پاک فوج نے ایک آپریشن میں 4 مغوی ایرانی فوجیوں کو بازیاب کرالیا     No IMG     دنیا بھر میں آج ہندو برادری اپنا مذہبی تہوار ہولی منا رہی ہے     No IMG     افغانستان کے صوبے ہرات میں سیلاب سے 13 افراد کے جاں بحق ہونے سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 63 ہوگئی     No IMG     لیبیا میں پناہ گزینوں کو لے جانے والی کشتی ڈوب گئی جس کے نتیجے میں 9 افراد ہلاک     No IMG     اسرائیلی دہشت گردی، غرب اردن میں مزید3 فلسطینیوں کو شہید کردیا     No IMG     پیپلز پارٹی کےچیئرمین نے 3 وفاقی وزرا کو فارغ کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     وزیراعظم عمران خان کی ہولی کے تہوار پر ہندو برادی کو مبارک باد     No IMG     سابق وزیراعظم نوازشریف نے ای سی ایل سے نام نکالنے کی درخواست دائر کردی     No IMG     سمجھوتہ ایکسپریس کیس کا فیصلہ 12 سال بعد بھی تاخیر کا شکار     No IMG     وزیر اعظم آئین کے آرٹیکل 214 کی شق دو اے پر عمل کرنے میں ناکام     No IMG     روس کے وزیر دفاع سرگئی شویگو نے شام کے صدر بشار اسد سے ملاقات     No IMG     بھارت اور پاکستان متنازع معاملات مذاکرات کے مذاکرات کے ذریعے حل کریں,چین     No IMG     بریگزیٹ پرٹریزامے کی حکمت عملی انتہائی کمزورہے، ٹرمپ     No IMG     امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو کی کویت کے بادشاہ سے ملاقات     No IMG     نیوزی لینڈ میں جمعہ کو سرکاری ریڈیو اور ٹی وی سے براہ راست اذان نشر ہوگی,جیسنڈا آرڈرن     No IMG    

تاجکستان کی سرحد کے قریب طالبان کے مرکز پر امریکی حملہ
تاریخ :   06-02-2018

امریکا نے افغانستان (ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو)کے شمالی حصے میں طالبان کے خلاف فضائی حملوں کا نیا سلسلہ شروع کیا ہے۔ امریکی فوج کے ایک بیان کے مطابق امریکی فورسز نے افغانستان کے شمال مشرقی حصے میں طالبان کے ایک تربیتی مرکز کو نشانہ بنایا ہے۔

جرمن خبر رساں ادارے ڈی پی اے نے امریکی فوج کی طرف سے جاری ہونے والے ایک بیان کے حوالے سے بتایا ہے کہ یہ فضائی حملہ چین اور تاجکستان کی سرحد کے قریب واقع طالبان کے ایک تربیتی مرکز پر کیا گیا۔ بیان کے مطابق طالبان اس مرکز کو حملوں کی عملی تربیت اور منصوبہ بندی کے لیے استعمال کرتے تھے۔ اس بیان میں مزید کہا گیا کہ ایک امریکی B-52 بمبار طیارے نے ریکارڈ تعداد میں 24 اسمارٹ بم گرائے جو انتہائی درستی کے ساتھ اپنے ہدف کو نشانہ بناتے ہیں۔

امریکی فوجی بیان کے مطابق اس کے بمبار طیاروں نے افغان فوج کی چُرائی گئی ان گاڑیوں کو بھی تباہ کر دیا ہے جنہیں بم دھماکوں میں استعمال کرنے کے لیے تیار کیا جا رہا تھا۔

ڈی پی اے کے مطابق فضائی حملوں میں اضافے کی یہ مہم در اصل افغانستان میں امریکا کے بڑھتے ہوئے کردار کی عکاس ہے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ برس اگست میں افغانستان میں طالبان سے نمٹنے کے لیے نئی حکمت کا اعلان کیا تھا۔

ٹرمپ کے اس اعلان کے بعد سے امریکی فورسز نے افغان ایئر فورس کے ساتھ مل کر پورے افغانستان میں طالبان کے ٹھکانوں پر فضائی حملوں کے سلسلے میں اضافہ کر رکھا ہے۔ گزشتہ برس کے دوران امریکی فورسز نے افغانستان میں دو ہزار فضائی حملے کیے۔ یہ تعداد سال 2016ء کے مقابلے میں دو گنا کے قریب تھی۔

تازہ فضائی حملے ایک ایسے وقت پر کیے گئے ہیں جب طالبان اور داعش کے جنگجوؤں کی طرف سے افغان دارالحکومت کابل اور ملک کے دیگر حصے میں دہشت گردانہ حملوں میں اضافہ ہوا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
عوامی مینڈیٹ چھیننےکاسلسلہ اب رکناچاہیے،وقت ثابت کرےگاکہ میرےخلاف انتقامی کاروائی کی گئی
يورپی يونين وقت آ گيا ہے کہ برطانيہ فيصلہ کرے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Translate News »