گاڑیوں کی درآمد پر ٹیکس اب غیر ملکی کرنسی میں ادا کرنا ہوگا, وزیر خزانہ     No IMG     تائيوان, کے معاملے ميں مداخلت برداشت نہيں کی جائے گی, چين     No IMG     امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترکی کی معیشت کو تباہ کرنے کے بیان سے یوٹرن لیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان معاشی ترقی کے وسیع مواقع ہی     No IMG     وزیراعظم سے سابق امریکی سفیر کیمرون منٹر کی ملاقات     No IMG     آپ لوگ کام نہیں کر سکتے چیف جسٹس نے اسد عمرکو دو ٹوک الفاظ میں کیا کہہ ڈالا     No IMG     شادی والے گھر میں آگ لگنے سے دلہن سمیت 4 خواتین جاں بحق     No IMG     قومی ترقی میں بھرپور کردار ادا کریں گے،آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ     No IMG     اپوزیشن ,جماعتوں نے منی بجٹ مسترد کردیا     No IMG     وزیراعظم عمران خان کو سونے کی کلاشنکوف کا تحفہ مل گیا     No IMG     سعودی لڑکی رھف کا فرار ہونے کے بعد پہلا انٹرویو     No IMG     بنگلہ دیش,گارمنٹس ملازمین کا تنخواہوں میں اضافہ نہ ہونے پر مظاہرہ     No IMG     بھارتی فوج مغربی سرحد کیساتھ دہشتگردانہ کارروائیوں کیخلاف سخت ایکشن لینے سے نہیں ہچکچائے گی۔     No IMG     حکومت نے ایک ہفتے میں ہم سے 113 ارب روپے قرض لیاہے، پاکستانی اسٹیٹ بینک     No IMG     وزیراعظم کی اپوزیشن پر شدید تنقید     No IMG     چین کی عدالت نے منشیات کی اسمگلنگ کے الزام میں کینیڈا کے شہری کی 15 سال قید کی سزا کو پھانسی میں تبدیل کردیا     No IMG    

انٹر بینک میں ڈالر 144 روپے کا ہو گیا میں ڈالر10 روپے مہنگا ہو کر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا
تاریخ :   30-11-2018

اسلام آباد( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) انٹربینک میں ڈالر10 روپے مہنگا ہو کر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا، انٹر بینک میں ڈالر 144 روپے کا ہو گیا. کرنٹ اکاﺅنٹ خسارے کے باعث روپے کی قدر میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور ڈالر تاریخ میں پہلی مرتبہ 144 روپے کی

سطح پر پہنچ گیا ہے جبکہ وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ روپے کی قدر میں کمی سے گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے کچھ دنوں میں سب ٹھیک ہوجائے گا.
اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہمارے ذہنوں میں تبدیلی کی ضرورت ہے، ہم نے سرمایہ کاروں کے لیے آسانیاں پیدا کرنی ہے اور سرمایہ کاری کا فائدہ یہ بھی ہے کہ ملک میں ڈالر آتے ہیں کیونکہ اس وقت ملک کا سب سے بڑا مسئلہ کرنٹ اکاﺅنٹ خسارہ ہے. انہوں نے کہا کہ کرنٹ اکاﺅنٹ خسارے کا مطلب یہ ہے کہ جو ہم دنیا کو بیچتے ہیں اور خریدتے ہیں اس میں 2 ہزار ارب ڈالر کا خسارہ ہے اور جب ڈالر پر دباﺅ پڑتا ہے تو روپے کی قدر گرتی ہے اور ڈالر مہنگا ہوتا ہے.
وزیر اعظم نے کہا کہ ہم وہ قدم اٹھا رہے ہیں جس سے ڈالر کی کمی آگے نہیں ہوگی اور اگر ہم نے پاکستان سے گاڑیاں برآمد کرنا شروع کردیں تو اور سرمایہ کاری آئے گی. عمران خان نے کہا کہ ہمارے ملک کی بڑی بدقسمتی ہے کہ ہم قرضے لاتے ہیں تو اسے بڑی کامیابی سمجھا جاتا ہے. انہوں نے روپیہ اس لیے نیچے گیا کیونکہ ڈالر کی کمی ہے اورجیسے جیسے سرمایہ کاری آئے کی یہ کمی دور ہوجائے گی.ادھراوپن مارکیٹ میں ڈالر 6 اعشاریہ 10 پیسے اضافے کے بعد 141 روپے 50 پیسے کا ہوگیا.
موجودہ حکومت کی مدت کے دوران تین ماہ کے دوران اب تک ڈالر کی قدرمیں18 روپے کا اضافہ ہوچکا ہے. انٹر بینک میں ڈالرمہنگا ہونے سے بیرونی قرضے مزید 760 ارب روپے بڑھ گئے. معاشی تجزیہ کار محمد سہیل کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف نے ڈالر اور روپے کی قدر میں توازن لانے پر زور دیا تھا اور بظاہر لگ رہا ہے کہ حکومت کی جانب سے ڈالر میں اضافے کو مینج کیا جارہا ہے اور ہم آئی ایم ایف پروگرام کی طرف جارہے ہیں.
سینیٹر نعمان وزیر خٹک کا کہنا ہے کہ ڈالر145روپے پر پہنچ کر ٹھیک ہوجائے گا . قبل ازیں انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت 8 روپے کے ساتھ142 روپے ہوگئی بعدازاں اس میں مزید دو روپے کا اضافہ ہوا. گزشتہ روز انٹربینک میں ڈالرکی قدر10پیسے کم ہوئی تھی، جس سے ڈالر کی قیمت خرید134روپے اور فروخت 134.05روپے پر آ گئی تھی تاہم اوپن مارکیٹ میں ڈالر 135.40روپے پرمستحکم رہا تھا.
ماہر معاشیات کا کہنا ہے کہ روپے کی قدرمیں کمی سے مہنگائی کاطوفان آجائے گا، افراط زر کی شرح میں بھی اضافہ ہوگا، جبکہ غیر ملکی قرضے اور ادائیگیوں کا حجم بڑھ جائے گا جبکہ ماہرین اقتصادیات کے مطابق جاری اور تجارتی خسارے روپے پر دباوکا باعث بن رہے ہیں. اسٹیٹ بینک کے مطابق 22نومبر کو ختم ہونے والے ہفتے میں زرمبادلہ ذخائر میں10 اعشاریہ 6 فیصد کا اضافہ ہوا تھا‘بین الاقوامی جریدے بلومبرگ کے مطابق پاکستانی کرنسی کا شمار ایشیا بد ترین پرفارمنس والی کرنسیوں میں ہوتا ہے اور روپے کی قدر میں کم آئی ایم ایف کے پلان کی شرائط بھی ہوسکتی ہیں.
خیال رہے نئی حکومت نے تین ماہ میں صرف76کروڑ40لاکھ ڈالر کا قرضہ لیا جبکہ رواں مالی سال میں 9ارب 69 کروڑ 10 لاکھ ڈالر کا قرضہ لیا جائے گا. اعدادوشمار کے مطابق جولائی سے اکتوبر لیے گئے قرضوں کا حجم 1ارب 58 کروڑ 40 لاکھ ڈالر تھا. واضح رہے آئی ایم ایف نے روپے کی قدرمیں کمی اورٹیکس پالیسی میں تبدیلی کی شرائط رکھی تھی تاہم حکومت نے آئی ایم ایف کی شرائط ماننے سے انکار کردیا تھا.
دریں اثناءوفاقی وزیر فیصل واوڈا کا کہنا ہے ایک دو روز میں ڈالر کی قیمتیں معمول پر لے آئیں گے‘ڈالر پہلے بھی مہنگا ہوا مگر حکومت نے اس پر قابو پالیا تھا. کراچی میں آئیڈیاز نمائش میں شرکت کے بعد وفاقی وزیر آبی وسائل فیصل واوڈا نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں بلیک مارکیٹ موجود ہے، جس کو کنٹرول کرنے میں وقت لگے، دو سے تین دن میں ڈالر کی

Print Friendly, PDF & Email
وزیراعظم عمران خان کواسدعمراور فواد چودھری مروائیں گے، نبیل گبول
تحریکِ انصاف کی حکومت کے 100 دن، کیا کھویا کیا پایا
Translate News »