن روحانی نے تہران میں سعد آباد محل میں پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کا باقاعدہ اور سرکاری طور پر استقبال     No IMG     بھارت اور چین کے مابین پیر کے روز بیجنگ میں باہمی فیصلہ کن مذاکرات کا آغاز     No IMG     بھارتی وزیر اعظم,ہمارا پائلٹ واپس نہ کیا جاتا تو اگلی رات خون خرابے کی ہوتی     No IMG     ملکی سیاسی پارٹیاں ووٹ تو غریبوں ،محنت کشوں کے نام پر لیتی ہیں مگر تحفظ جاگیرداروں اور مافیاز کو دیتی ہیں ,جواد احمد     No IMG     افغان سپریم کورٹ نے صدر کے انتخاب تک صدر اشرف غنی کی مدت صدارت میں توسیع کردی     No IMG     آزاد کشمیر میں منڈا بانڈی کے مقام پر ایک جیپ کھائی میں گرنے سے 5 افراد ہلاک     No IMG     مصرمیں صدرکےاختیارات میں اضافے کےلیے ہونےوالے تین روزہ ریفرنڈم میں ووٹ ڈالنےکا سلسلہ جاری ہے     No IMG     لاہور میں 3 منزلہ خستہ حال گھر زمین بوس ہونے کے نتیجے میں خاتون سمیت 6 افراد جاں بحق جبکہ 4 افراد زخمی     No IMG     وزیراعظم عمران خان ایران کے پہلے سرکاری دورے پر تہران پہنچ گئے     No IMG     سری لنکا میں کل ہونے والے آٹھ بم دھماکوں کے نتیجے میں 300 افراد ہلاک اور 500 زخمی     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے مکران کوسٹل ہائی وے پر دہشت گردی کی سخت مذمت کرتے ہوئے حکام سے واقعے پر رپورٹ طلب کر لی     No IMG     افغانستان اور افغان طالبان کے درمیان مذاکرات ایک مرتبہ پھر کھٹائی میں پڑتے دکھائی دے رہے ہیں     No IMG    

تحریک انصاف اور اتحادیوں کی نئی حکومت کے قیام کے بعد سرکاری سطح پر پاکستان کا بھارت سے پہلا رابط
تاریخ :   26-08-2018

لاہور  ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو )  تحریک انصاف اور اتحادیوں کی نئی حکومت کے قیام کے بعد سرکاری سطح پر پاکستان کا بھارتسے پہلا رابطہ ہوا ہے۔ جس کے تحت دونوں ملکوں کے درمیان آبی تنازعات پر 2 روزہ مذاکرات کا شیڈول جاری کردیا گیا ہے ۔۔سندھ طاس

کمیشن کے تحتمذاکرات کا یہ راؤنڈ 29 اگست کو لاہورمیں شروع ہوگا جس کے لئے بھارتی کمشنر سندھ طاس پردیپ کمار سکسینہ کی سربراہی میں 9 رکنی وفد پاکستان آئے گا۔ایجنڈے میں معاہدہ سندھ طاس کی 56 سالہ تاریخ میں پاکستانی دریاؤں پر بھارت کا سب سے بڑا بجلی گھر اور پہلا سٹوریج ڈیم پاکل دول شامل ہے جبکہ 48 میگاواٹ کا لوئر کلنائی بجلی گھر بھی ایجنڈے کا حصہ ہے ۔۔پاکستان کی ملکیت دریائے چناب پر مقبوضہ کشمیر کے ضلع ڈوڈا میں اس منصوبے کا سنگ بنیادبھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے اس سال مئی میں رکھ دیا بھارت کا مقبوضہ کشمیر میں پاکستانی دریاؤں پر 1500 میگاواٹ کا یہ سب سے بڑا بجلی گھر ہوگا اور اس کی جھیل میں پاکستان کی ملکیت دریائے چناب کا 1 لاکھ 8 ہزار ایکڑ فٹ پانی روکا جاسکے گا۔

مرالہ بیراج سے 225 کلومیٹر اوپر بنایا جارہا یہ منصوبہ اپنی سٹوریج صلاحیت اور بجلی کی 1500 میگاواٹ پیداوار کیپسٹی کے اعتبارسے بھارت کا اب تک بنائے گئے پراجیکٹس میں سب سے بڑا ہے ۔ بھارت نے پاکل دول کا ڈیزائن 19 دسمبر 2012 کو پاکستان کے حوالے کیا جس پر پاکستان نے 2 بڑے اعتراضات لگا کراس ڈیزائن کو معاہدہ سندھ طاس کی سنگین خلاف ورزی قرار دیدیا ۔ان اعتراضات میں ڈیم میں ضرورت سے زیادہ پانی ذخیرہ کرنے کی سطح (فری بورڈ) کی اونچائی 7 میٹر سے کم کرکے 2 میٹر کرنے اور سپل وے کے گیٹوں کی تنصیب سطح سمندر سے 1580 میٹر کی بجائے 40 میٹر بڑھا کر 1620 میٹر کرنے کے مطالبات شامل ہیں۔ بھارت کی طرف سے پاکستان کو فراہم کئے گئے ڈیزائن کی دستاویز میں انکشاف ہوا ہے کہ بھارت نے حیران کن طور پر ڈیم میں ذخیرہ شدہ پانی کا زیادہ سے زیادہ حجم (پاؤنڈیج والیم) اور مرالہ بیراج پر پاکستانمیں پانی پہنچنے کے اعداد وشمار نہیں بتائے جبکہ ڈیم آپریشن کے تحت جھیل بھرنے اور وہاں سے پانی چھوڑنے کا پیٹرن بھی چھپا لیا گیا۔وزارت آبی وسائل اسلام آباد کے مطابق 2013 سے اب تک سندھ طاس کمیشن کے 6 اجلاسوں یا مذاکراتی ادوار میں بار بارمطالبے کے باوجود بھارت نے ان دونوں اعتراضات کی دستاویزات پاکستان کو نہیں دیں اور یکطرفہ طور پر وزیر اعظم مودی سے اس منصوبے کا افتتاح کرادیا گیا۔ معاہدہ سندھ طاس 1960 کے تحت بھارت نے اب تک پاکستان کے دریاؤں چناب،جہلم اور سندھ پر پانی سٹوریج کے بغیر رن آف دی ریور طرز کے بجلی گھر بنائے ہیں لیکن بھارت کو اس معاہدے کے تحت ڈیزائن کی پابندیوں کے ساتھ اس قسم کے منصوبے محدود تعداد میں بنانے کا حق حاصل ہے مگر بھارت طے شدہ ڈیزائن کی خلاف ورزیاں کرکے یہ منصوبہ بنارہاہے ۔مذاکراتی ایجنڈے کی دستاویز میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ دریائے چناب پر ورکنگ باؤنڈری سے 180 کلومیٹر اوپر کی طرف پہاڑوں میں بنایا جارہا 48 میگاواٹ کو لوئر کلنائی بجلی گھر بھی شامل ہے ۔ پاکستان نے اس منصوبے کے ڈیزائن پر 2013 میں 3 اہم اعتراضات بھارت کے حوالے کئے جن میں فری بورڈ کی اونچائی 2 میٹر سے کم کرنے کے علاوہ جھیل میں قابل استعمال پانی سٹوریج 616 ایکڑ فٹ سے پچاس فیصد کمی کے ساتھ 308 ایکڑ فٹ کرنے کا مطالبہ شامل تھا لیکنبھارت نے کمیشن کی سطح پر خط وکتابت اور 7 مذاکراتی راؤنڈز میں پاکستان کے ان مطالبات کو تسلیم نہیں کیا اور اب 29 اگست کو اس سلسلے کا 8 واں راؤنڈ ہونے جارہا ہے ۔مذاکرات میں پاکستانی ٹیم کی سربراہی قائم مقام کمشنر سندھ طاس مہرعلی شاہ کریں گے جبکہ ایڈیشنل کمشنر سندھ طاس شیراز جمیل میمن ،،واپڈا،،نیسپاک اور محکمہ انہار پنجاب کے نمائندے بھی اس ٹیم کا حصہ ہیں

Print Friendly, PDF & Email
ایران کے وزير دفاع جنرل امیر حاتمی ایک اعلی فوجی وفد کے ہمراہ شام پہنچ گئے
قومی ایئر لائن کے چیف ایگزیکٹو افسر مشرف رسول سیاں کو فوری طور پر برطرف کرنے کی تجویز پیش
Translate News »