بھارت اور چین کے مابین پیر کے روز بیجنگ میں باہمی فیصلہ کن مذاکرات کا آغاز     No IMG     بھارتی وزیر اعظم,ہمارا پائلٹ واپس نہ کیا جاتا تو اگلی رات خون خرابے کی ہوتی     No IMG     ملکی سیاسی پارٹیاں ووٹ تو غریبوں ،محنت کشوں کے نام پر لیتی ہیں مگر تحفظ جاگیرداروں اور مافیاز کو دیتی ہیں ,جواد احمد     No IMG     افغان سپریم کورٹ نے صدر کے انتخاب تک صدر اشرف غنی کی مدت صدارت میں توسیع کردی     No IMG     آزاد کشمیر میں منڈا بانڈی کے مقام پر ایک جیپ کھائی میں گرنے سے 5 افراد ہلاک     No IMG     مصرمیں صدرکےاختیارات میں اضافے کےلیے ہونےوالے تین روزہ ریفرنڈم میں ووٹ ڈالنےکا سلسلہ جاری ہے     No IMG     لاہور میں 3 منزلہ خستہ حال گھر زمین بوس ہونے کے نتیجے میں خاتون سمیت 6 افراد جاں بحق جبکہ 4 افراد زخمی     No IMG     وزیراعظم عمران خان ایران کے پہلے سرکاری دورے پر تہران پہنچ گئے     No IMG     سری لنکا میں کل ہونے والے آٹھ بم دھماکوں کے نتیجے میں 300 افراد ہلاک اور 500 زخمی     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے مکران کوسٹل ہائی وے پر دہشت گردی کی سخت مذمت کرتے ہوئے حکام سے واقعے پر رپورٹ طلب کر لی     No IMG     افغانستان اور افغان طالبان کے درمیان مذاکرات ایک مرتبہ پھر کھٹائی میں پڑتے دکھائی دے رہے ہیں     No IMG     وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کا افتتاح کردیا     No IMG     ایران کے وزیر خارجہ کی ترک صدر اردوغان کے ساتھ ملاقات     No IMG     عمان کے وزیر خارجہ نے اپنے ایک بیان میں شام کی عرب لیگ میں واپسی پر تاکیدکی     No IMG     سعودی عرب کی ایک کمپنی نے ترکی میں 100 ملین ڈالر کا سرمایہ لگانے کا اعلان     No IMG    

آئی ایم ایف سے پانچ ارب ڈالر ملیں گے :وزیر خزانہ نے قوم کواگلے ہفتے بجلی مہنگی کرنے کی خوشخبر ی سنادی
تاریخ :   16-10-2018

اسلام آباد( ورلڈ فاسٹ نیوزفاریو ) وزیر خزانہ اسد عمر نے کہاہے کہ پاکستان کیلئے آئی ایم ایف کا موجودہ پروگرام آخری پروگرام ہوگا ، آئی ایم ایف کا وفد 7نومبرکو پاکستان آرہاہے اور ہم نے 12ارب ڈالر کا گیپ پورا کرنا ہے ، اس لئے حکومت کا مربوط پلان آئی ایم ایف کے سامنے رکھیں گے ، ورلڈ بینک اور

ایشین بینک سے پانچ ارب ڈالر ملیں گے ،آئی ایم ایف کی ہدایت پر تمام اقدامات نہیں اٹھارہے، بجلی کی قیمتوں میں اضافے سے متعلق فیصلہ اگلے ہفتے کرلیا جائے گا ۔
وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا کہ آئی ایم ایف کا وفد 7نومبرکو پاکستان آرہاہے اور ہم نے 12ارب ڈالر کا گیپ پورا کرنا ہے ، اس لئے حکومت کا مربوط پلان آئی ایم ایف کے سامنے رکھیں گے ، ورلڈ بینک اور ایشین بینک سے پانچ ارب ڈالر ملیں گے ،آئی ایم ایف کی ہدایت پر تمام اقدامات نہیں اٹھارہے۔انہوں نے کہا کہ بجٹ کاخسارہ 6.6فیصد تک پہنچا ہوا تھا جو مسلم لیگ ن کی حکومت نے الیکشن کی وجہ سے ظاہر نہیں کیا ۔ اس لئے جب ا سٹیٹ بینک نے اقدامات کرنا شروع کئے تو ڈالر کی قیمت میں اضافہ ہوگیا ۔ انہوں نے کہا کہ ماہانہ خسارہ دوارب ڈالر ماہانہ تک پہنچ چکا تھا جو چند سال پہلے دوارب ڈالر سالانہ ہوا کرتاتھا لیکن اب حکومتی اقدامات کے نتیجے میں خسارے میں کمی آئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایک تو پاکستان کے اندر معیشت کی صورتحال مشکل ہے اور دوسرا ٹرمپ نے جو ایکشن لئے ہیں اس سے عالمی سطح پر بھی غیر یقینی صورتحال پیدا ہوگئی ہے، چین اور امریکہ تجارتی جنگ شروع ہوچکی ہے ۔ اس وقت خطے بھر میں کرنسی کی قیمت میں کمی آچکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ہمارے سیاسی منشور کاحصہ تھا کہ ایکسچینج ریٹ سیاسی طور پر طے نہیں ہوناچاہئے، سنٹرل بینک کو معیشت کوسامنے رکھتے ہوئے فیصلے کرنے چاہئے لیکن حکومت کو معیشت کوکنٹرول میں رکھنا چاہئے ۔ گیس کے قیمتوں میں اضافے کے حولے سے سوال پر انہوں نے کہا کہ گیس میں 154ارب روپے کاخسارہ تھا ، قیمتوں میں اضافے کے حوالے سے ہم نے غریب طبقے پر بوجھ نہیں بڑھایا ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری برآمدات خطر ناک حد تک کم ہوگئی ہیں جس کی وجہ سے ہم ہرتین سال بعد آئی ایم ایف کے سامنے بیٹھے ہوتے ہیں، ہم نے ہر حال میں اپنے برآمد کندگان کوکھڑا کرناہے چاہے ان کا تعلق صنعت سے ہویا زراعت سے ہو۔ بجلی کی قیمتوں میں اضافے کے حوالے سے سوال پر انہوں نے کہا کہ نیپرا کی جانب سے جواعداد وشمار دیئے گئے ہیں ان کے مطابق ساڑھے پانچ سو ارب روپے کا خسارہ اس سال ہونے جارہاہے ، نیپرا نے 3روپے 90پیسے بجلی مہنگی کرنے کاکہاہے اور اس میں بجلی کے نئے منصوبوں کی وجہ سے 2روپے 25پیسے فی یونٹ بڑھیں گے، ہم کوشش کریں گے کہ غریب طبقوں اور ایکسپورٹ انڈسٹری کے لئے زیادہ قیمتیں نہ بڑھائی جائیں، اگلے ہفتے بجلی کی قیمتوں میں اضافے کے حوالے سے فیصلہ کرلیا جائیگا اور بجلی چوری روکنے کی پوری کوشش کی جائیگی ۔
وزیر خزانہ نے کہا کہ معیشت کی بنیاد یں پچھلے تین ماہ میں بہتر ہوئی ہیں، بڑھتے ہوئے خسارے میں 40فیصد بہتری آئی ہے اور معیشت بہتری کی طرف گئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ جب مریض کوہار ٹ اٹیک ہو تو اس کو آئی سی یو میں لے جا کر اس کا بائی پاس کیا جاتاہے ، ہم نے پہلے سو دن میں اپنا معیشت کا وسیع فریم ورک دینے کا وعدہ کیا تھا لیکن اب ہم اس سے بھی قبل اپنے منشور کا اعلان کردیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری معیشت کی بنیادیں مضبوط ہیں ، اگر اس کوصحیح گورننس پر لگادیں تو بہتری بھی آئے گی اور روزگار کے مواقع بھی پیدا ہونگے اور یہ آخری آئی ایم ایف کا پروگرام ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ پچاس لاکھ گھروں کوبنانے کا ٹاسک مشکل تو ہے لیکن اس کا زیادہ انحصار بجٹ پر نہیں ہوگا ، ہمارے بینکنگ سیکٹر میں اتنی گنجائش موجود ہے کہ وہ اس منصوبے کے لئے سرمایہ کاری فراہم کرسکے لیکن اگر حکومت کی جانب سے بینکوں سے قرض نہ لیا جائے۔

Print Friendly, PDF & Email
ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا برطانوی پارلیمنٹیرینز کی دعوت پر پارلیمنٹ ہائوس کا دورہ
وزیر اعلی گلگت بلتستان کی بارسلونا میں آمد پر معروف سماجی اور سیاسی شخصیت ایاز عباسی کی جانب سے پر تکلف عشائیہ
Translate News »