شمالی کوریا کا ایٹمی طاقت کے مظاہرے کا عزم     No IMG     عراق کے دارالحکومت بغداد میں خودکش حملے کے نتیجے میں 19 افراد جاں بحق     No IMG     جرمنی کے وزير خارجہ نے اعلان کیا ہے کہ یورپی یونین کے رکن ممالک مشترکہ ایٹمی معاہدے کی حمایت پر متحد اور متفق ہیں۔     No IMG     ایران کو شام میں فوجی بیس بنانے کی اجازت نہیں دیں گے,اسرائیل کے وزير اعظم     No IMG     مقبوضہ کشمیر، یاسین ملک کی مسلسل غیر قانونی نظر بندی کی سخت مذمت کرتے ہوئے عالمی ریڈ کراس کمیٹی سے اپیل     No IMG     سابق وزیراعظم نواز شریف نے چئیرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کو توہین آمیز پریس ریلیز جاری کرنے پر قانونی نوٹس بھجوا دیا۔     No IMG     قونصل جنرل عائشہ فاروقی نے جیل میں ڈاکٹرعافیہ صدیقی سےملاقات     No IMG     پی ٹی آئی چئیرمین نے بڑا فیصلہ کر لیا ، اب پی ٹی آئی میں شمولت اختیار کرنا آسان نہ ہو گا     No IMG     پاکستان میں تھری اور فور جی صارفین کی تعداد 5 کروڑ46 لاکھ ہو گئی،     No IMG     سابق وزیراعظم نواز شریف نے احتساب عدالت میں اپنے نکالنے کی 4 بڑی وجوہات بتادیں     No IMG     حافظ آباد میں کپڑے کی فیکٹری میں آگ لگ گئی     No IMG     پی ٹی آئی کے اعلیٰ عہدے داروں کی پریم کہانی شروع ہو گئی     No IMG     امريکا نے 5 ايرانی اہلکاروں پر پابندی عائد کر دی     No IMG     موجودہ حکومت نے دہشت گردی ، عسکریت پسندی اور توانائی بحران کو حل کیا ، ملکی معیشت کو مستحکم کردیا, لیفٹیننٹ جنرل (ر) عبدالقیوم     No IMG     پی ٹی آئی گزشتہ 5 سالوں میں خیبرپختونخوا میں ڈلیور کرنے میں بری طرح ناکام ہوئی، مائزہ حمید     No IMG    

امریکہ

  • شمالی کوریا کا ایٹمی طاقت کے مظاہرے کا عزم

     شمالی کوریا نے صدر ٹرمپ اور صدر کم جونگ اون کی ملاقات کے بارے میں  امریکی نائب صدر مائیک پینس کے بیان کو بیوقوفی اور حماقت پر مبنی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ سے مذاکرات کی بھیک نہیں مانگیں گے اگر مذاکرات اور سفارتکاری کا طریقہ ناکام ہوا تو پھر ایٹمی جنگ کے میدان میں مقابلہ ہوگا۔

    اطلاعات کے مطابق شمالی کوریا کی سینئر خاتون مذاکرات کار چھوئے سن ہی نے امریکی نائب صدر مائیک پینس کے حالیہ بیانات کو احمقانہ قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا۔ انہوں نے کہا کہ شمالی کوریا امریکہ سے مذاکرات کی بھیک نہیں مانگے گا، اگر سفارتکاری ناکام ہوئی تو پھر جوہری قوت کا برملا مظاہرہ ہوگا۔

    چھوئے سن ہی کا کہنا تھا کہ مائیک پینس نے میڈیا پر حال ہی میں بے لگام اور نامناسب بیانات دیے ہیں کہ شمالی کوریا کا حشر بھی لیبیا جیسا ہوگا، میں سمجھتی ہوں کہ مائک پنس بیوقوف انسان ہیں، مجھے شدید حیرت ہے کہ شمالی کوریا کا لیبیا سے موازنہ کرنے کے احمقانہ اور جاہلانہ بیانات وہ شخص دے رہا ہے جو امریکہ کے نائب صدر کے منصب پر فائز ہے۔ چھوئے سن ہی نے مزید کہا کہ اس بات کا دار و مدار امریکی رویے اور فیصلے پر ہے کہ وہ ہمارے ساتھ مذاکرات کی میز پر بیٹھنا چاہتا ہے یا پھر ایٹمی جنگ کے میدان میں مقابلہ کرتا ہے۔

  • امريکا نے 5 ايرانی اہلکاروں پر پابندی عائد کر دی

    امريکی( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو ) حکومت نے شورش زدہ ملک يمن ميں شيعہ حوثی باغيوں کو ميزائل ٹيکنالوجی اور ميزائل فراہم کرنے کے شبے ميں پانچ ايرانی اہلکاروں پر پابندی عائد کر دی ہے۔ يہ اعلان امريکی محکمہ خزانہ نے  بروز منگل کيا۔ اس موقع پر وزير خزانہ نے کہا کہ مشتبہ ايرانی اہلکاروں کے اقدامات کے نتيجے ميں حوثی باغيوں نے سعودی سرزمين کی جانب ميزائل داغے۔ امريکا نے تنبيہ کی ہے کہ حوثی باغيوں کے ليے ايران کی حمايت برداشت نہيں کی جائے گی۔

     

  • قذافی جیسا اختتام بھی ہو سکتا ہے‘مریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی کم جون اُن کو دھمکی

    امریکی ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو ) صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شمالی کوریائی رہنما کم جون اُن کے اُس غصے کو ٹھنڈا کرنے کی کوشش کی ہے، جس کے دوران اُن نے امریکی صدر کے ساتھ اپنے ملاقات کو منسوخ  کرنے کا اعلان کیا ہے۔

    امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ اگر کم جونگ ان معاہدے کر لیتے ہیں تو ان کے تحفظ کی ضمانت دی جائے گی اور ان کے ملک کی لیبیا کے حکمران معمر قذافی جیسی تقدیر نہیں ہو گی۔ ٹرمپ نے دھمکی دیتے ہوئے کہا، ’’ اگر اس طرح کا کوئی معاہدہ طے نہ پایا تو شمالی کوریائی رہنما کم جونگ اُن کا حشر لیبیا کے سابق حکمران معمر قذافی کی طرح بھی ہو سکتا ہے۔‘‘

    2011ء میں ایک انقلابی تحریک کے ذریعے قذافی کا تختہ الٹتے ہوئے انہیں ہلاک کر دیا گیا تھا۔ امریکی صدر نے مزید کہا کہ شمالی کوریا کے لیے ایسا کوئی منصوبہ نہیں ہے۔ ٹرمپ کے مطابق وہ شمالی کوریا کو خوشحال دیکھنا چاہتے ہیں۔

    امریکی صدر نے اس موقع پر ایک کامیاب جوہری معاہدے کے بدلے شمالی کوریا کو بڑے پیمانے پر رعائیتوں کی یقین دہانی کرائی ہے۔ اوول آفس میں بات چیت کرتے ہوئے ٹرمپ نے چین کے ساتھ تجارت کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ جہاں تک انہیں علم ہے کہ شمالی کوریائی سربراہ کم جونگ ان اور ان کی ملاقات ابھی ممکن ہے، ’’میرے خیال میں شمالی کوریا کی قیادت چین کے حالیہ دو دوروں کے بعدممکنہ طور پر بیجنگ کے اثر میں آ گئی ہے‘‘۔

    ٹرمپ اور اُن کی ملاقات بارہ جون کو طے ہے۔ کم جونگ ان نے جنوبی کوریا اور امریکا کی مشترکہ فوجی مشقوں کے تناظر میں بدھ کے روز  امریکی صدر سے طے شدہ ملاقات کو منسوخ کرنے کی دھمکی دی تھی۔

     

  • امریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے کے سربراہ کے لیے نامزد خاتون جینا ہاسپل ڈائریکٹر مقرر

     امریکی  ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو ) خفیہ ایجنسی سی آئی اے کے سربراہ کے لیے نامزد خاتون جینا ہاسپل امریکی کانگریس سے حتمی منظوری کے بعد سی آئی اے کی پہلی خاتون ڈائریکٹر مقرر کردی گئی ہیں۔ ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے سی آئی اے سربراہ کے لیے نامزد خاتون جینا ہاسپل امریکی کانگریس سے حتمی منظوری کے بعد سی آئی اے کی پہلی خاتون ڈائریکٹر مقرر کردی گئی ہیں، امریکی سینیٹ میں ووٹنگ کے دوران جینا ہاسپل کے حق میں 54 جب کہ مخالفت میں 45 ووٹ آئے جس کے بعد انہیں باقاعدہ سی آئی اے سربراہ کا عہدہ مل گیا ہے۔ سینیٹ میں ووٹنگ کے دوران کئی لامیکرز نے ان کی تعیناتی کی شدید مخالفت کی، ری پلکن سینیٹر جان مکین خود بھی ہاسپل کو ووٹ نہ دینے کی لابنگ کرتے رہے جان مکین کا کہنا تھا کہ ہاسپل کی تقرری سے دنیا بھر کو منفی پیغام جائے گا۔ دوسری جانب ری پبلکن پارٹی کے صدر ٹرمپ اور ان کی انتظامیہ کی پوری سپورٹ جینا ہاسپل کے ساتھ تھی۔

  • اقوام متحدہ میں غزہ میں اسرائیلی فوج کے ہاتھوں نہتے فلسطینیوں کے قتل عام کی تحقیقات کے لیے پیش کی گئی قرارداد کو امریکہ نے ویٹو کردیا۔

     اقوام متحدہ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو ) میں غزہ میں اسرائیلی فوج کے ہاتھوں نہتے فلسطینیوں کے قتل عام کی تحقیقات کے لیے پیش کی گئی قرارداد کو امریکہ نے ویٹو کردیا۔ اطلاعات کے مطابق فلسطین میں اسرائیلی فوج کی جارحیت اور بنیادی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی پر کویت کی درخواست پر سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کیا گیا جہاں معصوم شہریوں کے قتل عام کی تحقیقات کے لیے پیش کی گئی قرار داد کو امریکہ نے اپنی ویٹو پاور استعمال

    کرتے ہوئے بلاک کردیا۔

    اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انٹونیو گوٹرس نے فلسطینیوں کی شہادتوں پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جارحیت اور خون خرابے کو اب ختم ہو جانا چاہیے۔ فلسطین میں بنیادی انسانی حقوق کو یقینی بنایا جائے اور ہر قسم کے مسئلے کو مذاکرات کے ذریعے ڈھونڈ لینا چاہیے۔ انسانی حقوق کی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بھی اسرائیلی مظالم کو بین الاقوامی امن کے خلاف خطرناک سازش قرار دیا ہے۔

  • امریکہ نے بیت المقدس میں اپنا سفارتخانہ سرکاری طور پر کھول دیا ہے۔

     فلسطین( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو ) پر اسرائیل کے 70 سالہ غاصبانہ قبضہ کی سالگرہ کے موقع پر امریکہ نے بیت المقدس میں اپنا سفارتخانہ سرکاری طور پر کھول دیا ہے۔ اس موقع پر ایک تقریب منعقد کی گئی جس سے مقبوضہ فلسطین میں امریکہ کے سفیر ڈیویڈ فریڈ مین نے خطاب کیا۔

    اس تقریب سے امریکہ کے نائب وزير خارجہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ اور اسرائیل کے گہرے تعلقات ہیں ۔ امریکہ کل بھی اسرائیل کے ساتھ تھا

    اور آج بھی اسرائیل کے ساتھ ہے۔ اس نے کہا کہ امریکی وزیر خارجہ پمپئو نے بھی بیت المقدس میں امریکی سفارتخانہ کھلنے پر خوشی اور مسرت کا اظہار

    کیا ہے۔

  • شمالی کوریا جتنا جلدی اپنے جوہری ہتھیار ختم کرے گا، اتنا ہی جلدی ترقی اور امن اس کا مقدر ہوں گے۔

    امریکی ( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو ) وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے کہا ہے کہ شمالی کوریا جتنا جلدی اپنے جوہری ہتھیار ختم کرے گا، اتنا ہی جلدی ترقی اور امن اس کا مقدر ہوں گے۔

    اتوار تیرہ مئی کے روز امریکی نشریاتی ادارے فاکس نیوز سے بات چیت میں امریکی خفیہ ادارے سی آئی اے کے سابق سربراہ اور موجودہ وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے کہا کہ شمالی کوریا کے ساتھ کسی جوہری ڈیل تک پہنچنے کے لیے شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اُن کو سلامتی کی ضمانت دینے کی ضرورت ہو گی۔ گزشتہ ہفتے مائیک پومپیو نے شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ  اُن سے ملاقات کی تھی۔ کم جونگ اُن بارہ جون کو سنگاپور میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ایک تاریخی ملاقات کرنے والے ہیں اور وزیر خارجہ مائیک پومپیو کا پیونگ یانگ کا دورہ اسی ملاقات کی تیاریوں کا حصہ تھا۔

    امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا ہدف ہے کہ شمالی کوریا کے جوہری ہتھیار مستقل اور قابل تصدیق انداز سے ختم کیے جائیں، جب کہ اس کے عوض پیونگ یانگ کو اقتصادی ترقی میں مدد فراہم کی جائے۔

    اتوار کو ’فاکس نیوز سنڈے‘ میں پومپیو نے کہا کہ پیونگ یانگ کے ساتھ کسی جوہری ڈیل تک پہنچنے کے لیے ممکنہ طور پر کم جونگ اُن کو سکیورٹی کی ضمانتیں دینے کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔ انہوں نے اس حوالے سے تفصیلات تو نہیں بتائیں، تاہم ماضی میں پیونگ یانگ کے ساتھ بین الاقوامی بات چیت میں امریکا نے وعدہ کیا تھا کہ اگر شمالی کوریا اپنے جوہری ہتھیار ختم کر دیتا اور ایٹمی پروگرام روک دیتا ہے، تو ایسی صورت میں امریکا شمالی کوریا پر روایتی یا غیر روایتی ہتھیاروں سے حملہ نہیں کرے گا۔

    مائیک پومپیو نے ایران کے حوالے سے کہا کہ وہ یورپی اتحادی ممالک کے ساتھ بات چیت میں مصروف ہیں، تاکہ ایران سے متعلق ایک نئے معاہدے تک پہنچا جا سکے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ ہفتے ایران اور عالمی طاقتوں کے درمیان سن 2015 میں طے پانے والے جوہری معاہدے سے امریکا کے اخراج کا اعلان کر دیا تھا۔ دوسرے جانب یورپی ممالک اس معاہدے کو ہرحال میں برقرار رکھنے کے لیے سرگرم ہیں۔

    امریکا کے اخراج کے بعد ایران پر امریکی پابندیاں عائد ہونا ہیں،تاہم اس طرح کئی یورپی کمپنیاں بھی ان پابندیوں کی زد میں آ سکتی ہیں۔

    پومپیو نے کہا کہ آئندہ دنوں اور ہفتوں میں یورپی ممالک کے ساتھ کسی ایسے معاہدے تک پہنچنے کی کوشش کی جائے گی، جو ایران کے ’خراب رویے‘ کا سدباب کرے اور صرف اس کے جوہری پروگرام ہی نہیں بلکہ میزائل پروگرام کو بھی روکتے ہوئے دنیا کو زیادہ محفوظ بنائے۔

  • ایرانی پاسداران انقلاب مشرق وسطیٰ میں بدامنی برآمد کرنے اور کشیدگی کو ہوا دینے کا ذمہ دار ہے۔,امریکا

    امریکی۔( ورلڈفاسٹ نیوزفاریو ) حکومت نے خطے میں ایران کی بڑھتی عسکری سرگرمیوں پر شدید نکتہ چینی کی ہے اور کہا ہے کہ ایرانی پاسداران انقلاب مشرق وسطیٰ میں بدامنی برآمد کرنے اور کشیدگی کو ہوا دینے کا ذمہ دار ہے۔

    وائیٹ ہاؤس کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں امریکی حکومت نے عالمی برادری پر زور دیا ہے کہ وہ ایران کو اپنا خطرناک رویہ

    تبدیل کرنے کے لیے تہران پر دباؤ ڈالے۔

    وائیٹ ہاؤس نے ایرانی سرگرمیوں کو ’آوارہ گردی‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایران کی پالیسی خطے کی قومی سلامتی کے لیے سنگین خطرہ بن چکی ہے۔ دنیا کو ایران کو راہ راست پر رکھنے کے لیے اس پر سخت دباؤ ڈالنا ہو گا۔

    بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ شام کے اندر سے اسرائیل کے زیر کنٹرول وادی گولان پر میزائل حملے، یمن میں حوثیوں کو اسلحہ کی سپلائی اور سعودی عرب پر بیلسٹک میزائل حملوں میں معاونت تہران کی جارحانہ پالیسی کا کھلا ثبوت ہیں۔

    ادھر ایک دوسری پیش رفت میں برطانوی وزیراعظم تھریسا مے اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران میں کام کرنے والی کمپنیوں پرموثر پابندیاں عاید کرنے پر غور کے لیے بات چیت سے اتفاق کیا ہے۔ تاہم برطانوی وزیراعظم نے ساتھ ہی کہا ہے کہ ان کا ملک ایران کے ساتھ طے پائے جوہری معاہدے پر عمل درآمد جاری رکھے گا

  • امریکہ نے برازیل کے ساتھ تجارتی مذاکرات منقطع کردیئے

    واشنگٹن ( ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو ) امریکی حکومت نے برازیل کے ساتھ تجارتی مذاکراتمنقطع کردیئے ہیں جبکہ امریکا نے برازیلی اسٹیل اور المونیم پر درآمدی ٹیرف کے ساتھ محفوظ اقدامات اور کوٹا سسٹم بھی عائد کیا ہے۔ترجمان برازیلی حکومت کے مطابق امریکا نے 30اپریل کو اعلان کیا تھا کہ وہ برازیل کے ساتھ ابتدائی معاہدے کر چکے ہیں جبکہ 26اپریل کو مذاکراتی عمل ٹوٹ چکا تھا۔ترجمان نے بتایا معاہدہ برازلین انڈسٹری کو ٹیرف یا کوٹا میں سے ایک کو منتخب کرنے کے باعث ٹوٹا۔وزارت تجارت کے مطابق برازیل المونیم انڈسٹری نے 10فیصد درآمدی ٹیرف جبکہ اسٹیل انڈسٹری نے درآمدی کوٹا سسٹم کو منتخب کیا تھا۔

  • امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا مسلمانوں کے خلاف بیان پر معافی مانگنے سے انکار

     امریکی ( ورلڈ فاسٹ نیوز فار یو )  صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ اسے مسلمانوں پر سفری پابندی عائد کرنے سے متعلق اپنے بیان پر کوئی افسوس نہیں ہے۔ اطلاعات کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے نائیجریا کے صدر کے ہمراہ پریس کانفرنس کے درمیان امریکی امیگریشن پالیسی کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اسے کمزور، قابل رحم، اور متروک قرار دیا۔ انہوں نے اپنی صدارتی مہم 2016 کے دوران مسلمانوں پر سفری پابندی عائد کرنے کے نعرے پر معافی مانگنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ مسلمانوں پر سفری پابندی سے متعلق بیان میں ایسا کچھ منفی نہیں جس پر معافی مانگی جائے۔

    امریکی صدر نے مزید کہا کہ حکومت اپنے ملک کی حفاظت کے لیے مضبوط اور فول پروف امیگریشن نظام رکھتی ہے۔ میرے معافی مانگنے سے بھی کچھ نہیں ہوگا کیوں کہ امیگریشن سے متعلق قوانین اپنی جگہ موجود رہیں گے جسے مزید سخت کرنے کی ضرورت ہے کیوں کہ دنیا ہماری پالیسی پر ہنستی ہے اور ہماری نرمی سے فائدہ اُٹھاتے ہوئے لوگ امریکہ میں داخل ہوتے ہیں اور امریکہ کو ہی آنکھیں دکھاتے ہیں جیسے میکسیکو سے امریکہ میں ہونے والی ہجرت ہے۔

    امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو امیگریشن کے حوالے سے اپنے سخت اور نفرت آمیز موقف کے باعث مقدمات کا سامنا ہے۔ قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ امیگریشن قوانین سے متعلق ٹرمپ کے اس بیان کے بعد انہیں اپنے مقدمات میں مشکل کا سامنا ہوسکتا ہے۔