امریکی صدر شیر کی دم کے ساتھ کھیلنا ترک کردے ۔ مزاحمت یا تسلیم کے علاوہ کوئي اور راستہ نہیں۔     No IMG     افریقی ملک مراکش کی عدالت نے ایک بچی کی اجتماعی عصمت ریزی کے گھناؤنے واقعے کی اعلیٰ سطحی تحقیقات شروع     No IMG     دوست کو چاقو کے وارسے قتل کرنے والی حسینا کو سزائے موت     No IMG     بہاولپور جلسے میں کم تعداد پر عمران خان برہم لیکن پارٹی عہدیداران نے ایسی بات بتادی کہ کپتان کیساتھ جہانگیر ترین بھی حیران پریشان     No IMG     اکرام گنڈا پور کے قافلے پر خود کش حملہ، ڈرائیور شہید، تحریک انصاف کے امیدوار اور 2 پولیس اہلکاروں سمیت 6 افراد زخمی     No IMG     پاکستان اچھا کھیلاہم بہت براکھیلے،زمبابوین کھلاڑی کا اعتراف     No IMG     پاکستان سمیت دنیا بھر میں28 جولائی کو مکمل چاند گرہن ہوگا     No IMG     حنیف عباسی کا فیصلہ انصاف کے اصولوں پر مبنی نہیں , شہباز شریف     No IMG     سعودی عرب غیر ملکی ٹرک ڈرائیوروں پر پابندی سے ماہانہ 200ملین ریال کا نقصان ہوگا     No IMG     امریکہ میں کال سینٹر اسکینڈل میں ملوث 21 بھارتی شہریوں کو20 سال تک کی سزا     No IMG     اسرائیی حکومت نے القدس میں سرنگ کی مزید کھدائی کی منظوری دے دی     No IMG     ویتنام کے شمالی علاقوں میں سمندری طوفان سے 20 افراد ہلاک اور14 زخمی ہوگئے     No IMG     شیخ رشید کا کہنا ہے کہ حنیف عباسی کو عمر قید کی سزا ملنے سے اب این اے 60 راولپنڈی کا الیکشن یکطرفہ ہو جائے گا     No IMG     حنیف عباسی نے انسداد منشیات عدالت کی جانب سے دی گئی عمرقید کو ہائیکورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان     No IMG     اسرائیل کے مجرمانہ حملوں میں 4 فلسطینی شہری شہید     No IMG    

امریکہ

  • امریکہ میں کال سینٹر اسکینڈل میں ملوث 21 بھارتی شہریوں کو20 سال تک کی سزا

     امریکہ ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) میں کال سینٹر اسکینڈل میں ملوث 21 بھارتی شہریوں کو20 سال تک کی سزا سنادی گئی ہے۔ ذرائع کےمطابق ایجنٹس نے جعلی کال سینٹرکے ذریعے ہزاروں امریکی شہریوں کو کروڑوں ڈالر سے محروم کردیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق امریکی عدالت نےاسکینڈل میں ملوث 21 بھارتی نوجوانوں کو 4 سے 20 سال کی سزا سنائی ہے،کال سینٹر ایجنٹ مصیبت میں پھنسےامریکیوں کو ویلیو کارڈز خریدنے پر دباؤ ڈالتے تھےجبکہ انکار کی صورت میں انہیں گرفتاری کی دھمکی دیتے تھے۔ جعلی کال سینٹر کا ہدف عمر رسیدہ امریکی شہری اور غیرقانونی تارکین وطن تھےجبکہ سزا مکمل ہونے کے بعد متعدد زیر حراست مجرموں کوملک بدر کردیا جائے گا۔

  • افغانستان میں قیام امن کیلیے پاکستان کاتعاون اہم ہے،امریکی فوج کی سینٹرل کمان

     امریکی ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) فوجکی سینٹرل کمان (سینٹ کام )کے کمانڈرجنرل جوزف ووٹل نے کہاہے کہ افغانستان میں قیام امن کیلیے پاکستان کاتعاون اہم ہے۔ فلوریڈامیں سینٹرل کمان کے ہیڈکوارٹرزمیں امریکی فوج کی جنوبی ایشیاکے بارے میں حکمت عملی کے بارے میں محکمہ دفاع کی بریفنگ کے دوران جنرل جوزف ووٹل نے کہاکہ افغانستان میں پائیدارسیاسی حل کے مقصد کے حصول کیلیے پاکستان کاتعاون انتہائی اہمیت کاحامل ہے۔ پاکستان سے ڈومور کے مطالبے پرمبنی امریکی انتظامیہ کے موقف کااعادہ کرتے ہوئے انھوں نے کہاکہ ہم اس اہم کردار کو نبھانے میں مدد کیلیے پاکستان کے ساتھ قریبی طورپرمل کرکام کررہے ہیں جس کا عندیہ انھوں نے دیااوراب وقت آگیاہے کہ وہ آگے بڑھیں۔ افغانستان فورسزکی استعداد بہترہورہی ہے تاہم انھیں طالبان اورداعش کے شدت پسندوں کامقابلہ کرنے کیلیے مزیدوقت درکارہے، افغان فورسز لڑرہی ہیں اور جانی نقصان بھی ہورہاہے تاہم ہرگزرتے دن کے ساتھ ان کی صلاحیت اورکارکردگی میں بہتری آرہی ہے۔

  • امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی تمام چینی درآمدات پر ڈیوٹی لگانے کی دھمکی

    واشنگٹن( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے 505.5ارب ڈالر تمام چینی درآمدات پر ڈیوٹی لگانے کی دھمکی دے دی۔ امریکی نیٹ ورک سی این بی سی کو انٹرویو میں انھوں نے 2017 میں چین سے درآمدکی گئی 505ارب ڈالر کی چینی مصنوعات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہاکہ میں 500 تک کے لیے جانے کو تیار ہوں، میں یہ سیاست کے لیے نہیں کر رہا، میں یہ اپنے ملک کی خاطر بہتر دیز کے لیے کر رہا ہوں، چین ہمیں کافی عرصے سے کاٹ رہا ہے۔ گزشتہ روز ٹرمپ نے اپنے انٹرویو میں اپنے دعوے کا اعادہ کیاکہ امریکہ ٹریڈ پالیسی سمیت ایشوز پر فائدہ اٹھا رہا ہے، میں انھیں (چین کو) خوف زدہ کرنا نہیں چاہتا بلکہ میں انھیں بہتری پر مجبور کرنا چاہتا ہوں، مجھے صدر زی بہت پسند ہیں مگر یہ بہت غیرمنصفانہ ہے۔ انھوں نے فیڈرل ریزرو کی پالیسی کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا اور مانیٹری پالیسی کو سخت کرنے پر ناپسندیدگی کا اظہار کیا۔ بعد میں وائٹ ہاؤس نے ایک بیان جاری کرکے کہاکہ صدر مرکزی بینک کی آزادی کا احترام کرتے ہیں اور پالیسی سازی میں مداخلت کرنا نہیں چاہتے۔ واضح رہے کہ امریکہ نے رواں ماہ چین کی 34ارب ڈالر کی مصنوعات کے لیے 25 فیصد درآمدی ڈیوٹی لگائی تھی۔ جس کے نتیجے میں چین نے بھی پوری طور پر اتنی ہی مالیت کی امریکی مصنوعات پر یکساں شرح سے ٹیرف عائد کردیے تھے اور واشنگٹن پر اقتصادی تاریخ کی سب سے بڑی تجارتی جنگ شروع کرنے کا الزام عائد کیا تھا، امریکا مزید 16ارب ڈالر کی چینی مصنوعات پر ٹیرف لگانے کا جائزہ لے رہا ہے۔ علاوہ ازیں امریکی صدر نے اپنی ٹوئٹ میں چین اور یورپی یونین پر تجارتی فائدے کے لیے اپنی کرنسیوں کی قدر مصنوعی طور پر کم رکھنے کا الزام عائد کیا اور مرکزی بینک کی شرح سود بڑھانے کی پالیسی کو ایک بار پھر شدید تنقید کا نشانہ بنایا کہ اس سے سب کو نقصان ہو رہا ہے۔

  • امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے روسی صدر ولادیمیر پوتین کو دورہ واشنگٹن کی دعوت دی

    واشنگٹن ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے روسی صدر ولادیمیر پوتین کو دورہ واشنگٹن کی دعوت دی ہے۔ وائٹ ہاؤس کی پریس سکریٹری سارا سینڈر نے نے کہا ہے کہ امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے مشیر قومی سلامتی جون بولٹن کو ہدایات جاری کی ہے کہ وہ روسی صدر پوتینن کو دورہ واشنگٹن

    کی دعوت دیں۔ روسی صدر پوتین کو ملاقات کیلئے دعوت نامہ امریکی صدر کے ٹویٹ کے بعد دیا گیا۔ اپنے ٹویٹ میں امریکی صدر نے کہا کہ وہ صدر پوتین سے ہونے وا لی دوسری میٹنگ کا خیرمقدم کرتے ہیں۔ ذرائع کے مطابق ہیلسنکی میں روس کے صدر پوتین کے ساتھ ٹرمپ کی ملاقات کے بعد امریکہ کے صدر کو شدید تنقید کا سامنا تھا لیکن اس کے باوجود ٹرمپ نے پوتین کو دورہ واشنگٹن کی دعوت دینے کا اہتمام کرلیا ہے۔

  • امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ملک کی بڑ ی ٹیکنالوجی فرم گوگل پر یورپی یونین کے بھاری جرمانے کی مذمت کردی

    واشنگٹن( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ملک کی بڑ ی ٹیکنالوجی فرم گوگل پر یورپی یونین کے بھاری جرمانے کی مذمت کردی ہے اور خبردار کیا ہے کہ وہ یورپ کو امریکا سے مزید فائدہ نہیں اٹھانے دیں گے۔

    صدر ٹرمپ نے جمعرات کو ایک ٹویٹ میں لکھا ہے:’’ میں آپ کو بتاتا ہوں ۔یورپی یونین نے ہماری بڑی کمپنیوں میں سے ایک گوگل پر پانچ ارب ڈالرز جرمانہ عاید کردیا ہے۔انھوں نے حقیقی معنوں میں امریکا سے فائدہ اٹھایا ہے لیکن یہ معاملہ اب زیادہ دیر چلنے کا نہیں‘‘۔

    یورپی یونین نے تین سال کی تحقیقات کے بعد یہ فیصلہ کیا ہے۔اس سے بین البر اعظمی تجارتی جنگ کے امکانات بھی بڑھ گئے ہیں کیونکہ صدر ٹرمپ اس سے پہلے پہلے یورپ کی اسٹیل اور ایلومینیم کی برآمدات پر محصولات عاید کرنے کا فیصلہ کرچکے ہیں ۔

    یورپی یونین نے بدھ کو گوگل پر اس کے اینڈرائیڈ موبائل آپریٹنگ سسٹم کی خلاف ورزیوں پر ریکارڈ چار ارب تیس کروڑ یورو ( پانچ ارب ڈالرز) جرمانہ عاید کیا ہے۔یورپی کمیشن کی مسابقتی کمشنر مارگریتھ ویسٹاگر نے برسلز میں نیوز کانفرنس میں اس فیصلے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ گوگل نے تین بنیادی شعبوں میں اینڈرائیڈ مارکیٹ کی خلاف ورزی کا ارتکاب کیا ہے۔گوگل اپنے سرچ انجن اور کروم ایپلی کیشنز کو ایک آپریٹنگ سسٹم میں مجتمع کررہی ہے اور اس نے مبینہ طور پر موبائل فون بنانے والی کمپنیوں کو ایسی ڈیوائسز کی تیاری سے روک دیا ہے جن کے ذریعے اینڈرائیڈ کے مختلف ورژنز کو چلایا جاسکتا ہے۔ اس نے فون تیار کرنے والی بعض بڑی کمپنیوں اور موبائل نیٹ ورک آپریٹر کو اس مقصد کے لیے بھاری رقوم بھی دی ہیں کہ وہ صرف گوگل کی سرچ ایپ کو دستی فون سیٹ میں استعمال کریں۔

    ڈنمارک سے تعلق رکھنے والی ویسٹاگر نے اپنے فیصلے میں گوگل کو حکم دیا تھا کہ وہ اپنی اس غلط روش کو 90 روز کے اندر مُوَثر انداز میں ختم کردے یا پھر اس کو روزانہ کی آمدن پر پانچ فی صد جرمانہ ادا کرنا ہوگا۔۔اس کا یہ مطلب ہے کہ اب گوگل کو فون ساز کمپنیوں کو دستی سیٹوں میں گوگل پلے اسٹور کی پیش کش کے لیے کروم اور گوگل سرچ کے پری انسٹال پر مجبور کرنے یا دباؤ ڈالنے کا سلسلہ بند کرنا ہوگا۔

    گوگل کو فون ساز کمپنیوں کو اینڈرائیڈ کے مختلف ورژنز کو استعمال کرنے سے روکنے کی روش بھی ختم کرنا ہوگی ۔یورپی کمیشن نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ گوگل نے ایسا کوئی قابل اعتبار ٹھوس ثبوت پیش نہیں کیا ہے جس سے یہ پتا چلتا ہو کہ اینڈرائیڈ فنی نقائص سے متاثر ہوگا یا ایپلی کیشنز کی سپورٹ میں ناکام رہے گا۔

    گوگل کے خلاف یہ فیصلہ یورپی کمیشن کے سربراہ ژاں کلاڈ جنکر کے امریکا کے دورے سے ایک ہفتے قبل سامنے آیا ہے۔ وہ امریکی صدر سے یورپی برآمدات پر محصولات اور دوسرے متنازعہ امور پر بات چیت کریں گے۔

    گوگل کے سربراہ سندر پچائی نے اس فیصلے کے فوری بعد کہا تھا کہ اس کے خلاف اپیل دائر کی جائے گی۔انھوں نے ایک بلاگ میں لکھا کہ’’آج کا فیصلہ اینڈرائیڈ کی حمایت کرنے والے کاروباری ماڈل کو مسترد کرتا ہے، حالانکہ یہ ہر کسی کے لیے زیادہ انتخاب پیش کرتا ہے۔ہم اس فیصلے کے خلاف اپیل کرنا چاہتے ہیں’’۔

    گوگل اسمارٹ فون اور ٹیبلٹس بنانے والی کمپنیوں کو اینڈرائیڈ مفت مہیا کرتی ہے اور وہ تلاش ( سرچ) کے نتائج کے ساتھ نمودار ہونے والے اشتہارات کی فروخت سے رقوم کماتی ہے۔یہ اس کا آمدن کا سب سے بڑا ذریعہ ہے۔ واضح رہے کہ مارکیٹ ریسرچ فرم اسٹریٹجی اینالٹکس کے مطابق اینڈرائیڈ سے دنیا کے 80 فی صد اسمارٹ فونز اور ٹیبلٹس چلتے ہیں۔

    فوربس میگزین کے مطابق گوگل کی مادر کمپنی الفا بیٹ 2017ء میں دنیا میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کی پانچویں بڑی کمپنی تھی اور اس کی عالمی آمدن کا حجم 111 ارب ڈالرز تھا۔اس کی آمدن میں گذشتہ چار سال کے دوران میں دُگنا اضافہ ہوا ہے۔

    یورپی کمیشن گذشتہ تین سال سے اینڈرائیڈ کے خلاف جامع تحقیقات کررہا تھا۔اس کے حریفوں نے گوگل کے خلاف سوفٹ وئیر کی مارکیٹ میں برتری کے لیے غلط طور طریقے استعمال کر نے کی شکایت کی تھی۔گوگل کے خلاف سب سے پہلے مختلف کمپنیوں پر مشتمل گروپ فئیر سرچ نے 2013ء میں شکایت کی تھی ۔اس کے علاوہ نوکیا ، مائیکرو سوفٹ اور اوریکل نے بھی شکایت کی تھی۔

    یورپی یونین نے گذشتہ سال گوگل پر سرچ کے نتائج میں الٹ پھیر پر دو ارب ستر کروڑ ڈالرز جرمانہ عاید کیا تھا۔یہ اس کی آن لائن خریداری خدمات کے تلاش کے نتائج میں رد وبدل پر کیا گیا تھا۔گوگل نے اس کے خلاف بھی اپیل دائر کی تھی مگر اس کا ابھی فیصلہ نہیں ہوا اور اب اس پراس سے دُگنا پانچ ارب ڈالرز جرمانہ عاید کردیا گیا ہے۔

  • انسانی حقوق کونسل اقوامِ متحدہ کی بدترین ناکامی ہےامریکہ کی سفیر نکی ہیلی

    اقوامِ متحدہ ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) میں امریکہ کی سفیر نکی ہیلی نے عالمی ادارے کی انسانی حقوق کونسل سے نکلنے کے امریکی فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ کونسل اقوامِ متحدہ کی چند بدترین ناکامیوں میں سے ایک ہے۔

    بدھ کو واشنگٹن میں قدامت پسند تھنک ٹینک ‘ہیریٹیج فاؤنڈیشن’ میں خطاب کرتے ہوئے نکی ہیلی نے کہا کہ انسانی حقوق کونسل میں “ضمیر کے بجائے سیاست کی بنیاد پر” فیصلے ہوتے تھے۔
    انہوں نے کہا کہ آزادیٔ اظہارِ رائے، اپنی مرضی کا عقیدہ اختیار کرنا، اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کرنا اور قانون کی نظر میں برابر ہونا – یہ تمام مقدس حقوق ہیں جنہیں امریکہ انتہائی سنجیدہ لیتا ہے اور اسی لیے امریکہ ‘انسانی حقوق کونسل’ نامی ادارے کو ان کی اہمیت کم نہیں کرنے دے گا۔
    انہوں نے کہا کہ امریکہ کو اس کونسل کی تشکیل پر ہی اعتراض ہے کیوں کہ ان کے بقول اس میں بعض ایسے ممالک بھی شامل ہیں جو دنیا میں انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزی کرنے والے ملکوں میں سرِ فہرست ہیں۔
    انسانی حقوق کونسل کے ارکان میں چین، وینزویلا، سعودی عرب اور مصر بھی شامل ہیں جن کا شمار دنیا میں انسانی حقوق کا بدترین ریکارڈ رکھنے والے ملکوں میں ہوتا ہے۔
    اپنے خطاب میں نکی ہیلی نے الزام عائد کیا کہ انسانی حقوق کونسل بیشتر اوقات دنیا کی سب سے زیادہ غیر انسانی حکومتوں کی مذمت کرنے کے بجائے انہیں بچانے کا کردار ادا کرتی ہے
    امریکہ ہمیشہ سے انسانی حقوق کونسل کے ایجنڈے کے نکتہ نمبر سات پر بطور خاص معترض رہا ہے جس کا تعلق فلسطینیوں کے حالات سے ہے۔

    اپنے خطاب میں بھی نکی ہیلی نے کہا کہ کونسل کے مقاصد میں شام، شمالی کوریا اور ایران جیسے ملکوں سے متعلق کوئی نکتہ شامل ہیں۔

    انہوں نے الزام عائد کیا کہ ساتویں نکتے کا ہدف اسرائیل کے اقدامات نہیں بلکہ خود کا اسرائیل کا وجود ہے۔

    یاد رہے کہ امریکہ نے گزشتہ ماہ انسانی حقوق کونسل پر متعصب ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے اس سے الگ ہونے کا اعلان کیا تھا۔

    کونسل سے علیحدگی کا اعلان کرتے ہوئے نکی ہیلی نے الزام عائد کیا تھا کہ کونسل کے ارکان اسرائیل کے خلاف ایک عرصے سے تعصب برتتے آرہے ہیں اور انسانی حقوق غصب کرنے والوں کے محافظ بنے ہوئے ہیں۔

    انہوں نے کہا تھا کہ بین الاقوامی کونسل “سیاسی تعصب کا گٹر” بن چکی ہے۔

    اقوامِ متحدہ کی جنرل اسمبلی نے 2006ء میں عالمی ادارے کی انسانی حقوق کونسل کے قیام کی منظوری دی تھی جس کا مقصد دنیا بھر میں انسانی حقوق کے تحفظ کے لیے کام کرنا اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر نظر رکھنا ہے۔

    اس کونسل کا صدر دفتر جنیوا میں ہے اور اس کے 47 ارکان کا انتخاب تین سال کی مدت کے لیے کیا جاتا ہے۔

  • امریکا نے بھارت کو ہتھیاروں سے لیس کیے جا سکنے والے بڑے ’گارڈیئن‘ ڈرون فروخت کرنے کی پیشکش

    امریکا ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) نے بھارت کو ہتھیاروں سے لیس کیے جا سکنے والے بڑے ’گارڈیئن‘ ڈرون فروخت کرنے کی پیشکش کر دی ہے۔ شروع میں ان ڈرون طیاروں کو غیر مسلح حالت میں جاسوسی کی خاطر صرف نگران پروازوں کے لیے فروخت کرنے کی اجازت دی گئی تھی۔ خبر ایجنسی روئٹرز کی ایک خصوصی رپورٹ کے مطابق نئی دہلی کو اس پیشکش کی ایک اعلیٰ امریکی اہلکار اور امریکی دفاعی صنعت کے ایک اہم ذریعے نے بھی تصدیق کر دی ہے۔ اگر یہ پیشکش عملی صورت اختیار کر گئی، تو یہ پہلا موقع ہو گا کہ امریکا کسی ایسے ملک کو یہ بڑے مسلح ڈرون طیارے فروخت کرے گا، جو نیٹو کا رکن نہیں ہے۔ پاکستان اور بھار ت کے مابین روایتی کشیدگی کے تناظر میں بغیر پائلٹ کے پرواز کرنے والے یہ طیارے جنوبی ایشیا میں اپنی نوعیت کے پہلے ہائی ٹیک ڈرون ہوں گے۔

  • دنیا کے تیسرے امیر ترین شخص نے 3.4 ارب ڈالر فلاحی کاموں کے لئے عطیہ کر دیئے

    امریکہ ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو)ارب پتی امریکی شہری وارین بافٹ نے اپنی دولت کا ایک بڑا حصہ خیراتی اور فلاحی کاموں کے لیے عطیہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ بافٹ کی کمپنی کی طرف سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا کہ وارن بافٹ نے اپنی دولت میں سے3 ارب 40 کروڑ ڈالر فلاحی کاموں کے لیے دینے

    کااعلان کیا ہے۔امریکی دولت مند کی طرف سے عطیہ کی گئی رقم 5 فلاحی اداروں کے ذریعے صرف کی جائے گی۔ امریکی تاریخ میں کسی کاروباری شخص کا اتنی بڑی رقم عطیہ کرنے کا یہ پہلا واقعہ ہے۔ ان کے خاندان کی 4 دوسری فلاحی تنظمیں بھی انسانی بہبود کے منصوبوں پرکاموں پر پیسے صرف کرتی ہیں۔ ان کے خاندان کی ایک کمپنی تعلیم کے شعبے پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے جو ان کی اہلیہ سوزان کے نام سے کام کر رہی ہے۔ شیرووڈ فاؤنڈیشن ان کی بیٹی، ھوارڈ جے بافٹ ان کے بڑے بیٹے، نوفو چھوٹے بیٹے بافٹ پیٹر اور اہلیہ جینیفر کے نام سے کام کام کرتی ہے۔ان فلاحی تنظیموں کو بافٹ 31 ارب ڈالر کی رقم دے چکے ہیں۔ بزنس جریدے فوربز کے مطابق بافٹ کی دولت 82 ارب ڈالر سے زیادہ ہے۔ بل گیٹس اور امازون کمپنی کے چیف ایگزیکٹو بیزوس کے بعد دنیا کے تیسرے امیر ترین شخص ہیں۔

  • روس کے صدر ولادیمیر پوتین اور امریکہ کے صدر ٹرمپ نے فن لینڈ کے دارالحکومت ہیلسنکی میں ملاقات

    ہیلسنکی ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) روس کے صدر ولادیمیر پوتین اور امریکہ کے صدر ٹرمپ نے فن لینڈ کے دارالحکومت ہیلسنکی میں باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا ہے۔ اس ملاقات میں روس کے صدر نے کہا کہ انھیں ٹرمپ کے ساتھ ملاقات پر خوشی ہے اور ہم دونوں اس ملاقات میں عالمی مسائل کو حل کرنے کے بارے میں گفتگو کریں گے۔ اس ملاقات میں صدر ٹرمپ نے بھی فیفا ورلڈ کپ کامیاب طریقہ سے منعقد کرانے پر روسی صدر کو مبارکباد پیش کی۔ ٹرمپ نے کہا کہ روس اور امریکہ کے پاس پوری دنیا میں 90 فیصد ایٹمی ہتھیار موججود ہیں ۔ امریکی صدر نے روس کے ساتھ اچھے تعلقات قائم کرنے کی امید کا اظہار کیا۔

  • امریکی صدر ٹرمپ نے اپنے اعلی سفارتکاروں کو طالبان کے ساتھ براہ راست مذاکرات کرنے کا حکم دیدیا

    واشنگٹن ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) امریکی صدر ٹرمپ نے اپنے اعلی سفارتکاروں کو طالبان کے ساتھ براہ راست مذاکرات کرنے کا حکم دیدیا ہے۔ امریکی صدر نے امریکی سفارتکاروں کو حکم دیا ہے کہ وہ اس کے بعد طالبان دہشت گردوں کے ساتھ براہ راست مذاکرات انجام دیں۔ ذرائع کے مطابق امریکہ کا یہ اقدام افغانستان کے بارے میں اس کی اسٹراٹیجک تبدیلی کامظہر ہے۔

  • امریکی کمپنی نے اڑنے والی جدید گاڑی متعارف کرادی

    اسلام‌آباد ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) امریکی کمپنی نے اڑنے والی جدید گاڑی متعارف کرادی، ایک مرتبہ چارج ہونے کے بعد 62میل فی گھنٹہ کی رفتار سے25میل تک کا فاصلہ طے کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

    غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اب گاڑی میں اڑان بھرنے کے لیے نہ ہی پائلٹ کا لائسنس حاصل کرنے کی ضرورت پڑے گی اور نہ یہ جیب پر بھاری ہوگی، کیونکہ امریکی ’’ سٹارٹ اپ کمپنی ‘‘ نے اڑنے والی جدید گاڑی متعارف کروادی ۔’ ’بلیک فلائی ‘‘ نامی یہ گاڑی بجلی سے چلتی ہے اور ایک مرتبہ چارج ہونے کے بعد 62میل فی گھنٹہ کی رفتار سے 25میل تک کا فاصلہ طے کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

    ایک سیٹ پر مشتمل اس فلائنگ کار کو اڑانے کیلئے پائلٹ کا لائسنس حاصل کرنے کی ضرورت نہیں تاہم ڈرائیورز کو معمولی ٹریننگ دی جائے گی۔ کمپنی کے مطابق یہ گاڑی انتہائی کم قیمت میں اگلے برس دستیاب ہوگی۔

  • امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ یورپی یونین کے رکن ممالک اور چین و روس سبھی امریکہ کے دشمن

     امریکی( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو) صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سی این ایس چینل کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ  یورپی یونین کے رکن ممالک اور چین و روس سبھی امریکہ کے دشمن ہیں۔ امریکی صدر نے کہا کہ ہمارے بہت سے دشمن  ہیں جن میں یورپی یونین ، روس اور چین بھی شامل ہیں۔ امریکی صدر نے کہا کہ اقتصادی اور تجارتی شعبہ میں یورپی یونین ، چین اور روس کی امریکہ کے ساتھ دشمنی اور عداوت عیاں ہے۔