آرمی چیف سے بحرین نیشنل گارڈ کے کمانڈر کی ملاقات     No IMG     اسرائیل کی جیل میں آگ بھڑک اٹھی، کئی کمرے جھلس گئے     No IMG     اسرائیلی فوج کی گھر گھر تلاشی15 فلسطینی شہری گرفتار     No IMG     وزیر ریلوے شیخ رشید کی نا اہلی کے لیے الیکشن کمیشن میں درخواست دائر     No IMG     فضائی حدود کی بندش، ائیرانڈیا کو کروڑوں کا نقصان     No IMG     دہشت گردی کا کوئی دین اور نسل نہیں ہوتی ,سعودی وزیر خارجہ     No IMG     ایران، عراق اور شامی افواج کے خون نے تینوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مزید مضبوط بنایا, بشار الاسد     No IMG     آصف زرداری اور فریال تالپور کی 10 دن کے لیے حفاظتی ضمانت منظور     No IMG     سابق وزیراعلی شہباز شریف کے خلاف ایک اور انکوائری شروع     No IMG     کینیڈین وزیر اعظم جسٹس ٹروڈو نے نیوزی لینڈ میں دہشت گردی کے واقعہ کی مذمت     No IMG     روسی صدر پوتن نے کہا ہے کہ وہ روس میں کرائسٹ چرچ جیسا دہشت گرد حملہ نہیں ہونے دیں گے     No IMG     برطانوی حکام نے نیوزی لینڈ کی مسجدوں میں ہوئی دہشت گردی کی طرز پر برطانیہ میں بھی واقعات پیش آنے کا خدشہ     No IMG     نیوزی لینڈ کی پارلیمنٹ کے پہلے اجلاس کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا     No IMG     نیوزی لینڈ مساجد پر دہشت گرد حملے سے متعلق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنے بیان پر میڈیا کی تنقید سے برہم     No IMG     نیوزی لینڈ کی قومی فٹسل ٹیم کے گول کیپر عطا الیان بھی کرائسٹ چرچ واقعے میں شہید     No IMG    

بینکوں سے ماہانہ دس لاکھ روپے نکلوانے والوں کی تفصیلات کی فراہمی لازمی قرار دے دی گئی
تاریخ :   14-09-2018

اسلام آباد( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) بینکوں سے ماہانہ دس لاکھ روپے نکلوانے والوں کی تفصیلات کی فراہمی لازمی قرار دے دی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق ایف بی آر نے بینکوں کے لیے کریڈٹ کارڈ و ڈیبٹ کارڈز کے ذریعے دو لاکھ روپے ماہانہ کی ادائیگیاں کرنے والے، دس لاکھ روپے ماہانہ سے زائد رقم

نکلوانے والے اور ماہانہ ایک کروڑ روپے یا اس سے زائد رقم جمع کروانے والے اکاؤنٹس ہولڈرز کی تفصیلات کی فراہمی کو لازمی قرار دے دیا گیا ہے جبکہ ٹیکس چوری میں ملوث امیر لوگوں کا سُراغ لگانے کے لیے ایف بی آر کو نادرا سے ڈیٹا تک رسائی دے دی گئی ہے ، اس ضمن میں ایف بی آر کی جانب سے گذشتہ روز انکم ٹیکس سرکلر نمبر تین جاری کیا گیا جس میں فنانس ایکٹ کے ذریعے انکم ٹیکس آرڈیننس 2001ء میں کی جانے والی اہم ترامیم کے بارے میں وضاحت کی گئی۔
ایف بی آر کی جانب سے یہ وضاحتی سرکلر بجٹ کے ساڑھے تین ماہ کے بعد جاری کیا گیا ہے اور وضاحتی سرکلر کا اجرا ایسے موقع پر کیا گیا ہے جب حکومت نظر ثانی شدہ بجٹ پیش کرنے جا رہی ہے جس کے لیے فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے فنانس ترمیمی بل 2018ء کا مسودہ تیار کر کے وزارت خزانہ کو بھجوادیا ہے جس کی وفاقی کابینہ سے منظوری کے بعد پارلیمنٹ کے آئندہ اجلاس میں پیش کیے جانے کا امکان ہے۔
ایف بی آر حکام کا کہنا ہے کہ وضاحتی سرکلر کے اجرا میں تاخیر کی وجہ سے اسٹیک ہولڈرز میں کنفیوژن پھیلی اور جب وضاحتی سرکلر جاری کیا گیا ہے تو اس کے بعد ترمیم شدہ فنانس بل آجائے گا البتہ ایف بی آر کی جانب سے جاری کردہ وضاحتی سرکلر میں بتایا گیا ہے کہ بینکوں میں 50 ہزار روپے سے زائد یومیہ کی مد میں ماہانہ 10 لاکھ روپے یا اس س سے زائد رقوم نکلوانے والے فائلرز اور نان فائلرز سے ہونے والے ود ہولڈنگ ٹیکس کٹوتی کے ساتھ ساتھ اے ٹی ایم کے ذریعے 50 ہزار یومیہ سے زائد کی مد میں دو لاکھ روپے ماہانہ تک رقوم نکلوانے والے صارفین کی فہرست و کوائف بھی ایف بی آر کو فراہم ہوں گے۔
علاوہ ازیں بینکوں کو ایک ماہ کے دوران ایک کروڑ روپے یا اس سے زائد رقم جمع کروانے والے لوگوں کے نام کی فہرست اور کوائف مہیا کرنا ہوں گے۔ سرکلر میں مزید کہا گیا ہے کہ پری پیڈ کارڈ، ڈیبٹ کارڈ کا کسی پلاسٹک کارڈ کے ذریعے بیرون ملک رقم منتقل کرنے والے فائلرز سے ایک فیصد اور نان فائلرز صارفین نے تین فیصد کٹوتی کی جائے ، سرکلر میں مزید کہا گیا کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو نادرا کے ڈیٹا تک بھی رسائی دی گئی ہے ، اس بارے میں ایف بی آر حکام کا کہنا ہے کہ اس اقدام کا بنیادی مقصد ٹیکس چوری کرنے والے امیر لوگوں کا سُراغ لگانا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
ترک وزرائے خارجہ کے درمیان وفود کی سطح پر مذاکرات جاری
پانی کی کمی ملک کو ریگستان بنا سکتی ہے،پاکستان اکانومی واچ کے صدر ڈاکٹر مرتضیٰ مغل
Translate News »