دنیا بھر میں آج ہندو برادری اپنا مذہبی تہوار ہولی منا رہی ہے     No IMG     افغانستان کے صوبے ہرات میں سیلاب سے 13 افراد کے جاں بحق ہونے سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 63 ہوگئی     No IMG     لیبیا میں پناہ گزینوں کو لے جانے والی کشتی ڈوب گئی جس کے نتیجے میں 9 افراد ہلاک     No IMG     اسرائیلی دہشت گردی، غرب اردن میں مزید3 فلسطینیوں کو شہید کردیا     No IMG     پیپلز پارٹی کےچیئرمین نے 3 وفاقی وزرا کو فارغ کرنے کا مطالبہ کردیا     No IMG     وزیراعظم عمران خان کی ہولی کے تہوار پر ہندو برادی کو مبارک باد     No IMG     سابق وزیراعظم نوازشریف نے ای سی ایل سے نام نکالنے کی درخواست دائر کردی     No IMG     سمجھوتہ ایکسپریس کیس کا فیصلہ 12 سال بعد بھی تاخیر کا شکار     No IMG     وزیر اعظم آئین کے آرٹیکل 214 کی شق دو اے پر عمل کرنے میں ناکام     No IMG     روس کے وزیر دفاع سرگئی شویگو نے شام کے صدر بشار اسد سے ملاقات     No IMG     بھارت اور پاکستان متنازع معاملات مذاکرات کے مذاکرات کے ذریعے حل کریں,چین     No IMG     بریگزیٹ پرٹریزامے کی حکمت عملی انتہائی کمزورہے، ٹرمپ     No IMG     امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو کی کویت کے بادشاہ سے ملاقات     No IMG     نیوزی لینڈ میں جمعہ کو سرکاری ریڈیو اور ٹی وی سے براہ راست اذان نشر ہوگی,جیسنڈا آرڈرن     No IMG     جھوٹی گواہی دینے پر کاروائی کی جائے گی،عدالتیں جھوٹے گواہ کے خلاف کسی قسم کی لچک نہ دکھائیں,۔چیف جسٹس آف پاکستان     No IMG    

اٹلی نے مہاجرین کی آمد روکنے کے لیے بارڈر کنٹرول شروع
تاریخ :   12-07-2018

اٹلی  (ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) حکومت نے ملک کے شمال مشرقی علاقے فریولی وینیسیا جولیا میں مہاجرین کی آمد روکنے کے لیے بارڈر کنٹرول شروع کر دیا ہے اور اس مقصد کے لیے سرحدوں پر تعینات سکیورٹی اہلکاروں کی تعداد بھی بڑھا دی گئی ہے۔
روم حکومت نے موسم گرما میں ملک کا رخ کرنے والے مہاجرین کی تعداد میں اضافے کے سبب رواں ہفتے پیر کے روز بارڈر کنٹرول سے متعلق نئے قوانین کا اطلاق کیا تھا۔ ان قوانین کے تحت اب اٹلی نے ملک کی شمال مشرقی سرحدوں پر بارڈر کنٹرول شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

مہاجرین کی آمد روکنے کے لیے نئے اقدامات کے بارے میں فیصلہ فریولی وینیسیا جولیا کے شہر تریئستے میں اطالوی پولیس کے اعلیٰ افسروں کی ایک میٹنگ میں کیا گیا۔ اطالوی نیوز ایجنسی آنسا کے مطابق اب ان علاقوں میں پولیس چوکیاں چوبیس گھنٹے کام کریں گی اور پولیس اہلکار غیر قانونی تارکین وطن کی مدد کرنے والے افراد اور ان کی گاڑیوں کو روک کر ان کی تلاشی لیں گے۔
ان اقدامات کا مقصد یونان سے بلقان ریاستوں سے گزرتے ہوئے وسطی اور شمالی یورپی ممالک کا رخ کرنے والے غیر قانونی تارکین وطن کو روکنا ہے۔ فریولی کے گورنر میسمیلیانو فیدریجا کا کہنا تھا، ’’وزیر داخلہ ماتیو سالوینی کے ساتھ کامیاب گفتگو، سلووینیا کے ساتھ اچھے تعلقات اور سکیورٹی اداروں کے بروقت تعاون کی بدولت ہم سرحدوں پر کنٹرول یقینی بنا پائے ہیں۔‘‘
مہاجرین کی آمد روکنے کے لیے شروع کیے گئے اس خصوصی آپریشن کے لیے میلان اور بلونیا سمیت ملک کے دیگر علاقوں سے بھی سکیورٹی اہلکار شمال مشرقی اٹلی میں تعینات کیے گئے ہیں۔

تاہم اپوزیشن کی جماعتوں نے ان حکومتی اقدامات پر تنقید کی ہے۔ اپوزیشن کی ڈیموکریٹک پارٹی نے بارڈر کنٹرول کے فیصلے کو ’اشتہاری مہم‘ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان طریقوں سے غیر قانونی مہاجرت نہیں روکی جا سکتی۔

سمندری راستوں سے آمد روکنے کے لیے سخت اقدامات

زمینی راستوں کے علاوہ روم حکومت نے بحیرہ روم کے سمندری راستوں کے ذریعے غیر قانونی مہاجرت روکنے کے لیے اقدامات بھی مزید سخت کر دیے ہیں۔

بدھ کے روز اطالوی وزیر داخلہ ماتیو سالوینی نے اعلان کیا کہ تارکین وطن کو سمندر سے ریسکیو کرنے والے امدادی بحری جہازوں کو ’گارنٹی‘ کے بغیر اٹلی کی حدود میں لنگر انداز ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ گزشتہ ماہ اٹلی نے ایک فرانسیسی امدادی بحری جہاز کو ملکی بندرگاہوں پر لنگر انداز ہونے سے روک دیا تھا۔ رواں ہفتے مہاجرین کو ریسکیو کرنے والے ایک اطالوی بحری جہاز کو بھی لنگر انداز ہونے کی اجازت نہیں دی گئی۔

اطالوی میڈیا کے مطابق اس بحری جہاز پر سینکڑوں مہاجرین سوار ہیں اور اسے بدھ کی شام یا جمعرات کی صبح سسلی کی بندرگاہ پر پہنچنا تھا۔ سالوینی نے مہاجرین کو ریسکیو کرنے والی ان این جی اوز پر ’انسانوں کے اسمگلروں کی معاونت‘ کا الزام عائد کرتے ہیں۔ ان امدادی بحری جہازوں کو لنگر انداز ہونے کی اجازت نہ دینے کے بارے میں ان کا کہنا تھا، ’’میں کسی بحری جہاز کو اس وقت تک اجازت نہیں دوں گا جب تک اطالوی عوام کی سکیورٹی یقینی بنانے کے لیے ایسی یقین دہانی کرائی جائے کہ ان جہازوں پر زبردستی قبضہ کرنے والے ایسے افراد کو، جو حقیقی مہاجر نہیں ہیں، جیل میں ڈالا جائے گا اور انہیں جلد از جلد واپس ان کے وطنوں کی جانب بھیج دیا جائے گا۔‘‘

Print Friendly, PDF & Email
عمران خان کی جیب سے برآمد ہونے والی کوکین کی تصاویر بھی شائع
یہودی آباد کاروں نے ایک اور اشتعال انگیزی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مسجد ’الابراہیمی‘ کےاندر خیمے لگا لیے
Translate News »